رازداری پالیسی

ہمارے بارے میں

رابطہ

  • قومی نیوز
  • ہوم

    Hindi

    Epaper Urdu

    YouTube

    Facebook

    Twitter

    Mobile App

    ہندوستان میں شدت پسندی کے لئے کوئی جگہ نہیں: مولانا آس محمد گلزارؔ قاسمی

    میرٹھ :’’ہندوستان ایک سیکولر جمہوری ملک ہے، جہاں شدت پسندی کے لئے کوئی جگہ نہیں، اس عظیم جمہوریہ کا سیکولر دستور ذات پات، رنگ و نسل اور فرقہ و مذہب کسی بنیاد پرتفریق یا نفرت و فرقہ بندی اور تشدد پسندی کی اجازت نہیں دیتا‘‘ ان خیالات کا اظہار آج یہاں اپنے ایک پریس بیان میں آل انڈیا ملی کونسل (اتر پردیش) کے صدر مولانا آس محمد گلزارؔ قاسمی نے کیا ، مولانا قاسمی آر ایس ایس چیف موہن بھاگوت اور مرکزی وزیر داخلہ امت شاہ کے حالیہ متعصبانہ بیانات کے تناظر میں مقامی اخبار نویسوں کے ساتھ گفتگو کر رہے تھے

    انہوںنے کسی کا نام لئے بغیر کہا کہ آدمی جتنا بڑا ہوتا ہے اس کی ذمہ داریاں بھی اتنی ہی زیادہ ہوتی ہیں اس لئے بڑوں کو اپنے ہر قول وفعل میں شائستگی، سنجیدگی اور حق پسندی سے کام لینا چاہئے، خاص طور سے سرکاری عہدہ داران کسی ایک طبقہ یا فرقہ کے نمائندہ نہ ہوکر ملک کے تمام شہریوں وباشندگان ِ وطن کے نمائندہ و ترجمان ہوتے ہیں اور سبھی کے دستوری و جمہوری حقوق کی حفاظت ان کی ذمہ داری ہوتی ہے۔ مولانا قاسمی نے اشاروں اشاروں میں کہا کہ یہ ملک جمہوریت اور سیکولرازم سے بتدریج انار کی ، آمریت اور انتہا پسندی کی طرف جا رہا ہے

    یہ بھی پڑھیں  دہلی کے مختلف علاقوں میں منعقدہ محلہ اجلاسوں میں شرکت کرنے والے خود بھاجپا کے سیکڑوں لوگ بدعنوانیوں کا خلاصہ کر رہے ہیں: درگیش پاٹھک

    جو ملک کی تعمیر و ترقی کے لئے اچھی علامت نہیں ہے، اس سے عالمی انسانی برادری میں بھی ملک کی شبیہ خراب ہوتی ہے۔ بعض سرکاری ذمہ دارن اورعوامی نمائندوں کے غیر ذمہ دارانہ بیانات پر تبصرہ کرتے ہوئے صدرِکونسل نے کہا کہ ملکی دستور وآئین میں بغیر کسی مذہبی یا نسلی تفریق کے تمام باشندگانِ وطن کو یکساں حقوق دئے گئے ہیں اور یہ بات سب سے پہلے برسر اقتدار طبقہ اور حکمراں جماعت میں شامل افراد کو اپنے ذہن و دماغ میں بٹھانے کی ضرورت ہے۔ ماب لنچنگ سے متعلق پوچھے گئے ایک سوال کے جواب میں مولانا قاسمی نے اظہار افسوس کے ساتھ کہا کہ ماب لنچنگ سے ہندو مسلمان کی تفریق کے بغیر تمام مذہبی کمیونٹیز اور طبقات کا جانی ومالی نقصان ہو رہا ہے

    یہ بھی پڑھیں  دہلی فساد معاملہ ، ہائی کورٹ کے آرڈرکا حوالہ دیکر پولیس نے ایف آئی آر دینے سے کیا انکار
    یہ بھی پڑھیں  دہلی کے مختلف علاقوں میں منعقدہ محلہ اجلاسوں میں شرکت کرنے والے خود بھاجپا کے سیکڑوں لوگ بدعنوانیوں کا خلاصہ کر رہے ہیں: درگیش پاٹھک

    خاص طور سے خواتین کو اس کا خمیازہ زیادہ جھیلنا پڑ رہا ہے، اس کے باوجود لنچنگ کے خلاف سخت قانون بنانے کے بجائے اس سلسلہ میں متوجہ کرنے والوں کے خلاف مقدمے درج کیا جانا افسوسناک عمل ہے۔ انہوں نے سوال کیا کہ اگر عوام اپنی پریشانیوں اور دکھ درد کا اظہار اپنی حکومت یا حکام سے نہیں کرینگے تو کس سے کرینگے اور کس سے تدارک کی امید رکھینگے، انہوںنے حیرت کا اظہار کرتے ہوئے کہا کہ میری سمجھ میں نہیں آتا کہ خط لکھنے سے ملک یا حکومت کی بدنامی کس طرح ہو رہی ہے اور اس اقدام کو وزیراعظم یا سرکار کے خلاف غداری کیوں کر کہا جا سکتا ہے۔

    LEAVE A REPLY

    Please enter your comment!
    Please enter your name here
    یہ بھی پڑھیں  نائب وزیر اعلی منیش سسودیا نے ایڈوانس ڈیٹا انیلیسس صلاحیت کی ترقی کے پروگرام کا آن لائن کیا افتتاح

    Latest news

    اردو اکادمی دہلی ، دہلی ای۔ لرننگ کورس جلد شروع کرے: منیش سسودیا

    اردو اکادمی، دہلی کی دہلی سیکریٹریٹ میں منعقدگورننگ کونسل کی میٹنگ میں کئی اہم تجاویز پیش نئی دہلی : اردو...

    عام آدمی پارٹی کے روہتاش نگر ودھان سبھا میں منعقدہ مظاہرے میں مقامی لوگوں کی ایک بڑی تعداد نے حصہ لیا

    نئی دہلی : بی جے پی کی زیر اقتدار ایم سی ڈی میں بدعنوانی اور مودی حکومت کی ناکام...

    ہر فرد میں ایک دلی جذبہ ہے ،یہاں لوگ ادب سے محبت کرتے ہیں : عامر اصغر قریشی

    شہر ناندورا میں سہ ماہی تکمیل کے مدیر عامر اصغر قریشی کے اعزاز میں ادبی نشست ناندورا : بتاریخ 23...

    ایم سی ڈی بلڈر مافیا کے تعاون سے لیز پر دی گئی دکانوں کا سروے کررہی ہے اور عمارت کو خطرناک دکھا کر خالی...

    نئی دہلی : عام آدمی پارٹی نے بی جے پی کے زیر اقتدار نارتھ ایم سی ڈی کی طرف...

    اگلے تین دن تک مسلسل بارش کے امکانات ، تمام افسران دن میں 24 گھنٹے دستیاب رہیں گے ، کسی بھی وقت ضرورت ہوسکتی...

    نئی دہلی : لیفٹیننٹ گورنر اور وزیر اعلی اروند کیجریوال نے آج ویڈیو کانفرنسنگ کے ذریعے دہلی کے نکاسی...

    Must read

    You might also likeRELATED
    Recommended to you