رازداری پالیسی

ہمارے بارے میں

رابطہ

  • قومی نیوز
  • ہوم

    Hindi

    Epaper Urdu

    YouTube

    Facebook

    Twitter

    Mobile App

    ہر مذہب ہر فرقہ ہندوستانی انگریز کے مظالم کا شکار

    میرٹھ:’’ہندوستان دنیا کا وہ واحد ملک ہے جہاں ہر دس میل پر زبان تہذیب اور لباس وغیرہ تبدیل ہوجاتے ہیں، اس کے باوجود پورا ملک نظریاتی طور پر متحد اور رنگا رنگ پھولوں کا گلدستہ ہے، مختلف طبقات کے لوگوں میں پیار محبت، الفت، یگانگت اور ہمدردی ہے یہ وہ خصوصیت ہے جو ہندوستان کے علاوہ دنیا کے کسی ملک میں نہیں پائی جاتی‘‘ ان خیالات کا اظہار آج یہاں گلزارِ حسینیہ جونیئر ہائی اسکول کے میدان میں جامعہ گلزارِ حسینیہ اجراڑہ کی جانب سے منعقدہ 15۱؍ویں ’’گاندھی جینتی‘‘ 2019ء کے پروگرام میں جامعہ کے مہتمم اور آل انڈیا ملی کونسل کے صدر مولانا حکیم محمد عبداللہ مغیثی نے اپنے خطاب کے دوران کیا، جشن یومِ جمہوریہ کی طرز پر ہی پرچم کشائی اور قومی ترانہ کے بعد مولانا مغیثی نے اپنے خطاب میں مذکورہ بالا قدیم تہذیب ورایات کے باقی رہنے کی دعاء کے ساتھ بتایا کہ ہر مذہب ہر فرقہ اور ہر برادری کے ہندوستانی انگریز کے مظالم کا شکار ہوئے، سو سال بعد9؍مئی کو میرٹھ سے اس کے خلاف صدائے احتجاج بلند ہوئی

    جس کو انگریز نے بہادر شاہ ظفر کے خون کے آخری قطرہ تک دبانے اور کچلنے کی کوشش کی، لیکن یہ چنگاری ریشمی رومال او ر تحریک خلافت وغیرہ کی شکل میں سلگتی رہی، مہاتما گاندھی اس وقت تک جنوبی افریقہ میں انسانی حقوق کی لڑائی لڑ رہے تھے، ہندوستان میںانگریز کا ظلم بڑھا تو یہاں آکر خلافت آندولن سے جڑے اورعلماء دانشور تمام طبقات کو جوڑ کر اس آندولن کو تقویت پہونچائی، مہتمم جامعہ نے کانگریس کے قیام، نمک ستیہ گرہ، ستیہ اَہنسا وسول نافرمانی اور افریقہ میں انسانی حقوق کی لڑائی وغیرہ مہاتما گاندھی سے وابستہ مختلف تحریکات کے حوالہ سے گاندھی جی کے علماء کرام سے تعاون اور اشتراک عمل کا تذکرہ کیا اور گاندھی جی کو تحریک آزادی کا ہیرو اور بابائے قوم بتاتے ہوئے یومِ ولادت منانے کو ان کی یاد زندہ رکھنے کا ذریعہ قرار دیا، ساتھ ہی قوم کے اتنے بڑے محسن کی شہادت پر افسوس وصدمہ کا اظہار اور حالیہ دنوں میں ان کے مجسمہ کی بے حرمتی اور پتلا بناکر علامتی قتل کی شدید مذمت کی، نیز اس عمل کو ظلم سے تعبیر کرتے ہوئے ہندوستان کی وحدت وسلامتی کو نقصان پہونچانے والی قابل مذمت حرکت قرار دیا، مولانا مغیثی نے این آرسی کا نام لئے بغیر حالیہ سرکاری اقدمات پر مرکزکی حکومت کا شکریہ ادا کیا

    یہ بھی پڑھیں  عام آدمی پارٹی نے کیا’میرا ووٹ کام کو ، سیدھے کیجریوال کو‘ مہم کا آغاز
    یہ بھی پڑھیں  ممتا بنرجی جے پی اور آر ایس ایس کی ایجنٹ ہے : ادھیر رنجن

    کہ اس بہانے بیداری آتی ہے اب کم از کم شہریت کا سرٹیفیکیٹ تو ہر شخص کی جیب میں رہے گا، ساتھ ہی قانون کے مطابق دستاویزات صحیح رکھنے کا پیغام دیتے ہوئے زور دیکر کہا کہ ہم ہندوستانی تھے، ہندوستانی ہیں اور ہندوستانی رہیں گے، ہمیں اس پر فخر ہے دورانِ پروگرام مولانا مدنی، سردار بھگت سنگھ، سردار پٹیل، مولانا آزاد، چندر شیکھر آزاد، اشفاق اللہ خاں وجواہر لال نہرو وغیرہ کو بھی یاد کیا گیا اور خاص طور سے لال بہادر شاستری کی وطن کے لئے خدمات کا تذکرہ کیا گیا، ’’مہاتما گاندھی کی خدمات قربانیوں اور افکار ونظریات سے متعلق نظموں، گیتوں، ترانوں اور مکالمہ وتقاریر پر مشتمل طلبہ وطالبات کے دلچسپ پروگرام کے بعد جونیئر ہائی اسکول کے مینیجر اور آل انڈیا ملی کونسل اترپردیش کے صدر مولانا آس محمد گلزارِؔ قاسمی نے گاندھی جی کے افکار وخیالات اور نظریات کے حوالہ سے بتایا کہ مہاتما گاندھی ایسے رہنما تھے

    یہ بھی پڑھیں  کورونا وائرس پوری دنیا میں قہر بن کر ٹوٹ رہاہے : مولانا ارشد مدنی

    جنہوں نے ظلم کہیں پر بھی اور کسی پر بھی برداشت نہ کیا، انہوں نے دورانِ خطاب کہا کہ ہندوستان کی آزادی خلافت موومینٹ کی دین ہے، اور علی برداران کی اس تحریک کو پروان چڑھانے کا سہرا مہاتما گاندھی کے سر ہے، انہوں نے کہا کہ علمائے کرام نے گاندھی کواپنا جانی ومالی تعاون پیش کرکے مہاتما گاندھی بنایا انہیں ہر ضروری تعاون دیا اور گاندھی جی نے تمام طبقات کو اکٹھا کرکے تحریک خلافت کو تقویت پہونچانے میں اہم کردار ادا کیا، ساتھ ہی کانگریس میں روح پھونکی اور انہیں کوششوں کی بدولت ۱۹۰؍ سالہ غلامی سے نجات ملی، مولانا قاسمی نے گاندھی جینتی کے حوالہ سے کہا کہ گاندھیائی تحریک ہماری تحریک ہے، ہم کسی کے دباؤ میں یہ ’’جینتی‘‘ نہیں منا رہے ہیں بلکہ یہ ہماری تاریخ کا حصہ ہے جس کو اجاگر کرنا اور آنیوالی نسلوں تک پہونچانا ہماری ذمہ داری ہے، انہوں نے افسوس کے ساتھ کہا کہ گاندھی جی کا ایجنڈا عدم تشدد ہے جس کو آج کچلا جارہا ہے اور آزادی کی علامت ترنگے کی بے حرمتی کی جارہی ہے،

    یہ بھی پڑھیں  آن لائن سسٹم سے عازمین کے ‘ایز آف ڈوئنگ حج’ کا خواب شرمندہ تعبیر
    یہ بھی پڑھیں  سی اے بی کے خلاف احتجاج ، پولیس فائرنگ میں دو مظاہرین کی موت

    پروگرام میں شاعر میاںؔ میرٹھی نے گاندھی جینتی سے متعلق کلام پڑھا، حسنین اجراڑوی نے بھی اشعار پڑھے، نظامت کے فرائض مولانا محمد اسلم مظاہری نے انجام دئے، طلبہ وطالبات نے گاندھی جینتی سے متعلق بینر وپلے کارڈ اٹھائے ہوئے تھے اور جونیئر کے بچوں نے گاندھی جی کے قائدانہ رول اور ہندومسلم، سکھ، عیسائی کے اتحاد کا علامتی وتصوراتی خاکہ پلے کیا تھا، جس کو سامعین وناظرین نے بیحد پسند کیا، مولانا اسلم مظاہری کی گاندھیائی اصولوں کے فروغ اور قدیم تہذیب وروایات کے احیاء وغیرہ کی دعاؤں پر یہ پروگرام اختتام پذیر ہوا جس میں جامعہ کے صدر المدرسین مولانا سید عقیل احمد قاسمی، مولانا منقاد احمد قاسمی، مولانا منقاد احمد راجپوری وغیرہ تمام اساتذہ وذمہ داران، بستی کی سرکردہ شخصیات اور تمام ہی طلبہ وطالبات نے شرکت کی۔

    LEAVE A REPLY

    Please enter your comment!
    Please enter your name here

    Latest news

    مرکزی حکومت کی گائڈ لائنس کو دیکھتے ہوئے عبادت گاھوں میں عبادت کی جاسکتی ھے

    سھارنپور : ایک اھم میٹنگ 29ستمبر شام 5بجے ضلع مجسٹریٹ سھارنپورجناب اکھلیش سنگھ نے بلائ جس میں ضلع کے...

    محکمۂ فلاح وبہبود کو ملی بڑی کامیابی ، 6 بچہ مزدوروں کو پولس نے کیا رہا

    ہاپوڑ (سید اکرام) محکمۂ فلاح و بہبود برائے اطفال نے مہم چلا کر چند بچہ مزدور کو رہائی دلائی...

    سی بی آئی عدالت کے فیصلہ سے عقل حیران ہے کہ پھر مجرم کون؟

    صدر جمعیۃ علماء ہند مولانا سید ارشد مدنی نے بابری مسجد ملزمین کے تعلق سے دیے گئے فیصلہ پر...

    بابری مسجد انہدام سانحہ : ملزمین ایل کے اڈوانی،جوشی،اوما بھارتی،کلیا ن سنگھ سمیت تمام 32 ملزمین کو کیابری

    لکھنؤ : اترپردیش کی راجدھانی لکھنؤ میں ایس بی آئی کی اسپیشل عدالت نے 28سال پرانے بابری مسجد مسماری...

    یوپی میں امن وامان بہت خراب ہورہا ہے ، ہاترس میں تین اگست سے تین عصمت دری کے واقعات ہوچکے ہیں : سوربھ بھاردواج

    نئی دہلی : اترپردیش میں عصمت دری کے بڑھتے ہوئے واقعات ، برہمن اور دلت سماج کے خلاف تیزی...

    بھیم آرمی چیف چندر شیکھر آزاد عصمت دری کی شکار ہونے والی لڑکی سے اے ایم یو جے این میڈیکل کالج ملنے پہنچے

    علیگڑھ : علی گڑھ میں بھیم آرمی اور آزاد سماج پارٹی کے قومی صدر چندرشیکھر آزاد ہاتھراس کے تھانہ...

    Must read

    You might also likeRELATED
    Recommended to you