رازداری پالیسی

ہمارے بارے میں

رابطہ

  • ہوم

    Hindi

    Epaper Urdu

    YouTube

    Facebook

    Twitter

    Mobile App

    شاہین باغ خاتون مظاہرین کا آج خاموش مظاہرہ

    نئی دہلی:شہریت ترمیمی قانون، این آر سی و این پی آر کے خلاف شاہین باغ کی خاتون مظاہرین نے آج الگ انداز میں مظاہرہ کیا۔ آج شاہین باغ میں صبح سے ہی کافی خاموشی دیکھنے کو مل رہی ہے اور اس کی وجہ یہ ہے کہ خواتین نے آج ’خاموش مظاہرہ‘ کرنے کا فیصلہ کیا ہے۔ شاہین باغ میں بیٹھی خواتین نے فیصلہ کیا ہے کہ آج اسٹیج سے کوئی تقریر نہیں ہوگی اور مظاہرے میں پوری طرح سے خاموشی رہے گی۔

    قابل ذکر ہے کہ شاہین باغ میں بیٹھی خواتین کے درمیان دن بھر کچھ نہ کچھ تقریر ضرور ہوتی رہتی ہے اور شہریت ترمیمی قانون اور این آر سی کے تعلق سے لوگوں میں بیداری پیدا کی جاتی رہی ہے۔ لیکن آج ایسا کچھ بھی دیکھنے کو نہیں مل رہا۔شاہین باغ میں آج کا ماحول بالکل بدلا بدلا ہوا نظر آرہا ہے ۔ سبھی خاموش تھیں اور جب ان سے سوال کیا گیا تو انھوں نے اشارے میں کچھ بھی کہنے سے منع کر دیا۔ خاموش مظاہرہ کرنے والی خواتین نے ایک پوسٹر کی طرف اشارہ کیا جس میں لکھا ہوا تھا کہ ’آج خاموش مظاہرہ ہے‘۔ یہ سوال کرنے پر کہ ایسا کیوں ہے؟ بغل میں پلے کارڈس بنا رہے لڑکے نے لکھ کر بتایا کہ ’’انتخابی نتائج آنے اور جامعہ میں ہوئے طلبا-پولس تصادم کی وجہ سے‘‘۔

    یہ بھی پڑھیں  عوام نے کجریوال کو تیسری بار وزیراعلیٰ کرسی پر بٹھایا
    یہ بھی پڑھیں  کجریوال کے ساتھ خاندان کی طرح دیوالی منائیگی پوری دہلی

    واضح رہے کہ دہلی اسمبلی انتخاب کا نتیجہ آج آنے والا ہے اور رجحانات میں آپ آسانی کے ساتھ اکثریت حاصل کرتی ہوئی نظر آ رہی ہے۔ شاہین باغ کی خاتون مظاہرین سے اس سلسلے میں جب سوال کیا گیا تو انھوں نے لکھ کر بتایا کہ ’’یہاں (شاہین باغ) سے ہم کسی سیاسی پارٹی کی حمایت نہیں کرتے اور یہاں سے کسی کی نہ ہم برائی کریں گے اور نہ ہی بھلائی۔ اس لیے ہم سبھی لوگ خاموش مظاہرہ کر رہے ہیں تاکہ کوئی غلط پیغام یہاں سے نہ چلا جائے۔‘‘ یہ سوال کیے جانے پر کہ یہ ’خاموش مظاہرہ‘ کب تک چلے گا، تحریری شکل میں بتایا گیا کہ ’’یہ خاموش مظاہرہ رات تک جاری رہے گا تاکہ ہم سے کوئی الیکشن کے بارے میں سوال نہ کرے۔‘

    یہ بھی پڑھیں  کجریوال کے ساتھ خاندان کی طرح دیوالی منائیگی پوری دہلی

    LEAVE A REPLY

    Please enter your comment!
    Please enter your name here

    Latest news

    میرٹ کی بنیادپر منتخب ہونے والے 670طلباء میں ہندوطلباء بھی شامل

    تعلیمی سال 2021-2022کے لئے جمعیۃعلماء ہند کے وظائف جاری ، مذہب سے اوپر اٹھ کر کام کرنا تو جمعیۃعلماء...

    آدیش گپتا نے اپنے بیٹوں کے ساتھ مل کر ایم سی ڈی کی زمین پر اپنا سیاسی دفتر بنایا: درگیش پاٹھک

    نئی دہلی : عام آدمی پارٹی کے ایم سی ڈی انچارج درگیش پاٹھک نے کہا کہ بی جے پی...

    مغربی يو پی : راشٹریہ لوک دل اور سماج وادی پارٹی اتحاد کتنا مضبوط ؟

    مغربی یوپی : مظفر نگر فسادات کے بعد مغربی یوپی میں بالخصوص پوری ریاست میں بالعموم فرقہ واریت اور...

    صوبائی کنونشن میں رئیس الدین رانا کو ”حفیظ میرٹھی ایوارڈ“ ملنے پر ایسوسی ایشن نے کیا استقبال

    مظفر نگر : اردو ٹیچرز ویلفیئر ایسوسی ایشن مظفر نگر کے عہدیداران نے آج صوبائی نائب صدر رئیس الدین...

    اسمبلی الیکشن : سوشل میڈیا کے چاروں پلیٹ فارموں پر سرگرم

    لکھنؤ : ملک کی سیاسی سمت کو طے کرنے والے صوبے اترپردیش میں کورونا بحران کے درمیان ہورہے اسمبلی...

    میرے والد اعظم خان کی جان کو خطرہ : عبد اللہ اعظم

    عبد اللہ اعظم نے کہا کہ کورونا پروٹوکول کے نام پر لوگوں کا استحصال کیا جا رہا ہے، گھر...

    Must read

    You might also likeRELATED
    Recommended to you