رازداری پالیسی

ہمارے بارے میں

رابطہ

  • قومی نیوز
  • ہوم

    Hindi

    Epaper Urdu

    YouTube

    Facebook

    Twitter

    Mobile App

    دگ وجے نے بی جے پی حکومت پر کسا طنز

    بھوپال : اپنے بیانات کو لے کر ہمیشہ میڈیا کی شہ سرخیوں میں رہنے والے کانگریس کے سینئر لیڈراورراجیہ سبھا ممبر پارلیمنٹ اور مدھیہ پردیش کے سابق وزیر اعلی دگ وجے سنگھ نے ہفتہ کو سوشل میڈیا کے ذریعے مہاراشٹر میں بی جے پی کی طرف سے حکومت بنانے کو لے کر وزیر اعظم نریندر مودی پر طنز کسا ہے۔ ساتھ ہی انہوں نے اسے آئین کی خلاف ورزی قرار دیتے ہوئے مہاراشٹر کے گورنر سے سوال پوچھے ہیں۔

    دگ وجے سنگھ نے ہفتہ کو ٹوئٹر کے ٹویٹ کیا ہے’مودی جی کاعوام کو انتخابی نعرہ ’نہ کھاؤں گا نہ کھانے دوں گا‘۔ اب وزیر اعظم مودی جی کا نعرہ ہے’خوب کھاؤ اور خوب کھا کر کھلا کر بی جے پی میں آ جاؤ ای ڈی ، سی بی آئی، آئی ٹی سے نجات پائیے‘کیونکہ مودی ہے تو سب کچھ ممکن ہے‘۔ گناہ کا گھڑا پھوٹ کر رہے گا‘۔

    یہ بھی پڑھیں  شیوسینا بلٹ ٹرین منصوبے کا ’بوجھ‘ لوگوں کے سر ڈالنے کے خلاف ہے: سنجے راوت

    انہوں نے سلسلہ وار ٹویٹ کر کے مہاراشٹر میں بی جے پی کی حکومت بننے پر گورنر سے بھی سوال پوچھے ہیں۔ انہوں نے ٹویٹ کیا ہے کہ’’مہاراشٹر کے گورنر موصوف سے میرے کچھ بنیادی سوالات ہیں، کیا گورنر جی کو این سی پی کی طرف سے حمایت کا کوئی خط ملا ہے؟ اگر نہیں کیا ہے تو کیا گورنر جی نے آئین کی خلاف ورزی نہیںکی ہے؟ عام طور پر گورنر جی کو این سی پی کے صدر جینت پاٹل کا ممبران اسمبلی کے دستخط سمیت خط ملنے کے بعد ہی حلف کے لئے مدعو کرنا چاہئے تھا‘۔

    یہ بھی پڑھیں  امیر شریعت مولانا محمد ولی رحمانی کی وفات پر ملت ٹائمز کے زیر اہتمام تعزیتی نشست کا انعقاد

    انہوں نے اگلے ٹویٹ میں لکھا ہے کہ’اتفاق سے معززسی جے آئی بھی مہاراشٹر کے ہیں۔ مہاراشٹر کے ایڈووکیٹ جنرل رہے ہیں، کیا ان کے رہتے ہوئے اگر ان کے سامنے سپریم کورٹ میں یہ آئین کی خلاف ورزی کا کیس آتا ہے تو کیا وہ اپنا آئین کی پاسداری کریں گے؟ مجھے یقین ہے وہ پاسداری کریں گے‘۔
    انہوں نے مہاراشٹر میں حکومت بنانے کے کوشش کر رہے سیاسی جماعتوں کو مشورہ دیتے ہوئے ٹویٹ کیا ہے کہ’شیوسینا، این سی پی اور کانگریس کو اپنی طاقت زمین پر دکھاکر سڑکوں پر اترنا چاہئے
    دیکھتے ہیں کہ ممبئی اور مہاراشٹر کے عوام کس کے ساتھہیں؟ تینوں جماعتوں کے لیے یہ وجود کا سوال ہے۔ بالخصوص ادھو اور ٹھاکرے خاندان کے لیے یہ عزت کا سوال ہے‘۔

    یہ بھی پڑھیں  کس مجبوری میں وزیر اعظم نے اپنے چند سرمایہ دار دوستوں کو ملک کے کسانوں کی شناخت گروی رکھ دی ہے اور وہ کالے قوانین کو واپس نہیں لے رہے ہیں: سنجے سنگھ

    LEAVE A REPLY

    Please enter your comment!
    Please enter your name here
    یہ بھی پڑھیں  وقف کی زمین پر چل رہے شراب ٹھیکہ کا لا ئسنس ہوا رد

    Latest news

    میرٹ کی بنیادپر منتخب ہونے والے 670طلباء میں ہندوطلباء بھی شامل

    تعلیمی سال 2021-2022کے لئے جمعیۃعلماء ہند کے وظائف جاری ، مذہب سے اوپر اٹھ کر کام کرنا تو جمعیۃعلماء...

    آدیش گپتا نے اپنے بیٹوں کے ساتھ مل کر ایم سی ڈی کی زمین پر اپنا سیاسی دفتر بنایا: درگیش پاٹھک

    نئی دہلی : عام آدمی پارٹی کے ایم سی ڈی انچارج درگیش پاٹھک نے کہا کہ بی جے پی...

    مغربی يو پی : راشٹریہ لوک دل اور سماج وادی پارٹی اتحاد کتنا مضبوط ؟

    مغربی یوپی : مظفر نگر فسادات کے بعد مغربی یوپی میں بالخصوص پوری ریاست میں بالعموم فرقہ واریت اور...

    صوبائی کنونشن میں رئیس الدین رانا کو ”حفیظ میرٹھی ایوارڈ“ ملنے پر ایسوسی ایشن نے کیا استقبال

    مظفر نگر : اردو ٹیچرز ویلفیئر ایسوسی ایشن مظفر نگر کے عہدیداران نے آج صوبائی نائب صدر رئیس الدین...

    اسمبلی الیکشن : سوشل میڈیا کے چاروں پلیٹ فارموں پر سرگرم

    لکھنؤ : ملک کی سیاسی سمت کو طے کرنے والے صوبے اترپردیش میں کورونا بحران کے درمیان ہورہے اسمبلی...

    میرے والد اعظم خان کی جان کو خطرہ : عبد اللہ اعظم

    عبد اللہ اعظم نے کہا کہ کورونا پروٹوکول کے نام پر لوگوں کا استحصال کیا جا رہا ہے، گھر...

    Must read

    You might also likeRELATED
    Recommended to you