رازداری پالیسی

ہمارے بارے میں

رابطہ

  • عالمی نیوز
  • ہوم

    Hindi

    Epaper Urdu

    YouTube

    Facebook

    Twitter

    Mobile App

    امن مذاکرات کا حتمی فیصلہ افغان عوام ہی کریں گے: اشرف غنی

    کابل:افغانستان کے دوبارہ صدر منتخب ہونے کے بعد اشرف غنی نے کہا ہے کہ طالبان کے ساتھ امن معاہدہ طے کرنا ان کی اولین ترجیح ہے۔انھوں نے اپنی کامیابی کو خوش آئند قرار دیتے ہوئے کہا کہ امن مذاکرات کا حتمی فیصلہ افغان عوام ہی کریں گے۔ طالبان کے ساتھ کوئی خفیہ فیصلہ ممکن نہیں ہوگا۔ ہم ہمت اور مقصد کے ساتھ امن مذاکرات کو آگے بڑھائیں گے۔ادھر واشنگٹن میں محکمہ دفاع پینٹاگان نے کہا ہے کہ امریکہ افغانستان کو پرامن اور مستحکم ملک بنانے کے عزم پر قائم ہے۔ وائس آف امریکہ کے نمائندے جیف سیلڈن سے بات کرتے ہوئے پینٹاگان کے ایک اعلیٰ اہلکار نے کہا کہ اس نکتے پر ہم محکمہ خارجہ سے سبقت نہیں لینا چاہتے۔ریئر ایڈمرل ولیم بارنے نے کہا کہ ہم ہر دن، ہر گھنٹے اور ہر لمحہ تجزیاتی عمل سے گزر رہے ہیں جبکہ ہم افغانستان سے متعلق مجوزہ سمجھوتے کے منتظر ہیں۔ اس میں تشدد کی کارروائی بند کرنے کی شرط اہمیت رکھتی ہے۔

    یہ بھی پڑھیں  ایران کے پڑوسیوں کی صحت کو بھی سنگین خطرہ لاحق ہے : امریکہ

    افغانستان کے لیے اقوام متحدہ کے معاون مشن نے ایک بیان میں کہا ہے کہ وہ نئی افغان انتظامیہ کا خیرمقدم کرتا ہے اور اس کے ساتھ کام کرنے کا منتظر ہے۔مشن نے کہا ہے کہ ادارے کو افغانستان کی آبادی کے تنوع کی اہمیت کا مکمل ادراک ہے اور ہم ان افغانوں کی بہادری کے معترف ہیں جنھوں نے سیکورٹی کے سنگین خدشات کے باوجود ووٹنگ میں حصہ لیا۔ ہم جمہوری عمل جاری رکھنے کے لیے ان دلیر ووٹروں کے عزم کو سراہتے ہیں۔ایک بیان میں طالبان ترجمان ذبیح اللہ مجاہد نے صدارتی انتخابات میں اشرف غنی کی کامیابی کے اعلان کو مایوس کن قرار دیا ہے۔ طالبان ترجمان نے کہا کہ اشرف غنی کا عہدہ صدارت کے لیے دوبارہ انتخاب ’’غیر قانونی‘‘ اور افغان امن عمل کی خلاف ورزی ہے۔

    یہ بھی پڑھیں  ہمیں امریکہ کی مدد کی ضرورت نہیں : پاسدارانِ انقلاب
    یہ بھی پڑھیں  ایران- امریکہ کشیدگی : پاکستانی فوج کا امریکہ کا ساتھ دینے سے انکار

    اشرف غنی کے حریف عبداللہ عبداللہ انتخابی نتائج کو مسترد کرتے ہوئے دعویٰ کرچکے ہیں کہ دراصل ان کی انتخابی ٹیم کی جیت ہوئی ہے۔ انھوں نے کہا کہ دھاندلی کرنے والے تاریخ میں رسوا ہوں گے۔ ہم سب کی شرکت کے ساتھ اپنی حکومت کا اعلان کریں گے۔وائس آف امریکہ سے گفتگو کرتے ہوئے تجزیہ کار رحیم اللہ یوسف زئی نے کہا کہ عبداللہ عبداللہ تاجک برادری کے نمائندے ہیں۔ انہوں نے اشرف غنی کی کامیابی پر سوال اٹھاتے ہوئے انھیں پشتون کمیونٹی کا نمائندہ بتایا ہے۔ اس طرح کی تفریق کا معاملہ چھیڑنے سے طالبان مخالف سیاسی دھڑوں کے اندر نسلی تقسیم میں اضافہ ہوگا جس کے اچھے نتائج برآمد نہیں ہوں گے۔

    LEAVE A REPLY

    Please enter your comment!
    Please enter your name here
    یہ بھی پڑھیں  سعودی عرب میں سال نو کے استقبالیہ جشن کا اعلان

    Latest news

    دہلی میں 5-ٹی پلان کو عمل میں لاکر جیتیں گے کورونا سے جنگ : اروند کیجریوال

    نئی دہلی : دہلی کے وزیر اعلی اروند کیجریوال نے کہا کہ ہمیں ہمیشہ سے کورونا کو شکست دینے...

    میڈیا کی متعصبانہ رپورٹنگ کے خلاف جمعیة علماء ہند سپریم کورٹ میں

    نئی دہلی:ملک کے بے لگام ٹی وی چینلوں پر قانونی لگام لگانے کی پہل جمعیةعلماءہند نے کردی گزشتہ روز...

    مرکزی حکومت نے 27 ہزار پی پی ای کٹس مختص کیں: اروند کیجریوال

    نئی دہلی: دہلی کے وزیر اعلی اروند کیجریوال نے کہا کہ ہم دہلی میں کسی کو بھوکا سونے نہیں...

    کورونا وائرس پوری دنیا میں قہر بن کر ٹوٹ رہاہے : مولانا ارشد مدنی

    دیوبند: جمعیۃ علماء ہند کے قومی صدر مولانا سید ارشد مدنی نے کہاکہ کورونا وائرس پوری دنیا میں قہر...

    سات نئے کورونا کے مثبت معاملے ملنے سے مچا ہڑکمپ

    لکھنؤ:راجدھانی میں کورونا مثبت پائے گئے مریضوں کی تعداد میں کوئی بھی کمی نہیں آرہی ہے۔سات نئے معاملے سامنے...

    معـــاشرتی ، مــذہبی اور عــــلاقائی اختــلاف سے بالاتر ہوکر ہی کـــوویڈ 19 سےجیتی جاسکتی ہے جنـــــــگ : پروفیســــر احــــرار حســـــین

    نئی دہلی : سنٹر فار ڈسٹنس اینڈ اوپن لرننگ، جامعہ ملیہ اسلامیہ کے ڈائریکٹر (اکیڈمک) پروفیسر احرار حسین نےکہاکہ...

    Must read

    You might also likeRELATED
    Recommended to you