رازداری پالیسی

ہمارے بارے میں

رابطہ

  • عالمی نیوز
  • ہوم

    Hindi

    Epaper Urdu

    YouTube

    Facebook

    Twitter

    Mobile App

    انتونیو گٹریس نے کیا خبردار : آب و ہوا کی تبدیلی روکنے میں ناکامی ناقابل تلافی ہو گی

    اقوام متحدہ، : اقوام متحدہ کے سیکرٹری جنرل انتونیو گٹریس نے خبردار کیا ہے کہ آب و ہوا کی تبدیلی کے اثرات روکنے کی نا کافی کوششوں کے نتیجے میں اب دنیا ایک ایسے مقام تک پہنچنے والی ہے جہاں سے واپسی ناممکن ہو سکتی ہے۔اقوام متحدہ کے سربراہ نے یہ انتباہ، آب و ہوا سے متعلق دس روزہ کانفرنس سے قبل، جس میں دنیا بھر سے 25000 لوگ شریک ہوں گے، اتوار کے روز میڈرڈ میں کیا۔چلی کی جانب سے اپنے سیاسی بحران کے باعث اس کانفرنس کی میزبانی سے معذرت کے بعد اسپین نے مختصر نوٹس پر اس کانفرنس کی میزبانی کرنے کا اعلان کیا تھا۔سویڈن کی آب و ہوا کے تحفظ کی علمبردار سولہ سالہ گریٹا تھن برگ کو اپنے بحری سفر کے دوران ایک مقام کی غیر متوقع تبدیلی انہیں بحر اوقیانوس کی غلط جانب لے گئی تھی، جس کی وجہ سے وہ کانفرنس میں ایک یا دو روز تاخیر سے شرکت کریں گی۔

    انہوں نے فضائی ٹریفک کی وجہ سے ماحول کو پہنچنے والے نقصانات کے متعلق آگاہی بڑھانے کے لیے بحر اوقیانوس کے آر پار نارتھ امریکہ کے ساحل تک بحری سفر کیا اور اب وہ واپسی کے سفر پر ہیں۔ گریٹا تھن برگ، آب و ہوا کی تبدیلی کا مقابلہ کرنے کے لیے تقریروں کی بجائے عملی کام کا مطالبہ کر رہی ہیں۔سویڈن کی 16 سالہ گریٹا تھن برگ کا کہنا ہے کہ بااختیار لوگ اور سیاستدان مجھے اور آب و ہوا سے متعلق دوسرے سرگرم کارکنوں کو اپنے ساتھ سیلفیاں بنوانے کے لیے کہتے ہیں کیوںکہ وہ چاہتے ہیں کہ وہ ہمارے ساتھ کھڑے ہو کر اچھے دکھائی دیں اور یہ کہیں کہ ہم اس کرہ ارض کے مستقبل کے بارے میں فکر کرتے ہیں، ہم مستقبل کی نسلوں اور آج کے نوجوانوں کے بارے میں فکر مند ہیں۔

    یہ بھی پڑھیں  سلیمانی کی ہلاکت کے روز امریکی فورسز نے سینئر ایرانی فوجی اہل کار کے خلاف دوسری خفیہ کارروائی کی
    یہ بھی پڑھیں  جکارتہ میں شدید بارش، 30 افراد ہلاک

    دنیا بھر میں نوجوانوں کی ایک بڑھتی ہوئی تعداد سڑکوں پر ان مظاہروں میں شرکت کر رہی ہے جو شفاف توانائی اور ایسی پالیسیاں اپنانے کا مطالبہ کر رہے ہیں جن سے کرہ ارض پر نقصان دہ گیسوں کا اخراج کم ہو جائے۔قابل تجدید توانائی سے منسلک ایک کمپنی کے ایک عہدے دار ریوٹا نگاشیما کا کہنا ہے کہ ہم نوجوان جب سے پیدا ہوئے ہیں تب سے آب و ہوا کی تبدیلی کے مسئلے کی زد میں ہیں۔آب و ہوا سے متعلق اقوام متحدہ کی 25 ویں کانفرنس کے موقع پر گفتگو کرتے ہوئے اقوام متحدہ کے سیکرٹری جنرل نے نوجوانوں کو ان کی سر گرمیوں کے مقصد پر سراہا۔ انہوں نے کہا کہ نوجوان نسل، قیادت اور رائے عامہ کو متحرک کرنے کا شاندار مظاہرہ کر رہی ہے۔ سیکرٹری جنرل انٹونیو گٹریس کا مزید کہنا تھا کہ کاربن کے اخراج پر کوئی قیمت مقرر کرنے، معدنی ایندھن پر مالی معاونت ختم کرنے، 2020 کے بعد کوئلے سے چلنے والے پاور پلانٹس کی تعمیر روکنے، ٹیکسوں کو آمدنی کی بنیاد پر نافذ کرنے کی بجائے کاربن کے اخراج پر منتقل کرنے اور لوگوں کی بجائے آلودگی پر ٹیکس لگانے کی مرضی کا فقدان ہے۔

    یہ بھی پڑھیں  جکارتہ میں شدید بارش، 30 افراد ہلاک

    ہمیں صرف اور صرف معدنی ایندھن کی کھدائی اور ڈرلنگ کو روکنا اور قابل تجدید توانائیوں اور قدرت کے دئیے ہوئے حل کے وسیع امکان کا فائدہ اٹھانا ہے۔اگرچہ عالمی رہنما آلودگی کم کرنے کی کوششوں کی زبانی حمایت کرتے ہیں، لیکن اس پر کوئی اقدام کرنے میں ناکام ہیں۔ امریکی صدر ڈونلڈ ٹرمپ کھلم کھلا آب و ہوا کی سائنس کو مسترد اور کوئلے اور آلودگی پھیلانے والی دوسری صنعتوں کی حمایت کر چکے ہیں۔اقوام متحدہ کے سیکرٹری جنرل انٹونیو گٹریس نے انتباہ کیا کہ اس بے عملی کی ایک قیمت ہے۔ ان کا کہنا تھا کہ اس وقت ہمیں آب و ہوا کے ایک عالمی بحران کا سامنا ہے اور وہ وقت زیادہ دور نہیں جب واپسی کا کوئی راستہ نہیں رہ جائے گا۔

    بحران دکھائی دے رہا ہے اور ہماری جانب بڑھ رہا ہے۔مسٹر گوٹریس نے کہا کہ سائنس کی کمیونٹی نے آب و ہوا کی تبدیلی سے لڑنے کا ایک لائحہ عمل فراہم کر دیا ہے جو عالمی درجہ حرارت کو محدود کرنے اور اس کے اضافے کو 1.5 ڈگری سیلسیس تک لانے، اور کاربن کے اخراج کو 2050 تک مکمل ختم کرنے اور 2030 تک گرین ہاؤس گیسوں کے اخراج کو 2010 کی سطح سے 45 فیصد تک کم کرنے کا تقاضا کرتا ہے۔ انہوں نے دنیا بھر کے ملکوں سے اپیل کی کہ وہ ان اہداف کو حاصل کرنے کا وعدہ کریں۔

    یہ بھی پڑھیں  منی پور کے مشرقی امپھال ضلع میں بم دھماکہ،5 افراد زخمی

    LEAVE A REPLY

    Please enter your comment!
    Please enter your name here
    یہ بھی پڑھیں  جنگلات میں لگنے والی آگ سے دنیا بھر میں پینے کے پانی کی قلت کا خدشہ

    Latest news

    دس مہینے بعد تعلیمی سرگرمی شروع ہونے سے بچوں کے چہروں پر لوٹی مسکراہٹ

    نئی دہلی: دس مہینے بعد دہلی کے اسکولوں میں محدود ہی سہی لیکن رونقیں واپس لوٹ آئی ہیں۔ کل...

    دہلی فسادات معاملہ،متاثرین کی باز آبادکاری میں مصروف اقلیتی فلاحی کمیٹی

    میٹنگ میں جلد سے جلد زیر التوامعاملات کے نپٹارہ کی افسران کو ہدایت،کچھ معاملات میں دوبارہ سروے کرنے کی...

    بی جے پی کے زیر اقتدار ایم سی ڈی سے نہ صرف دہلی کے لوگ متاثر ہیں، بلکہ ملازمین بھی نالاں ہیں : سوربھ...

    نئی دہلی : عام آدمی پارٹی کے چیف ترجمان سوربھ بھاردواج نے کہا کہ بی جے پی کے زیر...

    راجیندر نگر کے ایم ایل اے راگھو چڈھا نے سوامی دیانند سروودیا کنیا اسکول کا دورہ کیا

    لاک ڈاؤن کے بعد اسکول کھلنے کے بعد سکیورٹی کے تمام انتظامات کردیئے گئے ہیں، طلباء اساتذہ کو N95...

    Must read

    You might also likeRELATED
    Recommended to you