رازداری پالیسی

ہمارے بارے میں

رابطہ

  • قومی نیوز
  • ہوم

    Hindi

    Epaper Urdu

    YouTube

    Facebook

    Twitter

    Mobile App

    بی جی پی کے دورحکومت میں اقلیتی شعبہ سے تعلق رکھنے والے مسلم،سکھ،عیسائی،جین اور دیگر طبقہ ظلم کا شکار ہو رہا ہے : عمران پرتاپ گھڑی

    نئی دہلی : سکھ سماج کے زیر اہتمام دہلی کے کانسٹی ٹیوشن کلب میں ”ایک نئی پہل” کے عنوان سے ایک پروگرام کا انعقاد کیا گیا،جس میں بطور مہمان خصوصی آل انڈیا کانگریس کمیٹی اقلیتی شعبہ کے قومی صدر عمران پرتاپ گڑھی نے بطور مہمان خصوصی شرکت کی۔ پروگرام سے خطاب کرتے ہوئے عمران پرتاپ گڑھی نے کہا کہ جب سے انہیں اقلیتی شعبہ کا چیئرمین مقرر کیا گیا ہے تبھی سے وہ چاہتے تھے کہ اس طرح کے پروگرام کی شروعات کی جائے اور ایسے پروگرام بھی وقتا فوقتا منعقد کیے جائیں جس سے ایک دوسرے سے روبرو ہونے کا موقع ملے اور لوگوں سے گفتگو ہو سکیں۔ انہوں نے کہا کہ اس طرح کے پروگراموں سے باہمی بات چیت، مکالموں اور باہمی تجاویز کے ذریعے ایک بہتر پلیٹ فارم اور ایک بہتر معاشرہ بنانے کا موقع ملتا ہے۔

    عمران پرتاپ گڑھی نے کہا کہ جب سے ملک میں بی جے پی کی حکومت آئی ہے، ملک میں جمہوری نظام کمزور ہو رہا ہے خواہ ان میں اقلیتی شعبہ سے تعلق رکھنے والے مسلم،سکھ،عیسائی،جین اور دیگر طبقے ہو ان پر ظلم کیا جا رہا ہے، انہیں سرکاری مشینری کے ذریعے برباد کیا جا رہا ہے تاکہ انتخابات میں ان سے فائدہ اٹھایا جا سکے آج آر ایس ایس اور بی جے پی اقلیتوں کی شناخت کو ختم کرنے، ان کی تاریخی شناخت ختم کرنے، ان کی زبان کو تباہ و بربادکرنے کے لئے نئے نئے منصوبے تیار کر رہی ہے۔

    یہ بھی پڑھیں  گڈی دیوی ایم سی ڈی میں بی جے پی کی بدانتظامیوں کو اجاگر کررہی ہیں ، ہمیں امید ہے کہ وہ مزید محنت کر عام آدمی پارٹی کو مضبوط کریں گی: درگیش پاٹھک

    کبھی تاریخی شہروں کے نام بدلے جا رہے ہیں، کبھی عمارتوں کے نام اور کبھی سڑکوں کے نام تبدیل کیے جا رہے ہیں۔ اس موقع پر تمام رہنما نے پورے ملک میں ہو رہے ظلم و زیادتی کے واقعیات کو عمران پرتاپ گڑھی کے سامنے رکھے۔ اترپردیش سے تعلق رکھنے والے ایک لیڈرنے کہا کہ پچھلے کئی سالوں سے عہدیدار ہونے کے باوجود انہیں الیکشن ٹکٹ نہیں دیا گیا۔

    یہ بھی پڑھیں  کجریوال نے ڈینگو مہم کا دوسرے اتوار کوکیا اپنے گھر کا معائنہ

    انہوں نے لیڈر کی بات سن کر کہا کہ جب انتخابات ہوتے ہیں تو پارٹی کئی ذاویوں سے دیکھتی ہے کیوں کہ بہت سے لوگ ٹکٹ کے خوائش مند ہوتے ہیں، ٹکٹ دیتے وقت تمام جماعتیں اور ٹکٹ کے خواہشمند درخواست گزار اور اس اسمبلی کی صورتحال کے تمام اہم نکات پر غور کرنے کے بعد، تمام پہلوؤں کو یقینی بنایا جاتا ہے تبھی کسی ایک کو ٹکٹ دیا جاتا ہے۔ مہاراشٹر کے ایک نوجوان لیڈر نے کہا کہ سکھ برادری نے کبھی کانگریس کو نہیں چھوڑا اور نہ ہی چھوڑے گا۔ سکھ سماج کانگریس کے ساتھ دل سے جڑا ہے اور ملک میں کئی نشستیں بھی جیتنے میں اہم کردار ادا کیا ہے،

    یہ بھی پڑھیں  جنم اشٹمی پر بولے اکھلیش شری کرشنا انصاف پر ڈٹے رہے اور ناانصافی کے خلاف لڑے

    اس لیے آج سکھ برادری کو کانگریس میں زیادہ سے زیادہ نمائندگی ملنی چاہیے۔ ان کا جواب دیتے ہوئے عمران نے کہا کہ کانگریس نے کبھی بھی اقلیتوں سکھ، مسلم، جین اور عیسائی کو نظر انداز نہیں کیا معاشرے کے تمام لوگوں کو جو کہ اقلیتوں میں آتے ہیں، مساوی نمائندگی دی گئی ہے، کانگریس نے سردار بوٹا سنگھ، آسکر فرنینڈس، فخر الدین علی احمد، عبدالکلام آزاد اور پردیپ جین جیسے رہنماؤں کو اہم ذمہ داریاں دی ہیں اس سے ثابت ہوتا ہے کہ کانگریس اقلیتوں کی ہمدرد اور خیر خواہ ہے اور یہ بھی کانگریس پارٹی تھی جس نے منموہن سنگھ کو دس سال تک وزیر اعظم بنایا اور سکھ برادری کے لوگوں کو پنجاب سے باہر بھی اہم عہدوں پر بٹھایا۔

    عمران پرتاپ گڑھی نے ریاستوں کے تمام چیئرمین سے کہا ہے کہ وہ اپنی کمیٹی میں تمام اقلیتوں کو جگہ دیں۔ اس موقع پر آل انڈیا خواتین کانگریس کی صدر نیٹا ڈیسوزا نے اعلان کیا کہ وہ بھی خواتین کانگریس میں تمام مسلمانوں، سکھوں، عیسائیوں اور جینیو کو جگہ دیں گی۔ عمران پرتاپ گڑھی نے مزید کہا کہ آج کانگریس اور اس کے کارکن بی جے پی کے ساتھ لڑ رہے ہیں، بی جے پی اور آر ایس ایس ملک سے قانون اور آئین کو ختم کرکے اپنے قانون کو نافذ کرنا چاہتے ہیں، ملک کی تاریخ کو تبدیل کرنا چاہتے ہیں لیکن کانگریس اور اس کے کارکن ایسا ہر گز نہیں ہونے دیں گے

    یہ بھی پڑھیں  مرکزی حکومت نے 27 ہزار پی پی ای کٹس مختص کیں: اروند کیجریوال
    یہ بھی پڑھیں  اقتدارکیلئے نفرت کی سیاست ملک کیلئے انتہائی خطرناک: مولانا ارشدمدنی

    اور اس کے بقاء کے لئے ہر جنگ لڑ نے کو تیار ہیں،کیوں کہ آئین بچے گا تو عدلیہ بچے گی اور ملک بچے گا،اگر ملک بچے گا تو سماج بچے گا۔ پروگرام کنوینر مہندر بورا نے تمام لوگوں کا شکریہ ادا کرتے ہوئے کہا کہ کانگریس ہی واحد ایسی جماعت ہے جو سکھوں کی حقیقی ہمدرد ہے۔انہوں نے پرتاپ گڑھی سے اپیل کی، کانگریس کے تمام رہنماؤں کو چاہئے کہ وہ سکھوں کے مذہبی تقریبات میں ضرور شرکت کریں، خاص طور پر گرو پرو کے موقع پر ذیادہ سے ذیادہ حصہ لیں۔

    LEAVE A REPLY

    Please enter your comment!
    Please enter your name here

    Latest news

    ہمیں بی جے پی حکومتوں کے جبر کے خلاف ہر محاذ پر لڑنا ہوگا : عمران پرتاپ گڑھی

    آسام: آل انڈیا کانگریس کمیٹی اقلیتی ڈیپارٹمنٹ کے قومی صدر عمران پرتاپ گڑھی اپنے ایک روزہ دورے پر آسام...

    پرینکا سچی کانگریسی ہیں اور ان ہتھکنڈوں سے ڈرنے والی نہیں : راہل

    نئی دہلی : کانگریس کے سابق صدر راہل گاندھی نے لکھیم پور کھیری متاثرہ کنبوں کے ارکان سے ملنے...

    بی جی پی کے دورحکومت میں اقلیتی شعبہ سے تعلق رکھنے والے مسلم،سکھ،عیسائی،جین اور دیگر طبقہ ظلم کا شکار ہو رہا ہے : عمران...

    نئی دہلی : سکھ سماج کے زیر اہتمام دہلی کے کانسٹی ٹیوشن کلب میں ''ایک نئی پہل'' کے عنوان...

    وزیر نے ڈویژنل کمشنر کے دفتر کا معائنہ کیا اور ذات کے سرٹیفکیٹ میں تاخیر پر افسروں کے خلاف کارروائی کرنے کی وارننگ دی...

    سماجی بہبود کے وزیر راجیندر پال گوتم نے اچانک معائنہ کیا اور ذات کا سرٹیفکیٹ جاری کرنے میں تاخیر...

    کیجریوال حکومت اور بی جی پی حکومت رابعہ سیفی کو اِنصاف دلائے : عمران پرتاپ گھڑی

    مرادآباد : آل انڈیا کانگریس کمیٹی شعبۂ اقلیتی کے قومی صدر عمران پرتاپ گڑھی اپنے دو روزہ دورے کے...

    اقلیتی شعبہ کے قومی صدراور معروف شاعر عمران پرتاپ گڑھی کا شایان شان خیرمقدم

    اہم ذمہ داری ملنے کے بعد پہلی بار مرادآباد آمد پر پھولوں کی بارش،عوام کا اژدہام مرادآباد: کانگریس اقلیتی شعبہ...

    Must read

    You might also likeRELATED
    Recommended to you