رازداری پالیسی

ہمارے بارے میں

رابطہ

  • قومی نیوز
  • ہوم

    Hindi

    Epaper Urdu

    YouTube

    Facebook

    Twitter

    Mobile App

    آرٹیکل 370 معاملہ: سپریم کورٹ نے مرکزی حکومت کو جاری کیا نوٹس

    نئی دہلی: کشمیر کا خصوصی درجہ ختم کرنے کے خلاف دائر درخواستوں پر سپریم کورٹ نے مرکزی حکومت کو نوٹس جاری کیا گیاہے۔ اس معاملے پر اکتوبر کے پہلے ہفتے میں پانچ ججوں کی آئین بنچ سماعت کرے گی۔ ساتھ ہی جموں و کشمیر میں میڈیا پر لگی پابندی پر بھی کورٹ نے مرکزی حکومت کو نوٹس جاری کیا ہے۔ کورٹ نے اس معاملے پر سات دنوں میں سپریم کورٹ نے جواب طلب کیا ہے۔
    وہیں سپریم کورٹ نے مارکسی کمیونسٹ پارٹی کے سیکرٹری جنرل سیتا رام یچوری کو سرینگر میں پارٹی کے سابق ممبر اسمبلی یوسف تارگامی سے ملنے کی اجازت دے دی ہے۔ سیتا رام یچوری کے وکیل نے کہا کہ ہم اپنے بیمار سابق ممبر اسمبلی سے نہیں مل پائے، ہمیں ایئرپورٹ سے ہی واپس کر دیا گیا۔ تب چیف جسٹس نے کہا کہ ہم حکم دیتے ہیں، آپ جائیے۔ صرف اپنے دوست سے ملنے کے لئے۔ ان کا حال چال لیجیئے۔ واپس آ جائیے اور کوئی سرگرمی نہ کریں۔ حالانکہ سپریم کورٹ کے اس حکم پر سالیسٹر جنرل تشار مہتہ نے اعتراض جتایا کہ یہ سفر خالصتاً سیاسی ہے۔ تب چیف جسٹس رنجن گوگوئی نے کہا کہ اگر کوئی شہری ملک میں کہیں پر جانا چاہتا ہے، تو اس کی اجازت ہونی چاہئے۔ اگر وہ وہاں اور کچھ سرگرمی کرتے ہیں، تو انہیں روکئے اور ہمیں بتائیں۔
    کورٹ نے قانون کے طالب علم محمد علیم سید کو اس کے والدین سے ملنے کی اجازت دی۔ کورٹ نے اننت ناگ میں اس کے والدین سے ملنے کی اجازت دیتے ہوئے حکومت کو علیم سید کی حفاظت کو یقینی بنانے کی ہدایت دی۔
    گزشتہ 16 اگست کو عدالت نے دفعہ 370 کو ہٹانے کے بعد جموں و کشمیر میں پابندیوں اور کرفیو ہٹائے جانے اور مواصلات کی خدمات بحال کرنے کا مطالبہ والی عرضی پر سماعت ملتوی کردی تھی۔ کشمیر میں لینڈ لائن، موبائل، انٹرنیٹ بحال کرنے، صحافیوں کو آنے جانے پر روک ٹوک نہ لگانے کا مطالبہ کرنے والے اخبار کشمیر ٹائمز کی ایڈیٹر انورادھا بھسین کی درخواست پر سپریم کورٹ نے کوئی بھی حکم نہیں دیا تھا۔ کورٹ نے کہا تھا کہ حکومت کو حالات معمول پر لانے کا موقع ملنا چاہئے۔ اٹارنی جنرل نے عدالت کو بتایا تھا کہ روز کشمیر میں حالات بدل رہے ہیں، ساتھ ہی سیکورٹی ایجنسیاں حالات پر نظر رکھے ہوئے ہیں۔جیسے ہی جموں و کشمیر میں حالات معمول پر ہوں گے ویسے ہی تمام پابندیاں ہٹا لی جائیں گی۔

    یہ بھی پڑھیں  اپنے مضبوط گڑھ شالیمار باغ میں بی جے پی کے ووٹوں کی تعداد 48 فیصد سے کم ہو کر 36 ہوگئی ہے: سوربھ بھاردواج

    LEAVE A REPLY

    Please enter your comment!
    Please enter your name here
    یہ بھی پڑھیں  کامن ویلتھ گیمز ولیج میں بنایا گیا 500 بیڈز کا کوویڈ کیئر سینٹر

    Latest news

    میرٹ کی بنیادپر منتخب ہونے والے 670طلباء میں ہندوطلباء بھی شامل

    تعلیمی سال 2021-2022کے لئے جمعیۃعلماء ہند کے وظائف جاری ، مذہب سے اوپر اٹھ کر کام کرنا تو جمعیۃعلماء...

    آدیش گپتا نے اپنے بیٹوں کے ساتھ مل کر ایم سی ڈی کی زمین پر اپنا سیاسی دفتر بنایا: درگیش پاٹھک

    نئی دہلی : عام آدمی پارٹی کے ایم سی ڈی انچارج درگیش پاٹھک نے کہا کہ بی جے پی...

    مغربی يو پی : راشٹریہ لوک دل اور سماج وادی پارٹی اتحاد کتنا مضبوط ؟

    مغربی یوپی : مظفر نگر فسادات کے بعد مغربی یوپی میں بالخصوص پوری ریاست میں بالعموم فرقہ واریت اور...

    صوبائی کنونشن میں رئیس الدین رانا کو ”حفیظ میرٹھی ایوارڈ“ ملنے پر ایسوسی ایشن نے کیا استقبال

    مظفر نگر : اردو ٹیچرز ویلفیئر ایسوسی ایشن مظفر نگر کے عہدیداران نے آج صوبائی نائب صدر رئیس الدین...

    اسمبلی الیکشن : سوشل میڈیا کے چاروں پلیٹ فارموں پر سرگرم

    لکھنؤ : ملک کی سیاسی سمت کو طے کرنے والے صوبے اترپردیش میں کورونا بحران کے درمیان ہورہے اسمبلی...

    میرے والد اعظم خان کی جان کو خطرہ : عبد اللہ اعظم

    عبد اللہ اعظم نے کہا کہ کورونا پروٹوکول کے نام پر لوگوں کا استحصال کیا جا رہا ہے، گھر...

    Must read

    You might also likeRELATED
    Recommended to you