رازداری پالیسی

ہمارے بارے میں

رابطہ

  • قومی نیوز
  • ہوم

    Hindi

    Epaper Urdu

    YouTube

    Facebook

    Twitter

    Mobile App

    فسادات سے کسی مخصوص فرقہ، طبقہ یا فرد کا نہیں بلکہ ملک کا نقصان ہوتاہے: مولاناارشدمدنی

    جمعیۃعلماء ہند کی طرف سے دہلی فسادزدگان کوتعمیر نواور مرمت شدہ مکانات سپردکئے گئے

    نئی دہلی : گزشتہ فروری ماہ میں دہلی کے شمال مشرقی علاقے میں جو بھیانک فسادہوا اس میں جانی ومالی نقصان تو اپنی جگہ بڑی تعدادمیں املاک اور مذہبی عبادت گاہوں کو بھی نقصان پہنچاتھا، فسادیوں نے مکانوں کے ساتھ ساتھ کئی مسجدوں میں بھی آگ لگادی تھیں، جمعیۃعلماء ہند اول دن سے متاثرہ علاقوں میں امداد اور بازآبادکاری کے کام میں مصروف ہے اسی ضمن میں جن گھروں کو جلایا گیا تھا اور جن مساجد کو دانستہ نقصان پہنچایا گیا تھا

    باضابطہ طورپر سروے کرکے جمعیۃعلماء ہند نے ان کی تعمیر نواور مرمت کا اعلان کیا تھا، جمعیۃعلماء ہند کے صدرمولانا سید ارشدمدنی نے اس وقت اپنے ایک بیان میں کہا تھا کہ جمعیۃعلماء ہند بلالحاظ مذہب وملت متاثرہ علاقوں میں لوگوں کی مدداور بازآبادکاری کا فریضہ انجام دے رہی ہے، جن گھروں کو آگ سے شدیدنقصان پہنچاہے اورجو مرمت کے بغیر رہنے کے لائق نہیں رہ گئے ہیں

    جمعیۃعلماء ہند ان کی مرمت کا فریضہ بھی انجام دے گی ، مولانامدنی کے اس اعلان کو عملی جامہ پہنچانے کے لئے جمعیۃعلماء ہندکے اراکین اور رضاکارمتاثرہ علاقوں میں مصروف کارہوگئے اسی ضمن میں آج کھجوری خاص میں 19، کراول نگر میں 17 گڑھی مہڈھو 16مکانات کی تعمیر نواور مرمت کا کام مکمل کراکر ان کے مالکان کے حوالے کردیا گیا ہے، کھجوری خاص میں ہی مسجد فاطمہ کو کو آتش زنی کے شدید نقصان پہنچاتھا اس کی بھی مرمت اور تذئین کا مکمل ہوگیا ہے اور اب اس میں باقاعدہ طورپر نماز اداکی جارہی ہے

    متاثرہ علاقوں میں دیگرمقامات پر بھی نقصان پہنچائے گئے گھروں کی مرمت کا کام جاری ہے، جمعیۃعلماء ہند کے صدرمولانا ارشدمدنی نے اس حوالہ سے اپنے ایک بیان میں کہا ہے کہ اللہ کا شکر ہے کہ جمعیۃعلماء ہند کے ذریعہ پہلے مرحلہ میں جلے ہوئے مکانات کی تعمیر نواور مرمت کا کام مکمل ہوا، اور انہیں ان کے مالکان کے حوالے بھی کردیا گیا تاکہ وہ اپنے اہل خانہ کے ساتھ قدرسکون واطمینان کے ساتھ اس میں رہ سکیں

    یہ بھی پڑھیں  حضرت خواجہ نظام الدین اولیا ء ؒ میں وزیر داخلہ امت شاہ کی صحت وتندرستی کیلئے خصوصی دعا کا اہتمام

    انہوں نے یہ بھی کہا کہ جمعیۃعلماء ہند امداد اور فلاح کا کام مذہب دیکھ کر نہیں کرتی بلکہ انسانیت کی بنیادپر یہ کام کرتی ہے انہوں نے کہا کہ دہلی کے شمال مشرقی علاقے م میں ہونے والافساد انتہائی بھیانک اور منصوبہ بندتھا، اس میں پولس اور انتظامیہ کا رول مشکوک رہا یہی وجہ ہے کہ متاثرین میں اقلیتی فرقہ کی تعداد ہمارے اندازے سے کہیں زیادہ ہے جو جانی ومالی نقصان ہوا اس کے بارے میں اخبارات میں بہت کچھ آچکاہے لیکن جس طرح مذہبی عبادت گاہوں کو نشانہ بنایا گیا

    یہ بھی پڑھیں  پوجا کمیٹیوں نے وسرجن انتظامات کےلیےدہلی سرکار کو کہا’ تھینکس ‘

    اورگھروں کو جلایا گیا وہ یہ بتانے کے لئے کافی ہے کہ فساداچانک نہیں ہواتھا بلکہ اس کی پہلے سے منصوبہ بندی ہوئی تھی،انہوں نے آگے کہا کہ ہر فسادمیں مٹھی بھرفرقہ پرست طاقتیں اچانک نمودارہوتی ہے اور فسادبرپا کرکے منظرسے غائب ہوجاتی ہے دہلی کے حالیہ فسادمیں بھی یہی ہوا، جہاں دہائیوں سے ہندواورمسلمان پیارومحبت کے ساتھ رہ رہے تھے فسادبرپا کرایا گیا اور پولس وانتظامیہ کی نااہلی کے نتیجہ میں دیکھتے ہی دیکھتے اس نے ایک بھیانک شکل اختیارکرلیا

    مولانا مدنی نے انتہائی تعجب کے ساتھ کہا کہ ملک کی دارالحکومت دہلی میں حکومت کی ناک کے نیچے تین دن تک مسلسل قتل وغارت گری، لوٹ اور آتش زنی کا بھیانک سلسلہ جاری رہا اور قانون نافذ کرنے والے ادارے چین کی نیند سوتے رہے انہوں نے یہ بھی کہا کہ اگر ملک وانتظامیہ کے لوگ چاک وچوبند ہوتے اور ایمانداری سے اپنا فرض اداکرتے تو اس بھیانک فسادکو دوسرے علاقوں میں پھیلنے سے روکاجاسکتاتھا اور تب اتنے بڑے پیمانے پر جانی ومالی نقصان بھی نہ ہوتا

    یہ بھی پڑھیں  تاجروں کی مختلف تنظیموں نے کیا کل بھارت بند کا اعلان

    مولانا مدنی نے مزید کہا کہ فرقہ پرست عناصرنے منصوبہ بندطریقہ سے ایک گروہ کی شکل میں مسلم آبادیوں پر حملہ آورہوئے بے خوف ہوکر انہوں نے دوکانوں کو لوٹااور گھروں کا جلایا، فسادمیں ہلاک شدگان کی تعداد 53 بتائی جاتی ہے جن میں محض 13غیرمسلم ہیں اس سے مسلمانوں کا جو جانی نقصان ہوااس کا اندازہ لگایا جاسکتاہے، مولانا مدنی نے کہا کہ منصوبہ بند فسادکی ذمہ داری سے حکومت بچ نہیں سکتی، ہمارا ہزاروں بارکا تجربہ ہے کہ فساد ہوتانہیں ہے بلکہ کرایا جاتاہے، انہوں نے یہ بھی کہا کہ ہندوستان میں کہیں بھی فساد ہووہ فسادنہیں بلکہ پولس ایکشن ہوتاہے

    دہلی فسادمیں بھی پولس کا یہی کردارہے اور تمام حکومتوں میں ایک چیز جو مشترک نظرآتی ہے کہ حملہ بھی مسلمانوں پر ہوتاہے اورمسلمان مارے بھی جاتے ہیں اورانہی کے مکانات ودوکان کو جلایا جاتاہے اور انہی پر سنگین دفعات لگاکر گرفتاربھی کیا جاتاہے۔مولانا مدنی نے یہ بھی کہا کہ مسلمانوں پر دوہری قیامت توڑی جارہی ہے ایک طرف تو اس فساد میں سب سے زیادہ وہی مارے گئے ان کی دوکانوں اورگھروں کو نقصان پہنچااور اب تفیش کے نام پر یکطرفہ طورپر انہی کو ملزم بنادیا گیا ہے انہوں نے کسی لاگ لپیٹ کے بغیر کہا کہ قانونی کارروائی کے نام پر مسلمانوں کو سبق سیکھانے کا خطرنا کھیل چل رہا ہے

    یہ بھی پڑھیں  اکھلیش یادو کی اناؤ عصمت دری متاثرہ سے ملاقات
    یہ بھی پڑھیں  تاجروں کی مختلف تنظیموں نے کیا کل بھارت بند کا اعلان

    قانون انصاف بالائے طاق رکھ کر ایک ہی فرقہ کے لوگوں کی گرفتاریاں ہوئی ہیں اور فسادکا ساراالزام انہی کے سرمنڈھ دیا گیاہے، مولانا مدنی نے کہا کہ جمعیۃعلماء ہند نے ملک کے ممتاز وکلاء پر مشتمل ایک پینل تشکیل دیدیا ہے جس کے ذریعہ ایسے تمام لوگوں کو مفت قانونی امدادفراہم کی جائے گی جنہیں غلط طریقہ سے فسادمیں ملوث کیا گیا ہے انہوں نے یہ بھی کہا کہ متاثرین کو انصاف دلائے بغیر جمعیہ علماء ہند چین سے نہیں بیٹھے گی

    مولانا مدنی نے آخرمیں کہا کہ ہم اکثریہ باتیں کہتے رہے ہیں کہ فسادسے کسی مخصوص فرقہ، مذہب یا فردکا نہیں بلکہ پورے ملک کا نقصان ہوتاہے، اس لئے فرقہ پرست عناصرپر سخت نظررکھی جانی چاہئے مگر افسوس صاحبان اقتدارکی آنکھیں نہیں کھل رہی ہیں، بلکہ افسوسناک بات تویہ ہے کہ اقتدارمیں شامل بہت سے لوگ ان عناصرکی پشت پناہی کرتے ہیں اس وجہ سے پولس اور انتظامیہ کے لوگ بھی غیر جانبداری سے کام نہیں کرتے اپنے فرض سے دانستہ کوتاہی برتے ہیں

    بلکہ بسااوقات وہ فرقہ پرست عناصرکے ساتھ کھڑے نظرآتے ہیں جیساکہ دہلی کے شمال مشرقی علاقے میں فسادکے دوران ہوا۔قابل ذکر ہے کہ شمال مشرقی دہلی کے فسادمتاثرہ علاقے میں پہلے دن سے جمعیۃعلماء صوبہ دہلی کی ریلیف ٹیم بغیر کسی مذہبی تفریق کے برابر کام کررہی ہے، مکانات ومساجد کی تعمیرنوومرمت کے کام بھی جمعیۃعلماء صوبہ دہلی کی پوری ٹیم مصروف کارہے۔ ریلیف ٹیم میں مفتی عبدالرازق ناظم اعلیٰ صوبہ دہلی، قاری ساجد فیضی، ڈاکٹر شمس عالم، قاری دلشادقمر، قاری اسرارالحق اور مفتی عبدالقدیر قاسمی وغیرہ شامل ہیں۔

    LEAVE A REPLY

    Please enter your comment!
    Please enter your name here

    Latest news

    کیجریوال حکومت کے بروقت لاک ڈاؤن نے دہلی میں کوویڈ 19 میں انفیکشن کی شرح کو کم کردیا

    نئی دہلی : دہلی حکومت کی کاوشوں اور بہتر کوویڈ انتظامیہ کی وجہ سے ، انفیکشن کی شرح میں...

    پچھلے سال دہلی حکومت نے آٹو اور ٹیکسی ڈرائیوروں کو 5-5 ہزار روپے دے کر مدد کی تھی: اروند کیجریوال

    نئی دہلی: دہلی کے وزیر اعلی اروند کیجریوال کی سربراہی میں ، مالی تنگدستیوں سے نبرد آزما غریب خاندانوں...

    دارالعلوم دیوبند کے استاذ عربی مولانا نورعالم امینی کے سانحہ ارتحال پر صدرجمعیۃعلماء ہند وصدرالمدرسین دارالعلوم دیوبند مولانا ارشدمدنی نے کیا رنج وغم...

    نئی دہلی : دارالعلوم دیوبند کے استاذعربی مولانا نورعالم امینی کے سانحہ ارتحال پر صدرجمعیۃعلماء ہند وصدرالمدرسین دارالعلوم دیوبند...

    نوجوانوں میں ویکسینیشن کا جوش و خروش، بڑے پیمانے پر ویکسینیشن کی وجہ سے کورونا ہاریگا : نائب وزیر اعلی

    نئی دہلی : دہلی حکومت نے پیر سے 18 سے 45 سال کے درمیان لوگوں کے لئے مفت کورونا...

    کورونا کا قہر جاری عوام کی رائے سے دہلی میں ایک ہفتہ کےلئے اور لاک ڈاؤن بڑھایا جارہا ہے : اروند کیجریوال

    کورونا کا انفیکشن 37 سے گھٹ کر 30 فیصد ہوگیا ہےلیکن یہ نہیں کہا جاسکتا کہ کورونا ختم ہونے...

    94 سالہ شخص کو سپریم کورٹ نے عبوری راحت دی

    جولائی تک پیرول میں توسیع کردی، 27 سال بعد گھر پر عید منا سکیں گے ڈاکٹر حبیب : گلزار...

    Must read

    You might also likeRELATED
    Recommended to you