رازداری پالیسی

ہمارے بارے میں

رابطہ

  • قومی نیوز
  • ہوم

    Hindi

    Epaper Urdu

    YouTube

    Facebook

    Twitter

    Mobile App

    علی گڑھ مسلم یونیورسٹی میں دروازے پر اردو میں نام نہ لکھنے پر محبان اردو ناراض

    علی گڑھ : اردو ڈیولپمنٹ آرگنائزیشن اور اردو ٹیچرس ایسوسی ایشن نے علی گڑھ مسلم یونیورسٹی کے ذریعہ منٹو سرکل (پرانی چنگی) پر بنائے گئے دروازے پر اس کا نام اردو میں نہ لکھنے پر سخت ناراضگی کا اظہار کیا ہے۔ مذکورہ تنظیموں نے اردو میڈیا کو پریس رلیز جاری کر کہا کہ علی گڑھ مسلم یونیورسٹی کو ۰۰۱سال مکمل ہونے جارہے ہیں، اس موقع پر یونیورسٹی انتظامیہ نے باب سید کی طرز پر ایک شاندار دروازے کی تعمیر کی ہے۔ جس پردونوں جانب انگریزی میں سینٹنری گیٹ (Centenary Gate)لکھا گیا ۔ جےسے ہی محبان اردو کی نظر اس پر پڑی ان میں چی می گوئیاں شروع ہونے لگی اور اردو داں عوام اس پر سخت افسوس کا اظہار کرنے لگی۔

    اردو ڈیولپمنٹ آرگنائزیشن کے صدر کلیم تیاگی نے اپنے بیان میں کہا کہ اردو ہماری مادری زبان ہے اور علی گڑھ مسلم یونیورسٹی میں اردو کو ایک لازمی مضمون کے طور پر پڑھایا جاتا ہے ۔ سابق وائس چانسلر محمود الرحمن نے جب یونیورسٹی میں دروازے کی تعمیر کرائی تو اس پر جلی حروف میں اردو زبان میں ”بابِ سید“ درج کرایا جو اس دروازے کی شان کو دوبالا کرتا ہے اور ساتھ ہی اردو زبان سے محبت کا ثبوت پیش کرتا ہے۔ لیکن موجود دور میں یہاں کے وائس چانسلر اور ان کے مشیروں نے اِس نئے دروازے پر اردو کو سرے سے ختم کر دیا ہے۔ جو نہایت ہی تشویش ناک اور قابل تردید ہے۔ انہوں نے کہا ہم سب محبان اردو اس کی مخالفت کرتے ہیں اور اس دروازے کے افتتاح سے ہی قبل ہی اس پر اردومیں ”صدی دروازہ “ لکھوانے کا مطالبہ کرتے ہیں علاوہ ازیں محبان اردو اس کے خلاف تحریک چلانے کا کام کریں گے۔

    یہ بھی پڑھیں  یس بینک بحران کا شکار،نہیں نکال سکیں گے 50 ہزار سے زیادہ

    اردو ٹیچرس ایسوسی ایشن کے سرپرست کنور نسیم شاہد نے کہا سر سید احمد خاں نے جب یہ ادارہ قائم کیا تو اسی سوچ کے ساتھ قائم کیا تھا کہ ہماری قوم کے بچے انگریزی اور دیگر علوم کے ساتھ اردو زبان سے بھی روشناس ہوں گے۔ مگر دیکھنے میں آرہا ہے کہ یونیورسٹی میں سے اردو کو آہستہ آہستہ ختم کیا جارہا ہے۔ انہو ںنے کہا کہ یونیورسٹی کے اردو اور دینیات شعبے کو چھوڑ کر کہیں بھی شعبے کا نام اردو میں نہیں لکھا گیا ہے۔ اسی کے ساتھ سب سے بڑا ظلم یہ کیا جارہا ہے کہ نو تعمیر شدہ دروازے پر اردو کو ختم کر دیا گیا ہے۔ ہم وائس چانسلر کو دروازہ بنوانے پر مبارک باد پیش کرتے ہیں لیکن ساتھ ہی اردو میں نام نہ لکھنے پر شدید مزمت کرتے ہیں۔ اردو ٹیچرس ایسوسی ایشن اور تمام محبان اردو میں اس بات کو لیکر بیچینی ہے لہٰذا وائس چانسلر کو چاہےے کہ اس پر سنجیدگی سے غور کرے اور فوراً انگریزی سے اوپر اردو میں دروازے کا نام لکھوائےں۔ ورنہ ہم احتجاج کرنے پر مجبور ہوں گے۔ اور اس کی پوری ذمہ داری وائس چانسلر کی ہوگا۔

    یہ بھی پڑھیں  جموں و کشمیر سے دفعہ 370 ہٹانا دہشت گردی کے خاتمے کی سمت میں بڑا قدم : امت شاہ
    یہ بھی پڑھیں  ادارہ ہند نیوز سے وابستہ چچانوشاد کا انتقال

    معروف قلم کار انجینئر محمد سمیع الدین ، مشہور شاعر مشرف حسین محضر اور اردو جرنلسٹ ایسوسی ایشن کے قومی صدر مبین خاں نے کہا کہ یونیورسٹی وائس چانسلر آر ایس ایس ذہنیت رکھتے ہیں اور اردو کے دشمن کے طور کام کررہے ہیں جبکہ یہ یونیورسٹ ادب کا گہوارا ہے ۔ہم اس ذہنیت رکھنے والے سبھی لوگوں کی سخت الفاظ میں مذمت کرتے ہیں اور گنگا جمنی تہذیب رکھنے والے اردو زبان کے تحفظ کا مطالبہ کرتے ہیں ساتھ ہی فوراً وائس چانسلر سے مانگ کرتے ہیں کہ اس موضوع پر فوراً ایکشن لےں ۔

    اس کے علاوہ حاجی محمد افضال، عبدالواجد، انجینئر محمد رفیع، منصور احمد، نقی الظفر،اور نے بھی سخت احتجاج کرتے ہوئے کہا کہ جتنی جلدی ہو سکے اس پر اردو میں ”صدی دروازہ“ لکھوایا جائے۔ ورنہ موجودہ وائس چانسلر کو تاریخ میں اردو دشمن لکھاجائے گا۔ انہوں نے کہا کہ اگر علی گڑھ مسلم یونیورسٹی میں اردو میں نہیں لکھا جائے گا تو پھر کہا لکھا جائے گا؟ ہم سب کو اس پر بہت افسوس ہے جس کی جتنی مزمت کی جائے کم ہے۔

    یہ بھی پڑھیں  مرکزی حکومت نے دہلی میں تشدد کے معاملے پر ہنگامی میٹنگ طلب کی

    LEAVE A REPLY

    Please enter your comment!
    Please enter your name here
    یہ بھی پڑھیں  سمجھ میں نہیں آتا کہ اس کو فرقہ پرستی کہوں یا خوف و جہالت : مولانا ارشدمدنی

    Latest news

    دہلی حکومت اپنے ملازمین کو پیشہ وار خصوصی فیسٹیول پیکیج کے تحت ہر ملازم کو 10 ہزار روپے دے گی: منیش سسودیا

    نئی دہلی : دہلی کے نائب وزیر اعلی منیش سسودیا کے ماتحت محکمہ خزانہ نے دہلی کے سرکاری...

    ‎بنگال میں’’خودکفیل بھارت ‘‘ مہم کی قیادت کرنے کی بھر پور صلاحیت ہے:مودی

    کولکاتہ :اس دلیل کے ساتھ کہ مغربی بنگال میں ’’خود کفیل بھارت‘‘ کی مہم کی قیادت کرنے کی بھر...

    دہلی کی تمام 70 اسمبلیوں میں 26 اکتوبر سے چلے گی ‘ریڈ لائٹ آن ، گاڈی آف’ کی مہا مہم : گوپال رائے

    نئی دہلی : وزیر ماحولیات گوپال رائے اور دہلی کے تمام اراکین اسمبلی نے آج تلک مارگ پر ریڈ...

    ایسے پس منظر سے آنے والے طلبا کی کامیابی سے بہت سارے طلبا بہتر کارکردگی کا مظاہرہ کریں گے: اروند کیجریوال

    نئی دہلی : وزیر اعلی اروند کیجریوال اور نائب وزیر اعلی منیش سسودیا نے دہلی کے سرکاری اسکولوں کے...

    دہلی حج کمیٹی کے ای او جاوید عالم خان سے مرکزی حج کمیٹی آف انڈیا کے سابق ممبر محمد عرفان احمد کی خصوصی ملاقات

    دہلی : عالمی وبا کورونا وائرس کے سبب امسال حج کا فریضہ انجام نہیں ہو پایا تھا، مگرحج:2021 کے لیےتیاریوں...

    کارکنوں کی فلاح و بہبود میں کوئی رواداری نہیں: منیش سسودیا

    نئی دہلی : نائب وزیر اعلی منیش سسودیا نے تعمیراتی کارکنوں کو جنگی بنیادوں پر اندراج کرنے کی مہم...

    Must read

    You might also likeRELATED
    Recommended to you