رازداری پالیسی

ہمارے بارے میں

رابطہ

  • قومی نیوز
  • ہوم

    Hindi

    Epaper Urdu

    YouTube

    Facebook

    Twitter

    Mobile App

    کانگریس اس مصیبت کی گھڑی میں ہمیشہ مدد کے لیے تیار: پرینکا گاندھی

    دہلی :آل انڈیا کانگریس پارٹی کی جنرل سکریٹری، محترمہ پرینکا گاندھی نے وزیر اعلی یوگی آدتیہ ناتھ کو یوپی میں کورونا کی جانچ اور علاج کی سہولت میں اضافہ کرنے کے لئے ایک خط لکھا ہے۔

    خط میں کانگریس جنرل سکریٹری مسز پرینکا گاندھی نے لکھا ہے کہ کورونا وائرس پورے ملک سمیت اترپردیش میں اپنی تباہی پھیلارہا ہے۔ آج ہمارے نظام صحت کے سامنے یہ سب سے بڑا چیلنج یہ ہے کہ ہم وائرس سے متاثرہ افراد کی شناخت اور ان کا علاج کس طرح کرسکتے ہیں اور انفیکشن کی مزید پیش رفت کو کیسے روک سکتے ہیں۔

    انہوں نے لکھا ہے کہ اسکریننگ اور جانچ کے مراکز کی تعداد میں اضافہ انفیکشن سے بچنے کا ایک کارگر اور مؤثر طریقہ ہے۔ ساٹھ کروڑ کی آبادی والے جنوبی کوریا نے ہر 1000 میں سے 6 افراد کا تجربہ کیا اور وہ وائرس کے انفیکشن کو روکنے میں کامیاب ہوگیا ہے۔ راجستھان کے بھیلواڑہ میں جنگی پیمانے پر کام کیا گیا ہے اور 9 دن کے اندر 24 لاکھ سے زیادہ افراد کی اسکریننگ کی گئی اور زیادہ سے زیادہ ٹیسٹ کیے گئے تاکہ متاثرہ افراد کی شناخت ہوسکے۔ اتر پردیش کی آبادی تقریبا 23 کروڑ ہے جبکہ جانچ کے لئےاب تک لئے گئے نمونوں کی تعداد صرف 7000 ۔ ہماری آبادی کے لحاظ سے ریاست میں ہونے والی یہ تحقیقات بہت کم ہیں۔ تشخیص کی رفتار تیز کرنا ضروری ہے۔ ریاست اترپردیش جیسی بڑی آبادی والی ریاست کے لئے ٹیسٹوں کی تعداد میں اضافہ ایک عارضہ ثابت ہوسکتا ہے۔

    یہ بھی پڑھیں  سی اے اے کے خلاف لکھنؤ خواتین اور بچوں کا مظاہرہ جاری

    خط میں انہوں نے وزیراعلیٰ کو لکھا ہے کہ زیادہ سے زیادہ لوگوں کی جانچ پڑتال کرکے، ہائی رسک کی طرف بڑھنے والے مریضوں کے لیے جنگی تیاری کے ساتھ سلوک کرنا پڑے گا تاکہ ہمارے آئی سی یوز پر کم سے کم دباؤ پڑے نیز ہمیں اپنے ‘آئییسلوشن وارڈ اور قرنطینیہ مراکز’ کو بھی انسانی وقار کے مطابق بنانا ہوگا۔

    انہوں نے اس تشویش کا اظہار بھی کیا ہے کہ ریاست کے متعدد قرنطینیہ مراکز میں لوگ پریشانی کا شکار ہیں۔ بہت سی جگہوں پر کھانے، ٹھہرنے اور صفائی کا نظم ٹھیک نہیں ہے۔
    براہ کرم اس پر خصوصی توجہ دیتے ہوئے انہیں منظم کرنے کی کوشش کی جائے اور ان مراکز میں جو غریب لوگ رکے ہوئے ہیں ان کے متعلقین کے گھر راشن اور الاؤنس پہنچایا جائے تاکہ یہ افراد بے فکری سے یہاں رکے رہیں-

    یہ بھی پڑھیں  افغانستان دنیا کا سب سے زیادہ جان لیوا جنگی ملک : یونیسیف

    انہوں نے خط میں لکھا ہے کہ پورے ملک میں معاشرتی سطح پر انفیکشن کی اطلاعات آنا شروع ہوگئی ہیں اور یہ دیکھنے میں آرہا ہے کہ شہری گنجان آبادی والے علاقوں میں یہ وفا تیزی سے پھیل رہی ہے۔ ایسی بھی اطلاعات ہیں کہ متاثرہ افراد بھی اپنی بیماری چھپانے کی کوشش کر رہے ہیں۔ ممکن ہے کہ یہ کورونا کے بارے میں معاشرے میں پھیلے خوف کی وجہ سے ہو رہا ہو۔ لہذا ، یہ ضروری ہے کہ ان جگہوں پر جنگی بنیادوں پر مناسب معلومات دی جائیں اور افواہوں اور غلط فہمیوں کا فوری طور پر پھیلانا بند کیا جائے۔

    یہ بھی پڑھیں  دہلی حکومت کا ڈینگو کے خلاف 10 ہفتہ، دس بجے، 10 منٹ مہم کا آغاز اتوار سے شروع : اروند کیجریول

    انہوں نے خط میں وزیر اعلی کو لکھا ہے کہ آپ نے کل سے ہی اپنے لیے ماسک پہننا لازمی قرار دے دیا ہے۔ براہ کرم جنگی سطح کے ماسکوں اور سینیٹائیزرز کی تقسیم کو یقینی بنائیں اور لوگوں کو واضح طور پر یہ بتایا جائے کہ وہ ماسک اور سینیٹائزر کہاں سے حاصل کریں۔

    کانگریس کے جنرل سکریٹری نے خط میں لکھا ہے کہ ضروری ہے کہ حکومت ایسے اقدامات کرے جس سے معاشرتی سطح پر عام لوگوں کو اعتماد میں لیا جا سکے، ایسا کرنے کا ایک طریقہ یہ بھی ہوسکتا ہے کہ آپ این جی اوز، سماجی تنظیموں، ان علاقوں میں کام کرنے والی دوسری سیاسی جماعتوں کے کارکنوں کی مدد لیں اور ان سے مشورہ کریں اور اس لڑائی میں سب کو شامل کریں۔

    انہوں نے خط میں کہا کہ کانگریس اس بحران میں مدد کے لئے ہمیشہ تیار ہے۔ عوام کا اعتماد جیت کر ہی اس وبا پر فتح حاصل کی جاسکتی ہے ڈر پھیلا کر یا الگ تھلگ کرکے نہیں، فی الواقع انتظامیہ کی ذمہ داری ہے کہ وہ ایسا ماحول پیدا کرے جس کی خوف کی فضا نہ پھیلے، لوگ صدمے میں آئے بنا اور بنا بدحواس ہوئے خود کو ہر ممکن مدد کے لیے پیش کریں-

    یہ بھی پڑھیں  افغانستان دنیا کا سب سے زیادہ جان لیوا جنگی ملک : یونیسیف
    یہ بھی پڑھیں  سی اے اے کے خلاف لکھنؤ خواتین اور بچوں کا مظاہرہ جاری

    خط کے اختتام پر نوبل انعام یافتہ ماہر معاشیات امرتیہ سین کے حوالے سے کانگریس کی سیکرٹری جنرل نے لکھا کہ انتظامیہ کی ذمہ داری ہے کہ وہ صحیح معلومات کو زیادہ سے زیادہ فروغ دے، عوام کو اعتماد میں لیکر ان کا تعاون حاصل کرے اور زیادہ سے زیادہ عوامی مکالمات ہوں-

    انہوں نے لکھا ہے کہ ہم اس وبا سے لڑنے میں ساتھ ہیں۔ کرونا وائرس کی کوئی نسل اور مذہب نہیں ہے۔ اس کا اثر سب پر ایک جیسا پڑے گا۔ اس جنگ میں، ہمیں اپنی سیاسی سوچ کو بالائے طاق رکھتے ہوئے خوف سے پاک ماحول پیدا کرنے کے لئے اقدامات کرنے کی ضرورت ہے۔ کانگریس پارٹی کا ہر قائد اور ہر کارکن عوام کی حمایت کے لئے تیار ہے۔

    LEAVE A REPLY

    Please enter your comment!
    Please enter your name here

    Latest news

    امونیا کی سطح میں اضافے کی وجہ سے سونیا وہار اور بھاگیرتی واٹر ٹریٹمنٹ پلانٹ متاثر ہوں گے ، عام پانی کی فراہمی کل...

    نئی دہلی : دہلی جل بورڈ کے وائس چیئرمین ، راگھو چڈھا نے جنوبی دہلی ، مشرقی دہلی اور...

    بی جے پی نے ایم سی ڈی کو لوٹ کر برباد کردیا ، وہ اب بھی چھوڑ دیں ، ‘آپ’ ایم سی ڈی بھی...

    نئی دہلی : دہلی ایم سی ڈی میں بدانتظامی اور بدعنوانی کا الزام بی جے پی پر عائد کرتے...

    تبلیغی جماعت کو بدنام کرنے کامعاملہ ، جمعیۃعلماء ہندکی عرضی پر نہیں ہوسکاکوئی فیصلہ، مرکزی حکومت کا حلف نامہ داخل کرنے سے ٹال مٹول

    کوئی بھی مسلمان اپنے محبو ب پیغمبرحضرت محمد ﷺ کی شان میں ادنی سی گستاخی بھی برداشت نہیں کرسکتا:...

    دہلی فساد معاملہ ، متاثرین کو ہوئی اب تک کل24.48 کروڑمعاوضہ کی تقسیم

    657رد ہوئے کیسوں پر وقف بورڈ کر رہاہے کام،اسمبلی کی اقلیتی فلاحی کمیٹی کی میٹنگ میں سامنے آرہی ہے...

    ویسٹ ٹو پاور پلانٹ سے غازی پور منڈی سے نکلنے والا کچرا بجلی بنانے کے لئے استعمال کیا جائے گا : وزیراعلی اروند کیجریوال

    نئی دہلی : وزیر اعلی اروند کیجریوال نے کہا کہ منڈی سے نکلنے والے کچرے سے غازی پور کی...

    اسٹیٹ کوآرڈینیٹرکے نوٹیفکیشن کے خلاف جمعیۃعلماء ہندکی پٹیشن منظور

    اس طرح کا نوٹیفکیشن جاری کرکے اسٹیٹ کوآرڈینیٹرتوہین عدالت کے مرتکب ہوئے ہیں: وکلاء کی دلیل ، ہم آسام...

    Must read

    You might also likeRELATED
    Recommended to you