رازداری پالیسی

ہمارے بارے میں

رابطہ

  • قومی نیوز
  • ہوم

    Hindi

    Epaper Urdu

    YouTube

    Facebook

    Twitter

    Mobile App

    سپریم کورٹ کی ہدایت پر جمعتہ نے براڈ کاسٹ ایسو سی ایشن کو بھی فریق بنا دیا، معاملہ کی جلد سماعت کے لئیے کوشش کی جارہی ہے: گلزار اعظمی

    ممبئی : مسلسل زہر افشانی کرکے اور جھوٹی خبریں چلاکر مسلمانوں کی شبیہ کوداغدار،ہندوؤں اورمسلمانوں کے درمیان نفرت کی دیوارکھڑی کرنے کی دانستہ سازش کرنے والے ٹی وی چینلوں کے خلاف داخل کی گئی جمعیۃعلماء ہند کی عرضی پر گزشتہ 27 مئی کو ہوئی سماعت کے دوران عدالت نے براڈ کاسٹ ایسوسی ایشن کو بھی فریق بنانے کا حکم دیا تھا جس کے بعد آج براڈ کاسٹ ایسو سی ایشن کو ایڈوکیٹ اعجاز مقبول نے باقاعدہ فریق بنا دیا، انہوں نے گزشتہ کل سپریم کورٹ میں اس تعلق سے ایک عرضداشت بھی داخل کی تھی جسے عدالت نے منظور کرلیا۔اس سے قبل جمعتہ علماء ہند نے سپریم کورٹ کی ہدایت پر پریس کونسل آف انڈیا کو بھی فریق بنایا تھا۔

    اس معاملہ میں مدعی بنے جمعتہ علماء قانونی امداد کمیٹی کے سربراہ گلزار اعظمی نے بتایا کہ کے 27 مئی کو چیف جسٹس آف انڈیا اے ایس بوبڑے، جسٹس اے ایس بوپننا اور جسٹس رشی کیش رائے پر مشتمل تین رکنی بینچ کے سامنے معاملے کی سماعت ہوئی تھی جس کے دوران جمعتہ علماء کی جانب سے سینئر ایڈوکیٹ دوشینت دوے (صدر سپریم کورٹ بار ایسو سی ایشن) نے بحث کی تھی جس کے بعدعدالت نے مرکزی حکومت کو نوٹس جاری کرتے ہوئے براڈ کاسٹ ایسوسی ایشن کو پارٹی بنانے کا حکم دیا تھا۔اس ضمن میں گلزار اعظمی نے کہا کہ اب جبکہ براڈ کاسٹ ایسوسی ایشن کو پارٹی بنا دیا گیا ہے، ہم کوشش کررہے ہیں کہ جلد از جلد اس معاملہ کی سماعت ہوسکے۔

    یہ بھی پڑھیں  خیال رہے کہ آپ کے پڑوس اور محلہ میں کوئی غریب بھوکا نہ سوئے: مولانا ارشد مدنی
    یہ بھی پڑھیں  جے این یو طالبا کے خلاف دہلی پولس نے درج کی ایف آئی آر

    معزز سپریم کورٹ نے 27 مئی 2020 کو درخواست گزاروں کو پارٹی براڈ کاسٹ میں شامل جواب دہندہ کے طور پر نیوز براڈکاسٹرس ایسوسی ایشن (این بی اے) کو نافذ کرنے کی ہدایت کی ہے۔ جواب دہندگان کو شامل کرنے کے لئے درخواست 31 مئی 2020 کو دائر کی گئی تھی۔ کاپی منسلک ہے۔ واضح رہے اس سے قبل کی سماعت پر مسٹر کے ایم ناتاراج ایڈیشنل سالیسیٹر جنرل نے یونین آف انڈیاکی نمائندگی کرتے ہوئے حلف نامہ داخل کرنے کے لئے دو ہفتوں کا وقت مانگا۔ حلف نامے میں انہیں یہ دکھانا ہے کہ کیبل ٹیلی ویژن نیٹ ورکس (ریگولیشن) ایکٹ 1995 کے سیکشن 19 اور 20 کے تحت ان کے ذریعہ فیک نیوز چینلز کے خلاف کیا کارروائی کی گئی ہے..۔

    LEAVE A REPLY

    Please enter your comment!
    Please enter your name here

    Latest news

    مرکزی وزیر آیوش نے سی سی آر یو ایم کا دورہ کیا اور تحقیقی کاموں کی پذیرائی کی

    نئی دہلی : وزارت آیوش اور وزارت بندرگاہ، جہاز رانی اور آبی راستوں کے کابینی وزیر جناب سروانند سونوال...

    کرناٹک میں سیلاب سے بے گھر ہوئے لوگوں کو بھی جمعیۃعلماء ہند نے فراہم کیا آشیانہ

    ہندوستان میں اسلام حملہ آوروں سے نہیں مسلم تاجروں کے ذریعہ پہنچا ، ملک میں اقتدارکے لئے ہورہی ہے...

    عام آدمی پارٹی کی حکومت بننے کے 24 گھنٹوں میں یوپی کے عوام کو 300 یونٹ بجلی مفت ملے گی: منیش سسودیا

    لکھنؤ / نئی دہلی : عام آدمی پارٹی نے اتر پردیش میں آئندہ اسمبلی انتخابات کے حوالے سے ایک...

    بی جے پی کے دورحکومت میں ملک کی خواتین و بیٹیاں انصاف کے لئے در در بھٹک رہی ہیں

    کانگریس ہیڈ کوارٹر 24 اکبر روڈ پر کانگریس خواتین کے زیر اہتمام منعقدہ یوم خواتین کے موقع پرعمران پرتاپ...

    تبلیغی جماعت کے مرکز ’ نظام الدین‘ کو ہمیشہ کے لئے تو بند نہیں کیا جا سکتا : عدالت

    نئی دہلی : مرکزی حکومت نے دہلی ہائی کورٹ میں کہا ہے کہ گزشتہ سال جو تبلیغی جماعت کے...

    بی جے پی اور یوگی حکومت نہ تو آم کی ہے اور نہ ہی رام کی، انہوں نے رام مندر کے چندے میں بھی...

    ایودھیا/نئی دہلی : عام آدمی پارٹی نے منگل کو پارٹی کے سینئر لیڈر اور دہلی کے نائب وزیر اعلی...

    Must read

    You might also likeRELATED
    Recommended to you