رازداری پالیسی

ہمارے بارے میں

رابطہ

  • قومی نیوز
  • ہوم

    Hindi

    Epaper Urdu

    YouTube

    Facebook

    Twitter

    Mobile App

    دہلی فساد معاملہ ، متاثرین کو ہوئی اب تک کل24.48 کروڑمعاوضہ کی تقسیم

    657رد ہوئے کیسوں پر وقف بورڈ کر رہاہے کام،اسمبلی کی اقلیتی فلاحی کمیٹی کی میٹنگ میں سامنے آرہی ہے افسران کی لاپرواہی،کپل مشرا اور پرویش ورما کی اشتعال انگیز ویڈیو چلاکر پوچھا گیا ایف آئی آر کیوں نہیں ہوئی؟

    نئی دہلی : شمال مشرقی دہلی میں ہونے والے فسادات کو لیکر دہلی اسمبلی کی اقلیتی فلاحی کمیٹی متعلقہ افسران کو طلب کرکے تمام کیسوں کا جائزہ لے رہی ہے۔اب تک اوکھلا سے رکن اسمبلی امانت اللہ خان کی صدارت میں کمیٹی کی کئی میٹنگیں ہوچکی ہیں جن میں معاوضہ سے لیکر کئی معاملوں میں ایف آئی آر نہ کیئے جانے یازخمیوں کی رپورٹ میں میڈیکل افسران کے ذریعہ لاپرواہی کا مظاہرہ کیئے جانے کے معاملات میں افسران سے باز پرس کی جارہی ہے ساتھ ہی معاوضہ کی تقسیم میں بھی بڑے پیمانے پر خامیاں نظر آرہی ہیں جن کو لیکر کمیٹی مسلسل افسران سے تمام معاملات میں متاثرین تک معاوضہ کی رسائی کو یقینی بنانے اور مظلومین کو انصاف دلانے کے لیئے سرگرمی کے ساتھ کام کر ہی ہے۔

    اسی سلسلہ کی ایک اہم میٹنگ آج اسمبلی کے ایم ایل اے ہال میں منعقد ہوئی جسمیں معاوضہ سے متعلق کیسوں کے جائزہ کے ساتھ ساتھ کئی ایسے ویڈیو چلائے گئے جن میں فسادی اشتعال انگیزی کرتے اور فساد پھیلاتے ہوئے صاف نظر آرہے ہیں۔میٹنگ کے دوران آج بی جے پی لیڈر کپل مشرا،پرویش ورما کی اشتعال انگیزی کا ویڈیو بھی چلایا گیا اور پرنسپل سیکریٹری ہوم سے پوچھا گیا کہ ان پر ایف آئی آر کیوں نہیں کی گئی؟ساتھ ہی کئی دیگر ویڈیوز بھی چلائے گئے جن میں فسادی صاف دیکھے اور پہچانے جاسکتے ہیں۔اس کے علاوہ کمیٹی کے چیئرمین امانت اللہ خان نے داخلہ سیکریٹری سے دو ٹوک انداز میں پوچھا کہ فساد سے متعلق معاملات کی ایف آئی آر کی کاپی ہمیں دینے سے پولیس کیوں بچ رہی ہے؟امانت اللہ خان نے کہا کہ پولیس اسمبلی کی کمیٹی یا آپ کو ایف آئی آر دینے سے کیسے منع کرسکتی ہے،

    یہ بھی پڑھیں  شاہین باغ مظاہرہ پر سپریم کورٹ میں سنوائی ملتوی

    وہ ہم سے کیا چھپانا چاہتی ہے۔داخلہ سیکریٹری نے کہاکہ وہ اس معاملہ کا تفصیلی جائزہ لیں گے اور محکمہ قانون سے اس بارے میں رائے لیں گے۔ مزید یہ کہ آج کمیٹی نیمعاوضہ کے رد ہوے کیسوں کو افسران کے سامنے ایک مرتبہ پھر رکھا اور کئی متاثرین کو افسران کے سامنے پیش بھی کیا۔تفصیل کے مطابق فساد اور معاوضہ سے متعلق کل 3300معاملات میں سے گزشتہ دنوں دہلی وقف بورڈ کو 657ایسے معاملات کی ایک فہرست حوالے کی گئی تھی جن کے معاوضہ کی درخواستوں کو رد کردیا گیا تھا۔اس فہرست پر دہلی وقف بورڈ نے سرگرمی دکھاتے ہوئے تیزی کے ساتھ کام کرتے ہوئے ازسر نو ویری فکیشن کا کام کیااور گزشتہ میٹنگوں میں کمیٹی کے سامنے 89,38اور86معاملات رکھے جن پر کمیٹی نے افسران سے دوبارہ غور کرنے کے لیئے کہا۔

    یہ بھی پڑھیں  ادارہ ہند نیوز سے وابستہ چچانوشاد کا انتقال

    آج کی میٹنگ میں کمیٹی کے چیئرمین امانت اللہ خان نے ایسے ہی معاملات پر کارروائی سے متعلق افسران سے باز پرس کی۔کمیٹی نے آج افسران کے سامنے ایسے کئی معاملات پیش کیئے جن میں معاوضہ کی تقسیم میں افسران کے ذریعہ بڑی لاپرواہی کی گئی ہے۔۔ان کیسوں میں میں شیو وہار کے محمد ایوب کا کیس پیش کیا گیا جن کا ڈھائی منزلہ مکان فساد میں پوری طرح سے خاکستر ہوگیاجبکہ معاوضہ کے نام پر محض 50ہزار ہی دیئے گئے۔فیس 7شیو وہار کی ریحانہ کا کیس پیش کیا گیا جن کا چار منزلہ مکان پوری طرح سے فساد میں تباہ ہوگیامگر انھیں بھی محض 50ہزار ہی معاوضہ ملا۔شیو وہار کے نعیم الدین کا کیس پیش کیا گیاجن کا ڈھائی منزلہ مکان جلکر خاکستر ہوگیا مگر ایک پیسہ بھی معاوضہ نہیں ملا۔

    یہ بھی پڑھیں  ‎ملک کے تمام مذہبی ، سماجی ادارے اور مقامات نے کورونا کے دورمیں صبر، احتیاط اور ضابطے کی بہترین مثال پیش کی ہے : عباس نقوی

    ان تینوں معاملات میں متاثرین کے خاکستر مکانوں کی ویڈیوبھی افسران کو دکھائی گئیں اور پوچھا گیا کہ کئی معاملات میں پڑوسیوں کی مع آئی ڈی پروف گواہیاں موجود ہیں پھر بھی انھیں معاوضہ کیوں نہیں دیا گیا؟کمیٹی کے سامنے آج سلمان ماسٹر،فیروز اختر،محمد زبیر اور محمد الیاس کو پیش کیاگیا جنہوں نے کمیٹی کے سامنے اپنی آپ بیتی سنائی۔ان معاملات میں بھی افسران کی لاپرواہی صاف نظر آئی۔سلمان ماسٹر کے کیس میں پیر میں گولی لگی ہونے کے باوجود ایل این جے پی اسپتال کے ڈاکٹروں نے کیس کو معمولی زخمی کی فہرست میں ڈال دیاجبکہ گولی ابھی تک سلمان کے جسم میں موجود ہے۔کمیٹی نے اگلی میٹنگ میں متعلقہ ڈاکٹر کو طلب کرلیاہے اور ہیلتھ سیکریٹری کو اس کا علاج کرانے کی ہدایت دی ہے۔فیروز اختر کے سر میں شدید چوٹ ہونے کے باوجود معمولی انجری کی فہرست میں ڈال دیا گیا

    جبکہ شدید چوٹ ہونے کی وجہ سے فیروز اختر کی نہ صرف یاد داشت پر فرق پڑا ہے بلکہ ان کے ایک ہاتھ کی مٹھی بھی نہیں کھل رہی ہے،فیروز اختر کے سر میں 90ٹانکے آئے ہیں۔کمیٹی کے چیئرمین امانت اللہ خان نے ہیلتھ سیکریٹری کو فورا ان کا علاج کرانے کی ہدایت دی جس کے بعد جی بی پنت اسپتال میں فیروز اختر کا علاج کرایا جائے گا۔کمیٹی کے سامنے محمد الیاس،محمد جنید،ذاکر انصاری،ذاکر ملک،صابر احمد،ہاشم علی اور شاداب کے کیس بھی پیش کیئے گئے جن میں بڑے پیمانے پر خامیاں سامنے آئی ہیں محمد شاداب کے کیس میں افسران کے یہاں سے فائل ہی غائب ہوگئی ہے،ذاکر انصاری کے معاملہ میں کیس کے ثبوت ہونے کے باوجود کہدیا گیا کہ درخواست موصول نہیں ہوئی۔محمد الیاس نامی شخص کا 5منزل کا پورا مکان اور کاروبار تباہ ہوگیا جس میں ان کا 60/70لاکھ کا نقصان ہوا،آج الیاس کرایہ کے مکان میں رہ رہے ہیں اور انھیں صرف ساڑھے سات لاکھ معاوضہ دیا گیا،

    یہ بھی پڑھیں  مولانا محمود اسعد مدنی نےکی وزیر داخلہ کے بیان کی مذمت
    یہ بھی پڑھیں  ‎ملک کے تمام مذہبی ، سماجی ادارے اور مقامات نے کورونا کے دورمیں صبر، احتیاط اور ضابطے کی بہترین مثال پیش کی ہے : عباس نقوی

    محمد الیاس آج کمیٹی کے سامنے پیش بھی ہوئے۔اسی طرح ذاکر ملک نامی ایک شخص کا کیس بھی پیش کیا گیا جن کا پورا شوروم لوٹ لیا گیا جسمیں 35/40لاکھ کے نقصان کی بات سامنے آئی جس کی ویڈیو گزشتہ میٹنگ میں دکھائی گئی تھی۔ذاکر ملک نے لوٹ کرنے والوں کی پہچان سے بھی پولیس کو آگاہ کیا تاہم اس پر پولیس نے کوئی کارروائی نہیں کی۔اس طرح کے تمام معاملات آج کمیٹی میں افسران کے سامنے رکھے گئے اور ان پر سنجیدگی اور تیزی کے ساتھ کام کرنے کی ہدایت دی گئی۔کمیٹی کے چیئرمین امانت اللہ خان نے پرنسپل سیکریٹری ہوم سے کہاکہ متاثرین پر دوہری مار پڑ رہی ہے،

    ان کے ساتھ زیادتی ہوئی ہے اب ان کے ساتھ ناانصافی نہیں کی جانی چاہیئے اور کم سے کم ان تک صحیح معاوضہ کی رسائی کو یقینی بنانا چاہیئے۔آج میٹنگ کے دوران کمیٹی کے چیئرمین امانت اللہ خان کے علاوہ ممبران میں حاجی یونس،عبد الرحمن،پرہلاد سنگھ ساہنی اور جتیندر مہاجن کے علاوہ شمال مشرقی دہلی کے متعلقہ ایس ڈی ایم،ڈی ایم،اے ڈی ایم،ڈویزنل کمشنر محکمہ روینیو،پریسپل سیکریٹری ہیلتھ اور پرنسپل سیکریٹری محکمہ داخلہ موجود رہے۔

    LEAVE A REPLY

    Please enter your comment!
    Please enter your name here

    Latest news

    کیجریوال حکومت کے بروقت لاک ڈاؤن نے دہلی میں کوویڈ 19 میں انفیکشن کی شرح کو کم کردیا

    نئی دہلی : دہلی حکومت کی کاوشوں اور بہتر کوویڈ انتظامیہ کی وجہ سے ، انفیکشن کی شرح میں...

    پچھلے سال دہلی حکومت نے آٹو اور ٹیکسی ڈرائیوروں کو 5-5 ہزار روپے دے کر مدد کی تھی: اروند کیجریوال

    نئی دہلی: دہلی کے وزیر اعلی اروند کیجریوال کی سربراہی میں ، مالی تنگدستیوں سے نبرد آزما غریب خاندانوں...

    دارالعلوم دیوبند کے استاذ عربی مولانا نورعالم امینی کے سانحہ ارتحال پر صدرجمعیۃعلماء ہند وصدرالمدرسین دارالعلوم دیوبند مولانا ارشدمدنی نے کیا رنج وغم...

    نئی دہلی : دارالعلوم دیوبند کے استاذعربی مولانا نورعالم امینی کے سانحہ ارتحال پر صدرجمعیۃعلماء ہند وصدرالمدرسین دارالعلوم دیوبند...

    نوجوانوں میں ویکسینیشن کا جوش و خروش، بڑے پیمانے پر ویکسینیشن کی وجہ سے کورونا ہاریگا : نائب وزیر اعلی

    نئی دہلی : دہلی حکومت نے پیر سے 18 سے 45 سال کے درمیان لوگوں کے لئے مفت کورونا...

    کورونا کا قہر جاری عوام کی رائے سے دہلی میں ایک ہفتہ کےلئے اور لاک ڈاؤن بڑھایا جارہا ہے : اروند کیجریوال

    کورونا کا انفیکشن 37 سے گھٹ کر 30 فیصد ہوگیا ہےلیکن یہ نہیں کہا جاسکتا کہ کورونا ختم ہونے...

    94 سالہ شخص کو سپریم کورٹ نے عبوری راحت دی

    جولائی تک پیرول میں توسیع کردی، 27 سال بعد گھر پر عید منا سکیں گے ڈاکٹر حبیب : گلزار...

    Must read

    You might also likeRELATED
    Recommended to you