رازداری پالیسی

ہمارے بارے میں

رابطہ

  • قومی نیوز
  • ہوم

    Hindi

    Epaper Urdu

    YouTube

    Facebook

    Twitter

    Mobile App

    سابق مرکزی وزیریشونت سنہا نے چھوڑا بی جے پی کا ساتھ ،کہا سی اے اے کی کوئی ضرورت ہی نہیں تھی

    ادے پور:سابق مرکزی وزیراور بی جے پی کے بزرگ رہنما یشونت سنہا نے کہا ہے کہ شہریت ترمیمی قانون (سی اے اے ) کی ضرورت ہی نہیں تھی، یہ صرف بگڑتی معیشت سے توجہ بھٹکانے کے لئے لایا گیا۔

    سنہا پیر کی صبح ادے پور میں صحافیوں سے مخاطب ہوئے۔انہوں نے کہا کہ اس قانون سے پہلے بھی یہ نظام تھا کہ شہریت فراہم کرنا مرکزی حکومت کے ہاتھ میں ہی تھا۔ اس میں اب مذہب کی بنیاد شامل کر دی گئی۔ انہوں نے سوال اٹھایا کہ 25 سال پہلے بھارت آ چکا شخص کس طرح ثابت کرے گا کہ اس کے ساتھ مذہبی استحصال ہواتھا، کیونکہ اس کے پاس اس کا کوئی ثبوت نہیں دستیاب ہوگا۔

    انہوں نے یہ بھی سوال اٹھایا کہ اس بات کی کیا گارنٹی ہے کہ 31 دسمبر 2014 کے بعد پاکستان، بنگلہ دیش اور افغانستان میں مذہبی استحصال نہیں ہوا ہوگا اور سی اے اے میں شامل کئے گئے مذاہب کا کوئی بھی شخص بھارت نہیں آنا چاہے گا ۔ سنہا نے یہ بھی الزام لگایا کہ سی اے اے میں چین کا نام کیوں نہیں لیا گیا۔

    یہ بھی پڑھیں  جموں و کشمیر سے صدر راج کا خاتمہ

    انہوں نے کہا کہ پارلیمنٹ میں وزیر داخلہ امت شاہ نے اعلان کیا کہ وہ چن چن کر گھسپیٹھیوں کو باہر کریں گے۔ اس کے لئے ان سے پہلے گھسپیٹھیوں کی شناخت تو کرنی ہی ہوگی اور اس کے لئے این آر سی عمل ہی اپنایا جائے گا۔ انہوں نے کہا کہ گزشتہ مدت کار اور موجودہ مدت کار میں حکومت کو جب جب بھی اصل مسائل سے توجہ بھٹکانا ہوتا ہے، حکومت ایسے شگوفے لے آتی ہے۔

    یہ بھی پڑھیں  مفاد عامہ اور کروناوائرس سے تحفظ کیلئے شاہین باغ کی طرح اب سرکار بھی اپنی ذمہ داری نبھائے :ڈاکٹر منظور عالم

    ایک سوال کے جواب میں سنہا نے کہا کہ انہوں نے بی جے پی چھوڑنے کے بعد کوئی سیاسی جماعت میں شمولیت اختیارنہیں کی۔ تاہم، ان کے آئین سے متعلق تحفظ کی مہم میں تمام ایسی پارٹیاں ان کا تعاون کر رہیہیں جو ان کے خیالات سے مماثلت رکھتی ہیں۔ گجرات میں عام آدمی پارٹی، سی پی ایم، سی پی آئی نے پورا تعاون کیا تو راجستھان میں کانگریس ان کاتعاون کر رہی ہے۔

    یہ بھی پڑھیں  دس ہزار آنگن واڑی مراکز بچوں کو حفاظتی ویکسینیشن پلانے کی مہم میں اہم کردار ادا کریں گے

    سنہا نے آبادی کنٹرول قانون کے سوال پر رائے دینے سے انکار کرتے ہوئے سوال پوچھنے والے صحافی سے یہ بھی کہہ دیا کہ آپ بھی حکومت کی طرح مسائل سے توجہ بھٹکا رہے ہیں۔ انہوں نے میڈیا پر یہ بھی الزام لگایا کہ میڈیا ان کی باتوں کو نمایاں طور پر فرنٹ پیج پر نہیں شائع کر رہی ہے، پھر بھی وہ مایوس نہیں ہیں۔

    LEAVE A REPLY

    Please enter your comment!
    Please enter your name here
    یہ بھی پڑھیں  دس ہزار آنگن واڑی مراکز بچوں کو حفاظتی ویکسینیشن پلانے کی مہم میں اہم کردار ادا کریں گے

    Latest news

    دس مہینے بعد تعلیمی سرگرمی شروع ہونے سے بچوں کے چہروں پر لوٹی مسکراہٹ

    نئی دہلی: دس مہینے بعد دہلی کے اسکولوں میں محدود ہی سہی لیکن رونقیں واپس لوٹ آئی ہیں۔ کل...

    دہلی فسادات معاملہ،متاثرین کی باز آبادکاری میں مصروف اقلیتی فلاحی کمیٹی

    میٹنگ میں جلد سے جلد زیر التوامعاملات کے نپٹارہ کی افسران کو ہدایت،کچھ معاملات میں دوبارہ سروے کرنے کی...

    بی جے پی کے زیر اقتدار ایم سی ڈی سے نہ صرف دہلی کے لوگ متاثر ہیں، بلکہ ملازمین بھی نالاں ہیں : سوربھ...

    نئی دہلی : عام آدمی پارٹی کے چیف ترجمان سوربھ بھاردواج نے کہا کہ بی جے پی کے زیر...

    راجیندر نگر کے ایم ایل اے راگھو چڈھا نے سوامی دیانند سروودیا کنیا اسکول کا دورہ کیا

    لاک ڈاؤن کے بعد اسکول کھلنے کے بعد سکیورٹی کے تمام انتظامات کردیئے گئے ہیں، طلباء اساتذہ کو N95...

    Must read

    You might also likeRELATED
    Recommended to you