رازداری پالیسی

ہمارے بارے میں

رابطہ

  • قومی نیوز
  • ہوم

    Hindi

    Epaper Urdu

    YouTube

    Facebook

    Twitter

    Mobile App

    ہندوستان نے چین کو آج پارلیمنٹ سے دیا سخت پیغام،تمام صورتحال کے لیے تیار:راجناتھ سنگھ

    نئی دہلی : ہندوستان نے چین کو آج پارلیمنٹ سے سخت پیغام دیتے ہوئے کہا کہ مشرقی لداخ کے سرحدی علاقوں کی حیثیت کو یکطرفہ تبدیل کرنے کی اس کی کوشش کسی بھی طور منظور نہیں ہے ۔ ہندوستان اس معاملے کا حل پارلیمنٹ سے کرنا چاہتا ہے لیکن اپنی خود مختاری، علاقائی اتحاد و سالمیت کی دفاع کی خاطر تمام صورتحال کے لیے تیار بھی ہے ۔

    وزیر دفاع راجناتھ سنگھ نے مشرقی لداخ میں لائن آف ایکچول کنٹرول (ایل اے سی) پر چینی فوج کے ساتھ ڈیڈ لاک پر لوک سبھا میں بیان دیتے ہوئے چین اورعالمی برادری سے دو ٹوک کہا کہ چین نے ایل اے سی پر اپریل سے یکطرفہ تبدیلی کے ارادے سے فوج میں اضافہ شروع کر دیا اور پھر ہندوستانی فوج کی بہ ضابطہ گشت میں خلل ڈالا۔ بعد ازاں حل کے لیے جب فوجی کمانڈر کی سطح کی بات چیت پر اتفاق رائے ہوا تو اس کی خلاف ورزی کرکے چینی فوج نے ہندوستانی فوجیوں پر پرتشدد حملے کیے ۔ ہمارے بہادر سپاہیوں نے اپنی جان کی قربانی دی۔

    وہ چینی فریق کو شدید نقصان پہنچانے کے ساتھ ہی اپنی سرحد کی حفاظت میں کامیاب رہے ۔وزیر دفاع نے کہا کہ ماسکو میں چین کے وزیر دفاع سے انہوں نے بات چیت میں کہا،‘ اس معاملے میں ہندوستان اس مسئلے کو پر امن ڈھنگ سے حل کرنا چاہتا ہے اور ہم چاہتے ہیں کہ چینی فریق ہمارے ساتھ مل کر کام کرے ۔ وہیں ہم نے یہ بھی واضح کر دیا ہے کہ ہم ہندوستان کی خود مختاری اور علاقائی سالمیت کی دفاع کے لیے مکمل پرعزم ہیں’۔

    یہ بھی پڑھیں  ’جیو میٹ ‘زوم کے مقابلے آسان:امیتابھ کانت

    انہوں نے کہا،‘ ہم موجودہ صورتحال کے پر امن حل کے تئیں پابند عہد ہیں۔ ساتھ ہی تمام صورتحال سے نمٹنے کے لیے تیار ہیں۔ میں یہ یقین دلانا چاہتا ہوں کہ ہمارے مسلح فورسز کے جوانوں کا جوش و ولولہ اور حوصلہ بلند ہے ’۔مسٹر سنگھ نے کہا،‘ چینی فریق نے ایل اے سی پر اور اندرونی علاقوں میں بڑی تعداد میں فوجی ٹکڑیاں اور گولہ بارود اکٹھا کیا ہوا ہے ۔ مشرقی لداخ اور گوگرا، کونگکا لا اور پینگانگ جھیل کا شمالی اور جنوبی ساحلوں پر کئی متنازعہ نکات ہیں۔ چین کی کاروائی کے جواب میں ہماری مسلح فوجیوں نے بھی ان علاقوں میں مناسب جوابی تعیناتی کی ہیں تاکہ ہندوستان کی سلامتی مفاد مکمل طور پر محفوظ رہے ’۔

    یہ بھی پڑھیں  آواز کی رفتار سے 27 گنا تیز روسی جوہری میزائل فوج کے حوالے

    وزیر دفاع نے لوک سبھا میں اپنے بیان میں ہندوستان۔چین سرحدی تنازعہ کے پس منظر کا ذکر بھی کیا ہے اور ایوان سے درخواست کی کہ وہ ایک تجویز منظور کرے کہ ہم اپنے بہادر جوانوں کے ساتھ قدم سے قدم ملا کر کھڑے ہیں جو اپنی جان کی پراوہ کیے بغیر ملک کی چوٹیوں کی اونچائیوں پر مشکل حالات کے باوجود ‘بھارت ماتا’ کی دفاع کر رہے ہیں۔ انہوں نے جون کو گلوان وادی میں عظیم قربانی دینے والے کرنل سنتوش بابو اور دیگر 19 فوجیوں کو خراج عقیدت بھی پیش کیا۔ مسٹر سنگھ نے کہا کہ وہ لداخ کی مشرقی سرحدوں پر حالیہ ہوئی سرگرمیوں سے آگاہ کرنے کے لیے حاضر ہیں۔ وزیر اعظم نریندر مودی نے حال ہی میں لداخ کا دورہ کرکے ہمارے بہادر جوانوں سے ملاقات کی تھی اور انھیں یہ پیغام بھی دیا تھا کہ پورے ملک کے باشندے اپنے بہادر جوانوں کے ساتھ کھڑے ہیں۔ خود انہوں نے بھی لداخ جا کر اپنے بہادروں کے ساتھ کچھ وقت گذارا ہے اور ان کی بے مثال بہادری کو محسوس کیا ہے ۔

    یہ بھی پڑھیں  ہاپوڑ شہر کو نہیں ملیگی کسی بھی طرح کی رعایت ، مکمل لوک ڈاؤن جاری

    وزیر دفاع نے کہا کہ چین، ہندوستان کی تقریباً 38 ہزار مربع کلومیٹر زمین پرغیر قانونی قبضہ کیے ہوئے ہے ۔ اس کے علاوہ 1963 میں ایک مبینہ سرحد قرار کے تحت پاکستان نے اپنے قبضے والے جموں و کشمیر کے حصے سے 5180 کلومیٹر ہندوستانی زمین غیر قانونی طور پر چین کے حوالے کر دی تھی۔ انہوں نے کہا کہ ہندوستان اور چین دونوں نے رسمی طور پر یہ تسلیم کیا ہے کہ سرحد کا سوال ایک مشکل مسئلہ ہے جس کے حل کے لیے صبر کی ضرورت ہے اور اس مسئلے کا غیر جانبدارانہ، مناسب اور باہم قابل قبول حل، پر امن مذاکرے سے نکالا جائے ۔

    وزیر دفاع نے کہا کہ ابھی تک ہندوستان چین کے سرحدی علاقے میں ایک مشترکہ ایل اے سی نہیں اور اس سلسلے میں دونوں کا نظریہ مختلف ہے لہٰذا امن اور استحکام بحال رکھنے کے لیے دونوں ملکوں کے درمیان کئی طرح کے معاہدے اور پروٹوکال ہیں۔ ان معاہدوں کے تحت یہ مانا گیا ہے کہ ایل اے سی پر امن اور استحکام بحال رکھی جائے گی جس پر ایل اے سی کے اپنے اپنے نظریات اور سرحد کے سوال کا کوئی اثر نہیں مانا جائے گا۔

    یہ بھی پڑھیں  جب تک دہلی میں اروند کیجریوال کی حکومت ہے ، ہم کچی آبادیوں میں رہنے والے کسی کا بھی آشیانہ اجڑنے نہیں دیں گے : راگھو چڈھا
    یہ بھی پڑھیں  چھچھورے‘ نے 100 کروڑ کا ہندسہ کیا پار’

    مسٹر سنگھ نے کہا کہ ہندوستان کا ماننا ہے کہ دو طرفہ تعلقات کو فروغ دیا جا سکتا ہے اور ساتھ ہی سرحد کے مسئلے کے حل کے بارے میں بحث کی جا سکتی ہے لیکن ایل اے سی پر امن اور استحکام میں کسی بھی طرح کی سنگین صورتحال کا دو طرفہ تعلقات پر یقینی طور پر اثر پڑے گا۔ انہوں نے کہا کہ 1993 اور 1996 کے معاہدوں میں اس بات کا ذکر ہے کہ ایل اے سی کے پاس دونوں ملک اپنی فوجوں کی تعداد کم سے کم رکھیں گے ۔ معاہدے میں یہ بھی ہے کہ جب تک سرحد کا مسئلہ مکل حل نہیں ہوتا ہے تب تک ایل اے سی کا سختی سے احترام اور اس پرعمل درآمد کیا جائے گا اور اس کی خلاف ورزی نہیں کی جائے گی۔ ان معاہدوں میں ہندوستان اور چین ایل اے سی کی توثیق کے ذریعے یکساں سمجھ پر پہنچنے کے لیے پابند عہد ہوئے تھے ۔ اسی بنیاد پر ہندوستان اور چین تعلقات کو فروغ ہوا لیکن بعد میں چین نے ایل اے سی کی توثیق کے عمل کو روک دیا۔

    LEAVE A REPLY

    Please enter your comment!
    Please enter your name here

    Latest news

    مرکزی حکومت کی گائڈ لائنس کو دیکھتے ہوئے عبادت گاھوں میں عبادت کی جاسکتی ھے

    سھارنپور : ایک اھم میٹنگ 29ستمبر شام 5بجے ضلع مجسٹریٹ سھارنپورجناب اکھلیش سنگھ نے بلائ جس میں ضلع کے...

    محکمۂ فلاح وبہبود کو ملی بڑی کامیابی ، 6 بچہ مزدوروں کو پولس نے کیا رہا

    ہاپوڑ (سید اکرام) محکمۂ فلاح و بہبود برائے اطفال نے مہم چلا کر چند بچہ مزدور کو رہائی دلائی...

    سی بی آئی عدالت کے فیصلہ سے عقل حیران ہے کہ پھر مجرم کون؟

    صدر جمعیۃ علماء ہند مولانا سید ارشد مدنی نے بابری مسجد ملزمین کے تعلق سے دیے گئے فیصلہ پر...

    بابری مسجد انہدام سانحہ : ملزمین ایل کے اڈوانی،جوشی،اوما بھارتی،کلیا ن سنگھ سمیت تمام 32 ملزمین کو کیابری

    لکھنؤ : اترپردیش کی راجدھانی لکھنؤ میں ایس بی آئی کی اسپیشل عدالت نے 28سال پرانے بابری مسجد مسماری...

    یوپی میں امن وامان بہت خراب ہورہا ہے ، ہاترس میں تین اگست سے تین عصمت دری کے واقعات ہوچکے ہیں : سوربھ بھاردواج

    نئی دہلی : اترپردیش میں عصمت دری کے بڑھتے ہوئے واقعات ، برہمن اور دلت سماج کے خلاف تیزی...

    بھیم آرمی چیف چندر شیکھر آزاد عصمت دری کی شکار ہونے والی لڑکی سے اے ایم یو جے این میڈیکل کالج ملنے پہنچے

    علیگڑھ : علی گڑھ میں بھیم آرمی اور آزاد سماج پارٹی کے قومی صدر چندرشیکھر آزاد ہاتھراس کے تھانہ...

    Must read

    You might also likeRELATED
    Recommended to you