رازداری پالیسی

ہمارے بارے میں

رابطہ

  • قومی نیوز
  • ہوم

    Hindi

    Epaper Urdu

    YouTube

    Facebook

    Twitter

    Mobile App

    صدر جمعیة علماء ہند مولانا سید ارشد مدنی کی جانب سے سپریم کورٹ میں قانونی چارہ جوئی کا اثر

    زی نیوز نے اروناچل پردیش میں 11تبلیغی جماعت سے متعلق فیک نیوز پرافسو س کا اظہار کیا

    نئی دہلی : گزشتہ کئی سالوں سے چند بے لگام ٹی وی چینلوں کے ذریعہ سماج میں زہر گھولنے کا جو سلسلہ شروع ہواتھا جمعیةعلماءہند کے ذریعہ سپریم کورٹ کا دروازہ کھٹکھٹانے کہ بعد اس پر بریک لگنے کی امید ہے، ایک کے بعد ایک مختلف مقامات سے جہاں انتظامیہ کی جانب سے اس سلسلہ میں وضاحت اور افواہیں پھیلانے والوں کے خلاف کارروائی کی بات سامنے آرہی ہے وہیں کچھ ٹی وی چینلوں کے ذریعہ اپنے فرضی نیوز پر معذرت کے اظہارکا سلسلہ شروع ہوچکا ہے دراصل گزشتہ 7اپریل کو جمعیةعلماءہند کی جانب سے الکٹرانک اور پرنٹ میڈیا کے خلاف سپریم کورٹ میں ایک عرضی داخل کی گئی تھی جس پر جلد سماعت ہونے کی امید ہے

    اس عرضی میں چند میڈیا پر تبلیغی مرکز خصوصامسلمانوں کے خلاف انتہائی غیر ذمہ دارانہ رپورٹنگ کا حوالہ دیتے ہوئے اس کے خلاف قانونی کارروائی کا حکم دینے کی بات کہی گئی ہے .قابل ذکر ہے کہ اس عرضی کے بعد کئی مقامات پر انتظامیہ حرکت میں آئی ہے اور فیک خبروں کی تردید بھی کررہی ہے ,اوراس کے بعد کئی مقامات پر انتظامیہ کی جانب سے اس سلسلہ میں وضاحت پیش کی گئی اور افواہیں پھیلانے والوں کے خلاف کارروائی کی بات کی گئی . اس سلسلہ میں ٹی وی چینلوں کی جانب سے بھی معذرت کا سلسلہ شروع ہوچکاہے، زی نیوز جس پر لگاتار فرضی خبریں نشرکرنے اور مسلمانوں کے خلاف زہر اگلنے کے الزام لگتے رہے ہیں انہوں نے بھی ایسے ہی ایک خبر پر اپنی غلطی کا اعتراف کیا ہے اور اس کے لئے افسوس کا اظہارکیا ہے

    یہ بھی پڑھیں  صفائی کے نام پر حکومتیں دے رہی دھوکہ
    یہ بھی پڑھیں  دہلی تشدد پر ایوان بالا میں ہنگامہ

    جمعیہ علماءہند کی قانونی کارروائی کا مثبت اثر یہ ہواکہ: زی نیوز نے ارونا چل پردیش میں 11 تبلیغی جماعت سے متعلق خبر کے لئے معافی مانگی اور زی نیوز نے ارونا چل پردیش میں کورونا سے تبلیغی جماعت کے 11 متاثرین کی خبر کو انسانی بھول قرار دیتے ہوئے معافی طلب کی ہے۔اور کہا کہ ہمیں اس غلطی پر افسوس ہے ،کیونکہ ارونا چل پردیش میں کورونا متاثر صرف ایک مریض کی تصدیق ہوئی ہے۔واضح رہے کہ جمعےة علمائے کے قومی صدر مولانا سید ارشد مدنی نے 7اپریل کو تبلیغی جماعت کے خلاف مہم چلانے والے اور اس سے متعلق جھوٹی خبر چلانے والے ٹیلی ویژن نیوز چینلوں کے خلاف سپریم کورٹ میں مقدمہ دائر کیا تھا۔ خیال رہے کہ زی نیوز نے تبلیغی جماعت کے خلاف ایک مہم چھیڑ رکھی تھی

    یہ بھی پڑھیں  باپ نے کیا بیٹی کے رشتے کو تار۔ تار

    اور مولانا ارشد مدنی کے بار بار اپیل کے باوجود متعدد چینلوں نے اپنی مہم جاری رکھی۔ جس کے بعد مولانا مدنی نے قانونی قدم اٹھاتے ہوئے متعدد نیوز چینلوں کے خلاف سپریم کورٹ میں مقدمہ دائر کردیا جو سماعت کے لئے منظور کرلیا گیا ہے۔ واضح رہے کہ گزشتہ روز جمعیةعلماءہند کی امدادی قانونی کمیٹی کی طرف سے الیکٹرانک اور پرنٹ میڈیا کے خلاف سپریم کورٹ میں ایک عرضی داخل کی گئی ہے جسے سماعت کے لئے منظورکرلیا گیا ہے اس عرضی میں کہا گیا ہے کہ میڈیا مسلمانوں اور تبلیغی مرکز کو لیکر انتہائی غیر ذمہ دارانہ رپورٹنگ کررہا ہے

    اس کی متعصبانہ رپورٹنگ کے خلاف قانونی کارروائی ہونی چاہئے۔ اوراس کے کوریج پر روک لگانے کا مطالبہ بھی کیا گیا ہے اس کے علاوہ شوشل میڈیا پر فرضی خبریں پھیلانے پر کارروائی کے لئے حکم دینے کا بھی مطالبہ کیا گیا ہے۔ سپریم کورٹ میں دائر درخواست میں میڈیا اداروں کے ذریعہ مسلمانوں اور تبلیغی جماعت کو لے کر ہونے والی رپورٹنگ سے فرقہ واریت پھیل رہی ہے۔ اپنی عرضی میں جمعیة علمائے ہند نے میڈیا کے خلاف کارروائی کا مطالبہ کیا ہے۔تبلیغی جماعت کے خلاف ہورہے میڈیا ٹرائل پر جمعیةعلماءکی طرف سے ایڈوکیٹ اعجاز مقبول نے پٹیشن دائر کی ہے۔

    یہ بھی پڑھیں  جے این یو: نقاب پوشوں کاحملہ ،پولیس ہیڈکوارٹر پر احتجاج جاری

    LEAVE A REPLY

    Please enter your comment!
    Please enter your name here
    یہ بھی پڑھیں  اگلے پانچ سالوں میں 24 گھنٹے پانی دیں گے: اروند کیجریوال

    Latest news

    میرٹ کی بنیادپر منتخب ہونے والے 670طلباء میں ہندوطلباء بھی شامل

    تعلیمی سال 2021-2022کے لئے جمعیۃعلماء ہند کے وظائف جاری ، مذہب سے اوپر اٹھ کر کام کرنا تو جمعیۃعلماء...

    آدیش گپتا نے اپنے بیٹوں کے ساتھ مل کر ایم سی ڈی کی زمین پر اپنا سیاسی دفتر بنایا: درگیش پاٹھک

    نئی دہلی : عام آدمی پارٹی کے ایم سی ڈی انچارج درگیش پاٹھک نے کہا کہ بی جے پی...

    مغربی يو پی : راشٹریہ لوک دل اور سماج وادی پارٹی اتحاد کتنا مضبوط ؟

    مغربی یوپی : مظفر نگر فسادات کے بعد مغربی یوپی میں بالخصوص پوری ریاست میں بالعموم فرقہ واریت اور...

    صوبائی کنونشن میں رئیس الدین رانا کو ”حفیظ میرٹھی ایوارڈ“ ملنے پر ایسوسی ایشن نے کیا استقبال

    مظفر نگر : اردو ٹیچرز ویلفیئر ایسوسی ایشن مظفر نگر کے عہدیداران نے آج صوبائی نائب صدر رئیس الدین...

    اسمبلی الیکشن : سوشل میڈیا کے چاروں پلیٹ فارموں پر سرگرم

    لکھنؤ : ملک کی سیاسی سمت کو طے کرنے والے صوبے اترپردیش میں کورونا بحران کے درمیان ہورہے اسمبلی...

    میرے والد اعظم خان کی جان کو خطرہ : عبد اللہ اعظم

    عبد اللہ اعظم نے کہا کہ کورونا پروٹوکول کے نام پر لوگوں کا استحصال کیا جا رہا ہے، گھر...

    Must read

    You might also likeRELATED
    Recommended to you