رازداری پالیسی

ہمارے بارے میں

رابطہ

  • قومی نیوز
  • ہوم

    Hindi

    Epaper Urdu

    YouTube

    Facebook

    Twitter

    Mobile App

    ہمارے بچوں کو نوکری مل نہیں رہی، مودی حکومت کو پاکستانیوں کی فکرہو رہی ہے : اروند کیجریوال

    نئی دہلی:دہلی کے وزیر اعلیٰ اور عام آدمی پارٹی (آپ) کے کنوینر اروند کیجریوال نے شہریت (ترمیم شدہ) قانون پر مودی حکومت پر حملہ بولا ہے۔ انہوں نے کہا ہے کہ ملک کے لوگوں کو نوکری نہیں مل رہی ہے لیکن حکومت کو پاکستانیوں کی فکر ہو رہی ہے۔ ایک نجی خبریہ چینل کے پروگرام میں پہنچے کیجریوال نے اس قانون کو’بکواس‘ قانون قرار دیا۔ انہوں نے کہا کہ پتہ نہیں کیوں اس قانون کو لے کر آئے ہیں یہ لوگ، پورے ملک میں آگ لگی پڑی ہے۔انہوں نے کہا کہ ’ملک میں 70 فیصدلوگوں کے پاس دستاویزات نہیں ہیں۔

    امیر پیسے لے کر بنوا لیں گے، نوٹ بندی میں امیر نہیں، غریب پریشان ہوئے تھے۔ باہری لوگوں کو نوکری کون دے گا؟ کس کے فائدے کے لیے شہریت قانون لایا گیا ہے؟ اس قانون کی ضرورت کیا تھی؟ حکومت کو اس قانون کو واپس لینا چاہئے، تمام ریاستوں کے وزرائے اعلیٰ کو بلا کر ملک میں مہنگائی، بے روزگاری جیسے مسائل پر بات کرنی چاہئے۔وزیراعلیٰ نے دہلی میں تشدد کو لے کر میں نے تشویش ظاہر کی اور کہا کہ تشدد کا راستہ غلط ہے۔ بتا دیں کہ دہلی کی جامعہ ملیہ اسلامیہ یونیورسٹی اور سیلم پور میں پرتشدد مظاہرے ہوئے ہیں۔ اس دوران پولیس نے مظاہرین کو قابو میں کرنے کے لئے آنسو گیس کے گولے بھی داغے۔ وہیں جامعہ میں پولیس نے طلباء پر سخت کارروائی کی۔

    یہ بھی پڑھیں  دہلی حکومت کے کوویڈ اسپتالوں میں آئی سی یو بیڈوں کی مسلسل بڑھ رہی ہے تعداد
    یہ بھی پڑھیں  جا معہ حلیمہ دارالسلام میں جا معہ کے بانی و صدر حضرت مولانا محمد رضوان بیگ مہاجر مکی رحمۃ اللہ علیہ کے سانحہ ارتحال پر تعزیتی جلسہ کا انعقاد

    بتا دیں کہ اس قانون پر افغانستان، بنگلہ دیش اور پاکستان سے مذہبی تشدد کی وجہ 31 دسمبر 2014 تک ہندوستان آئے غیر مسلم پناہ گزین- ہندو، سکھ، بودھ مت، جین، پارسی اور عیسائی طبقات کے لوگوں کو بھارتی شہریت دینے کا قانون ہے۔ وہیں حکومت نے قانون کو لے کر طلباء کی مخالفت کے پیچھے تمام طرح کے پھیلائی گئی غلط فہمیوں کو ذمہ دار ٹھہراتے ہوئے بدھ کو کہا کہ اس سے طلباء کو ڈرنے کی کوئی ضرورت نہیں ہے۔ حکومت نے واضح کیا کہ یہ شہریت دینے والا قانون ہے، شہریت لینے والا نہیں، اس لئے اس سے دراندازوں کو ضرور ہی فکر کرنے کی ضرورت ہے۔

    LEAVE A REPLY

    Please enter your comment!
    Please enter your name here

    Latest news

    میرٹ کی بنیادپر منتخب ہونے والے 670طلباء میں ہندوطلباء بھی شامل

    تعلیمی سال 2021-2022کے لئے جمعیۃعلماء ہند کے وظائف جاری ، مذہب سے اوپر اٹھ کر کام کرنا تو جمعیۃعلماء...

    آدیش گپتا نے اپنے بیٹوں کے ساتھ مل کر ایم سی ڈی کی زمین پر اپنا سیاسی دفتر بنایا: درگیش پاٹھک

    نئی دہلی : عام آدمی پارٹی کے ایم سی ڈی انچارج درگیش پاٹھک نے کہا کہ بی جے پی...

    مغربی يو پی : راشٹریہ لوک دل اور سماج وادی پارٹی اتحاد کتنا مضبوط ؟

    مغربی یوپی : مظفر نگر فسادات کے بعد مغربی یوپی میں بالخصوص پوری ریاست میں بالعموم فرقہ واریت اور...

    صوبائی کنونشن میں رئیس الدین رانا کو ”حفیظ میرٹھی ایوارڈ“ ملنے پر ایسوسی ایشن نے کیا استقبال

    مظفر نگر : اردو ٹیچرز ویلفیئر ایسوسی ایشن مظفر نگر کے عہدیداران نے آج صوبائی نائب صدر رئیس الدین...

    اسمبلی الیکشن : سوشل میڈیا کے چاروں پلیٹ فارموں پر سرگرم

    لکھنؤ : ملک کی سیاسی سمت کو طے کرنے والے صوبے اترپردیش میں کورونا بحران کے درمیان ہورہے اسمبلی...

    میرے والد اعظم خان کی جان کو خطرہ : عبد اللہ اعظم

    عبد اللہ اعظم نے کہا کہ کورونا پروٹوکول کے نام پر لوگوں کا استحصال کیا جا رہا ہے، گھر...

    Must read

    You might also likeRELATED
    Recommended to you