رازداری پالیسی

ہمارے بارے میں

رابطہ

  • قومی نیوز
  • ہوم

    Hindi

    Epaper Urdu

    YouTube

    Facebook

    Twitter

    Mobile App

    دہلی میں کانگریس پارٹی اقتدار میں آنے پر این پی آر ، این آرسی اورسی اے اے کونافذ نہیں کرے گی: سبھاش چوپڑا

    نئی دہلی: دہلی ریاستی کانگریس کمیٹی کے صدر سبھاش چوپڑا نے کہا کہ دہلی میں کانگریس پارٹی کے اقتدار میں آنے پراین آرپی ، این آرسی اور شہری ترمیمی قانون کے موجودہ شکل کو لاگو نہیں کرے گی۔ مینی فیسٹو کمیٹی کے چیئرمین اجے ماکن نے کہا کہ کمیٹی کی میٹنگ میں سب سے پہلے اس تجویز کو سبھاش چوپڑا نے رکھا جسے تمام ارکان نے متفقہ طور پر منظور کیا۔

    ریاستی کانگریس کے دفتر میں منعقد مینی فیسٹو کمیٹی کے بعد سبھاش چوپڑا نے پریس کانفرنس سے خطاب کرتے ہوئے کہا کہ بی جے پی کی مرکزی حکومت لوگوں کی توجہ اقتصادی مسائل، بے روزگاری، بڑھتی مہنگائی جیسے ضروری مدعوؤں سے ہٹا کر، متنازعہ مسائل کو فرقہ پرستی اور ذات پات کی بنیاد پر لوگوں اور ملک کو تقسیم کرنے کے لئے ان کی توجہ بھٹکا رہی ہے۔

    یہ بھی پڑھیں  منیش سسودیا نے 5000 سے زیادہ طلبہ میں کئے

    سبھاش چوپڑا نے یہ بھی مطالبہ کیا کہ دہلی کی کیجریوال حکومت کو اسمبلی کا خصوصی اجلاس بلا کر شہریت ترمیمی قانون اورپر امن مکمل طریقے سے شہریت ترمیمی قانون کے خلاف مظاہرہ کر رہے جامعہ کے طلباء کو کیمپس میں بغیر اجازت گھس کر وحشیانہ پٹائی کرنے پر اپنا سٹینڈ واضح کرنا چاہئے۔ انہوں نے کہا کہ جامعہ کے وائس چانسلر نے پولیس کی طرف سے جامعہ کمپلیکس میں بغیر اجازت گھس کر طلباء کے ساتھ مارپیٹ کے خلاف ایف آئی آر درج کرانے کی بات کی ہے۔ چوپڑا نے کہا کہ کانگریس پارٹی کسی بھی پرتشدد کارروائی کی مخالفت کرتی ہے اور شہریت ترمیمی بل کے خلاف پرامن طریقے سے احتجاج و مظاہرہ کر رہے طلباء کے ساتھ پولیس کی طرف سے کی گئی جارحانہ زیادتیوں کو برداشت نہیں کرے گی۔
    پریس کانفرنس میں سبھاش چوپڑا ، اجے ماکن کے علاوہ دہلی انچارج پی سی چاکو، تشہیری کمیٹی کے سیکریٹری کلجیت سنگھ ناگرا، دہلی حکومت کے سابق وزیر ہارون یوسف، باکسروجیندر سنگھ اور سینئر لیڈر مسٹر چتر سنگھ موجود تھے۔

    یہ بھی پڑھیں  بیرون ملک اور ملک کے مختلف علاقوں سے فون پر پولیس اہلکاروں کو مل رہی دھمکیا
    یہ بھی پڑھیں  کھٹر دوسری بار بنیں گے ہریانہ کے وزیر اعلی

    اجے ماکن نے کہا کہ 2010 کے این پی آر اور 2020 کی این پی آر میں بہت فرق ہے کیونکہ مودی حکومت نے اس میں چھ نئے غیر قانونی سوال شامل کئے ہیں۔ اجے ماکن نے سبھاش چوپڑاکے ذریعہ شہری ترمیمی بل پر دہلی حکومت کی طرف سے اسمبلی کے ایک خصوصی اجلاس بلانے کا مطالبہ کی حمایت کرتے ہوئے زور دیا۔ کیجریوال خصوصی اجلاس بلا کر اپناموقف واضح کریں، وہ اس معاملے پر خاموش ہیں۔ انہوں نے کانگریس کے الزام کو دہراتے ہوئے کہا کہ عام آدمی پارٹی بی جے پی کی بی ٹیم ہے، کیونکہ عام آدمی پارٹی لوک سبھا کے نائب صدر کا انتخاب ہو یا بہت سے دوسرے اہم مسائل پر فرقہ پرست پارٹی کے ساتھ ہے۔اجے ماکن نے کہا کہ کیجریوال نے سی اے اے ، این پی آر اور این آرسی جیسے مسائل پر خاموش اختیار کر رکھا ہے، انہیں دہلی اسمبلی کا خصوصی اجلاس بلا کر ایسے حساس معاملے پر غور کرکے اپناموقف واضح کرنا چاہئے۔

    یہ بھی پڑھیں  سیلم پور-جعفرآباد تشدد : پولیس نے درج کی تین آیف آئی آر، 6 افراد گرفتار

    LEAVE A REPLY

    Please enter your comment!
    Please enter your name here
    یہ بھی پڑھیں  صحافیوں کے مسائل مجھے معلوم ہیں جنہیں حل کرنا ضروری ہے

    Latest news

    میرٹ کی بنیادپر منتخب ہونے والے 670طلباء میں ہندوطلباء بھی شامل

    تعلیمی سال 2021-2022کے لئے جمعیۃعلماء ہند کے وظائف جاری ، مذہب سے اوپر اٹھ کر کام کرنا تو جمعیۃعلماء...

    آدیش گپتا نے اپنے بیٹوں کے ساتھ مل کر ایم سی ڈی کی زمین پر اپنا سیاسی دفتر بنایا: درگیش پاٹھک

    نئی دہلی : عام آدمی پارٹی کے ایم سی ڈی انچارج درگیش پاٹھک نے کہا کہ بی جے پی...

    مغربی يو پی : راشٹریہ لوک دل اور سماج وادی پارٹی اتحاد کتنا مضبوط ؟

    مغربی یوپی : مظفر نگر فسادات کے بعد مغربی یوپی میں بالخصوص پوری ریاست میں بالعموم فرقہ واریت اور...

    صوبائی کنونشن میں رئیس الدین رانا کو ”حفیظ میرٹھی ایوارڈ“ ملنے پر ایسوسی ایشن نے کیا استقبال

    مظفر نگر : اردو ٹیچرز ویلفیئر ایسوسی ایشن مظفر نگر کے عہدیداران نے آج صوبائی نائب صدر رئیس الدین...

    اسمبلی الیکشن : سوشل میڈیا کے چاروں پلیٹ فارموں پر سرگرم

    لکھنؤ : ملک کی سیاسی سمت کو طے کرنے والے صوبے اترپردیش میں کورونا بحران کے درمیان ہورہے اسمبلی...

    میرے والد اعظم خان کی جان کو خطرہ : عبد اللہ اعظم

    عبد اللہ اعظم نے کہا کہ کورونا پروٹوکول کے نام پر لوگوں کا استحصال کیا جا رہا ہے، گھر...

    Must read

    You might also likeRELATED
    Recommended to you