رازداری پالیسی

ہمارے بارے میں

رابطہ

  • عالمی نیوز
  • ہوم

    Hindi

    Epaper Urdu

    YouTube

    Facebook

    Twitter

    Mobile App

    ترکی کی جانب سے شام میں فوجی کارروائی معطل کرنے پر رضامندی کا اظہار

    استنبول: ترکی نے شمالی شام میں جنگ بندی پر رضامندی کا اظہار کر لیا ہے جہاں وہ کرد جنگجوؤں سے نبرد آزما ہیں، تاکہ کردوں کو وہاں سے نکلنے کا موقع مل سکے۔یہ معاہدہ امریکی نائب صدر مائیک پینس اور ترک صدر رجب طیب اردوغان کے درمیان انقرہ میں جاری ملاقات میں طے ہوا۔امریکی نائب صدر مائیک پینس کے مطابق معاہدے کے تحت پانچ دن کے لیے جنگ بندی ہوگی اور امریکہ کرد جنگجوؤں کو وہاں سے نکلنے میں مدد فراہم کرے گا۔البتہ یہ واضح نہیں ہے کہ کرد جنگجوؤں کی تنظیم وائی پی جی اس معاہدے کو پورا کرے گی یا نہیں۔

    کرد جنگجوؤں کے رہنما کمانڈر مظلوم کوبانی نے کہا ہے کہ کرد مسلح گروپ سرحد کے نزدیک موجود قصبے راس العین اور تال ابیاد کے درمیان علاقے کی حد تک اس معاہدے کی پابندی کریں گے۔ انھوں نے مزید کہا کہ دیگر علاقوں کے بارے میں ابھی تک بات نہیں کی گئی ہے۔ترک صدر رجب طیب اردوغان اور امریکی نائب صدر مائیک پینس کے درمیان انقرہ میں ملاقات ہوئی جہاں جنگ بندی کا معاہدے طے پایاترک پیش قدمی کا پس منظر کیا تھا؟چند روز قبل امریکی صدر ڈونلڈ ٹرمپ کی جانب سے شام اور ترکی کی سرحد کے پاس موجود امریکی فوجوں کے انخلا کا اعلان کیا جس کے بعد گذشتہ ہفتے ترکی نے سرحد پار جارحیت کا آغاز کر دیا۔اس پیش قدمی کا مقصد سرحد پار کرد مسلح گروہ پیپلز پروٹیکشن یونٹ یعنی وائی پی جے کو پیچھے دھکیلنا تھا

    یہ بھی پڑھیں  کرونا وائرس کی تباہ کاریوں کا سلسلہ جاری، مریض 4 لاکھ، ہلاکتیں 18 ہزار

    جسے ترکی کی قیادت وائی کردستان ورکرز پارٹی (پی کے کے) کا ایک حصہ تصور کرتے ہیں جو ترکی میں گذشتہ تین دہائیوں سے کردستان کی خودمختاری کے لیے مسلح جدوجہد کر رہی ہے۔ترکی کوامید تھی کہ ایسا کرنے سے وہ قریبی علاقوں میں موجود بیس لاکھ شامی پناہ گزینوں کو بسانے میں مدد ملے گی تاہم ترکی کی ناقدین کا کہنا تھا کہ ترکی جارحیت سے مقامی کرد آبادی کو سخت خطرہ درپیش ہوگا۔صدر ٹرمپ کو فیصلے کے بعد شدید تنقید کا سامنا کرنا پڑا اور ان پر الزام لگایا گیا کہ انھوں نے کرد اور عرب ملیشیاؤں پر مشتمل شامی ڈیموکریٹک فورسز(ایس ڈی ایف) کے نام سے قائم اتحاد کو اکیلا چھوڑ دیا۔واضح رہے کہ ایس ڈی ایف میں وائی پی جے کو بالادستی حاصل ہیاور انھوں نے گذشتہ چار برس میں امریکہ اور اس کے اتحادیوں کی فضائی مدد سے ایک چوتھائی شام کو داعش سے چھڑا لیا تھا۔بدھ کو امریکی صدر نے کہا کہ کرد ‘فرشتے نہیں ہیں’ اور ساتھ میں مزید کہا کہ ‘یہ ہماری سرحد نہیں ہے۔ ہم اپنی جانیں اس پر قربان نہیں کریں گے۔’

    یہ بھی پڑھیں  لبنان: بندرگاہ دھماکے میں ہلاک ہونے والوں کی تعداد 70 سے زائد ، 2500 سے زیادہ افراد زخمی ہیں
    یہ بھی پڑھیں  ایران کی ایک اور فتح

    مائیک پینس کی جانب سے جنگ بندی کے معاہدے کے باضابطہ اعلان سے قبل ہی صدر ٹرمپ نے سماجی رابطوں کی ویب سائٹ ٹوئٹر پر پیغام جاری کیا جس میں انھوں نے کہا ‘لاکھوں جانیں بچ جائیں گی!‘۔ایک اور ٹویٹ میں انھوں نے کہا کہ ‘تین دن قبل یہ معاہدہ نہیں ہو سکتا تھا۔ اس کے لیے سختی کرنا ضروری تھا۔ یہ سب کے لیے بہت زبردست ہے، مجھے سب پر فخر ہے!’نائب صدر پینس نے بھی صدر ٹرمپ کی قیادت کو خراج تحسین پیش کرتے ہوئے کہا کہ ‘وہ جنگ بندی چاہتے تھے۔ وہ تشدد کو ختم کرنا چاہتے تھے۔’یاد رہے کہ ترک صدر اردوغان اور نائب صدر پینس کی ملاقات سے ایک روز قبل امریکی صدر کی جانب سے اپنے ترک ہم منصب کے نام لکھا گیا ایک خط منظر عام پر آیا جس میں انھوں نے تنبیہ کرتے ہوئے لکھا: ‘زیادہ سخت بننے کی ضرورت نہیں ہے۔ بیوقوفی مت کرو۔’جنگ بندی کے اعلان کے بعد صدر ٹرمپ نے صدر اردوغان کی تعریف کرتے ہوئے کہا کہ ‘وہ ایک بہترین رہنما ہیں جنھوں نے درست فیصلہ کیا۔’ترکی کے وزیر خارجہ مولود چاویش اوغلو نے صحافیوں کو بتایا کہ ترک فوج کی پیش قدمی مستقل طور پر صرف اس وقت ختم ہوگی جب ایس ڈی ایف مکمل طور پر سرحدی علاقہ خالی کر دے۔’ہم اپنے آپریشن کو محظ معطل کر رہے ہیں۔

    یہ بھی پڑھیں  ایران کی ایک اور فتح
    یہ بھی پڑھیں  طیارہ حادثے میں 80 افراد ہلاک

    LEAVE A REPLY

    Please enter your comment!
    Please enter your name here

    Latest news

    میرٹ کی بنیادپر منتخب ہونے والے 670طلباء میں ہندوطلباء بھی شامل

    تعلیمی سال 2021-2022کے لئے جمعیۃعلماء ہند کے وظائف جاری ، مذہب سے اوپر اٹھ کر کام کرنا تو جمعیۃعلماء...

    آدیش گپتا نے اپنے بیٹوں کے ساتھ مل کر ایم سی ڈی کی زمین پر اپنا سیاسی دفتر بنایا: درگیش پاٹھک

    نئی دہلی : عام آدمی پارٹی کے ایم سی ڈی انچارج درگیش پاٹھک نے کہا کہ بی جے پی...

    مغربی يو پی : راشٹریہ لوک دل اور سماج وادی پارٹی اتحاد کتنا مضبوط ؟

    مغربی یوپی : مظفر نگر فسادات کے بعد مغربی یوپی میں بالخصوص پوری ریاست میں بالعموم فرقہ واریت اور...

    صوبائی کنونشن میں رئیس الدین رانا کو ”حفیظ میرٹھی ایوارڈ“ ملنے پر ایسوسی ایشن نے کیا استقبال

    مظفر نگر : اردو ٹیچرز ویلفیئر ایسوسی ایشن مظفر نگر کے عہدیداران نے آج صوبائی نائب صدر رئیس الدین...

    اسمبلی الیکشن : سوشل میڈیا کے چاروں پلیٹ فارموں پر سرگرم

    لکھنؤ : ملک کی سیاسی سمت کو طے کرنے والے صوبے اترپردیش میں کورونا بحران کے درمیان ہورہے اسمبلی...

    میرے والد اعظم خان کی جان کو خطرہ : عبد اللہ اعظم

    عبد اللہ اعظم نے کہا کہ کورونا پروٹوکول کے نام پر لوگوں کا استحصال کیا جا رہا ہے، گھر...

    Must read

    You might also likeRELATED
    Recommended to you