رازداری پالیسی

ہمارے بارے میں

رابطہ

  • قومی نیوز
  • ہوم

    Hindi

    Epaper Urdu

    YouTube

    Facebook

    Twitter

    Mobile App

    کشمیر میں غیر یقینی صورتحال کا 126 واں دن

    سری نگر : وادی کشمیر میں گزشتہ 126 دنوں سے جاری غیر یقینی صورتحال کے بیچ اتوار کے روز جہاں معمولات زندگی کی رفتار جوں کی توں رہی وہیں سنڈے مارکیٹ میں دن بھر لوگوں کا بھاری رش رہا۔
    ادھر وادی میں چلہ کلان کی آمد سے قبل ہی ٹھٹھرتی سردی نے اہلیان وادی کا حال بے حال کردیا ہے ۔ لوگوں کا کہنا ہے کہ امسال سردی قبل از وقت ہی ڈیرا زن ہوکر لوگوں کے لئے ہرگزرتے دن کے ساتھ روح فرسا ثابت ہورہی ہے ۔ معالجین نے سردی کے پیش نظر ‘صحت ایڈوائزری’ جاری کرتے ہوئے لوگوں کو تمام تر احتیاطی تدابیر برتنے کی تاکید کی ہے ۔

    بتادیں کہ مرکزی حکومت کی طرف سے پانچ اگست کے دفعہ 370 اور دفعہ 35 اے کے تحت حاصل خصوصی اختیارات کی تنسیخ اور ریاست کو دو فاقی حصوں میں منقسم کرنے کے فیصلوں کے خلاف غیر اعلانیہ ہڑتالوں کا ایک لامتناہی سلسلہ شروع ہوا تھا جس کے نقوش ہنوز جاری ہیں۔
    موصولہ اطلاعات کے مطابق وادی کشمیر میں اتوار کے روز سنڈے مارکیٹ میں دن بھر لوگوں کا بے تحاشا رش رہا اور لوگوں کو مختلف چیزوں خاص طور پر گرم ملبوسات کی خریداری میں مصروف دیکھا گیا۔
    لوگوں کی بھیڑ بھاڑ جس میں نوجوانوں کی زیادہ تعداد تھی دیگر اشیائے ضروریہ خاص کر گھریلو ساز وسامان کی خریداری میں بھی مصروف دیکھا گیا۔

    یہ بھی پڑھیں  دیوالی کے بعد بنگال میں مشترکہ تحریک چلائیں گی سی پی ایم اور کانگریس

    ادھر وادی کے دیگر اضلاع اور قصبہ جات کے بازاروں میں دکانیں کہیں صبح کے وقت تو کہیں دوپہر کے بعد کھل گئیں تاہم سڑکوں پر دن بھرٹرانسپورٹ کی نقل وحمل برابر جاری وساری رہی۔
    وادی میں اگرچہ مواصلاتی خدمات جزوی طور پر اور ریل سروس کلی طور پر بحال ہوئی ہے لیکن انٹرنیٹ اور ایس ایم ایس خدمات مسلسل معطل ہیں جس کے باعث لوگوں بالخصوص صحافیوں، طلبا اور تاجروں کو گوناگوں مشکلات سے دوچار ہونا پڑرہا ہے ۔

    یہ بھی پڑھیں  محکمہ بجلی سے پریشان نوجوان کی زہر کھاکر خودکشی

    این ای ای ٹی امتحانات میں حصہ لینے کے خواہشمند امیدواروں کا کہنا ہے کہ انہیں انٹرنیٹ کی مسلسل معطلی کی وجہ سے آن لائن فارم جمع کرنے کے لئے در در کی ٹھوکریں کھانا پڑرہی ہیں۔
    وادی کی مین اسٹریم جماعتوں سے وابستہ بیشتر لیڈران بدستور خانہ یا تھانہ نظر بند ہیں۔ انتظامیہ نے ایک طرف محبوس لیڈروں کی رہائی کا سلسلہ جاری رکھا ہے تو دوسری طرف ڈاکٹر فاروق عبداللہ، عمر عبداللہ اور محبوبہ مفتی کو سردی کے پیش نظر جموں منتقل کرنے پر غور کیا جارہا ہے ۔
    انتظامیہ نے حال ہی میں سردی کے پیش نظر ہی 33 لیڈروں کو سنتور ہوٹل سے مولانا آزاد روڑ پر واقع ایم ایل اے ہوسٹل منتقل کیا ہے ۔

    یہ بھی پڑھیں  ماحولیات اور صفائی ستھرائی کیلئے پلاسٹک سب سے بڑا مسئلہ: شاہ

    LEAVE A REPLY

    Please enter your comment!
    Please enter your name here
    یہ بھی پڑھیں  برفیلی ہواؤں سے روزمرہ کی زندگی متأثر، کہرے سے دھیمی ہوئے رفتار

    Latest news

    ارجن سنگھ افواہیں پھیلارہے ہیں، میں مرنا پسند کروں گا مگر بی جے پی میں شامل نہیں ہوسکتا : سوگت رائے

    نئی دہلی : بی جے پی کے رکن پارلیمنٹ ارجن سنگھ کے ذریعہ ترنمول کانگریس کے پانچ ممبران پارلیمنٹ...

    کورونا کے بچاؤ کے لیے ہاتھ جوڑ کر التجا نہیں ماننے پر سختی : منیش سسودیا

    نئی دہلی : نائب وزیر اعلی منیش سسودیا نے آج پتپڑ گنج میں مسک کی تقسیم اور معاشرتی فاصلے...

    دفتر اور عملہ کی کمی کی وجہ سے ، کمیشن کے صدر کبھی کبھی کانفرنس روم میں آکر بیٹھ جاتے ہیں: آتشی

    نئی دہلی : سینئر رہنما اور عام آدمی پارٹی کی ایم ایل اے آتشی نے کہا کہ مرکزی حکومت...

    کانگریس کی ‘خاموشی’ اور ‘گپکاراعلامیہ’ خاندانی اور تباہ کن سیاست کے لئے ‘اعلان مرگ’ ثابت ہوگا : مختار عباس نقوی

    کپوارہ: بی جے پی کے سینئر رہنما اور مرکزی وزیر مختار عباس نقوی نے کہا کہ کانگریس کی 'خاموشی'...

    امانت اللہ خان تیسری مرتبہ وقف بورڈ کے بلامقابلہ چیئرمین منتخب

    دہلی وقف بورڈ کے آفس میں ممبران اور بورڈ عملہ نے کیا شاندار استقبال،دہلی کی عوام اور وزیر اعلی...

    دہلی میں آئی سی یو بیڈ کی تھوڑی کمی ہے ، ہم ہر اسپتال کو جنگی بنیادوں پر دیکھ رہے ہیں اور آئی...

    نئی دہلی : وزیر اعلی اروند کیجریوال نے آج ڈی ڈی یو کا دورہ کیا اور وہاں کوویڈ کی...

    Must read

    You might also likeRELATED
    Recommended to you