رازداری پالیسی

ہمارے بارے میں

رابطہ

  • قومی نیوز
  • ہوم

    Hindi

    Epaper Urdu

    YouTube

    Facebook

    Twitter

    Mobile App

    سات نئے کورونا کے مثبت معاملے ملنے سے مچا ہڑکمپ

    لکھنؤ:راجدھانی میں کورونا مثبت پائے گئے مریضوں کی تعداد میں کوئی بھی کمی نہیں آرہی ہے۔سات نئے معاملے سامنے آنے سے محکمہ صحت میں ہڑکمپ مچا ہوا ہے ۔آناً فاناًمیں پرانے لکھنؤ کے قیصر باغ،تالکٹورہ،سعادت گنج اور وزیر گنج کو سیل کردیاگیا ہے۔راجدھانی میں کورونا مریضوں کی تعداد17تک پہنچ گئی ہے۔جبکہ ریاست میں کل تعداد258 ہوگئی ہے۔واضح رہے کہ تالکٹورہ کے لال مسجد اور پیر بخش مسجد کے آس پاس کا علاقہ سیل کیاگیا ہے۔

    قیصر باغ میں رحمانیہ مسجد اور پھول باغ مسجد کے آس پاس کا علاقہ بھی سیل کیاگیا ہے۔وزیر گنج میںمحمدی مسجد کے آس پاس کاعلاقہ سیل کردیاگیا ہے۔اس کے علاوہ سعادت گنج کے بھی ایک حصہ کو سیل کردیاگیا ہے۔سات کورونا کے مثبت معاملے میں تین آسام،دو جے پور اور دو سہارنپور کے رہنے والے ہیں۔واضح رہے کہ کنکا کپور کی طبیعت میں بہتری آئی تھی تو لوگوں نے راحت کی سانس لی تھی،لیکن آج لکھنو¿ میں سات کورونا مثبت معاملے ملنے سے لوگوں میں خوف پیدا ہوگیا ہے۔ میڈیکل ٹیم کے علاوہ کسی کے بھی داخل ہونے کی اجازت نہیں ہے۔

    یہ بھی پڑھیں  دنیا کے 500؍ بااثر مسلمانوں میں بھارتیوں کا دبدبہ

    میرٹھ میں لاک ڈاون سے غریب طبقہ پریشان
    میرٹھ: کوروناوائرس کے بڑھتے معاملے کوروکنے کے لئےلاک ڈاؤن نے کمزور اور مزدور طبقے کو پریشان کردیا ہے۔ ان حالات میں سماج کا ایک طبقہ جہاں اشیائے ضرورت کا ذخیرہ کرکے حالات سے نمٹنے کو تیار ہے تو وہیں اسی سماج کا غریب اورمزدور ی کرنے والے لوگ اشیائے ضرورت کے لیے پریشان ہیں۔ میرٹھ میں ایسی ہی ایک جھگگی بستی میں ٹیم نے حالات کا جائزہ لیا تو ان افراد کی مصیبت کا اندازہ ہوا۔ میرٹھ میں ہاپوڑ روڈ کے زاہد پورعلاقے میں بسی جھگی بستی کے قریب آنے والی ہر ایک گاڑی کے پیچھے بھاگتے چھوٹے چھوٹے بچے دن بھر اس انتظار میں رہتے ہیں کہ شاید کوئی ان کے لیے کھانے پینے کا سامان لیکر آیا ہے ۔

    یہ بھی پڑھیں  بنگال میں این آر سی کسی بھی صورت میں نافذ نہیں ہونے دیا جائے گا : ممتا بنرجی

    لاک ڈاؤن کے بعد سے یہاں رہنے والے تقریباً 135 خاندانوں کے لیے روزی روٹی کا مسئلہ پیدا ہوگیا ہے۔ آسام سے تعلق رکھنے والے یہ افراد روزی روٹی کے لئے کچڑا اٹھانے کا کام کرتے ہیں ۔ تاہم لاک ڈاؤن کے بعد سے ان کا کام مکمّل طور پرٹھپ ہو گیا ہے۔ سماجی تنظیموں نے ان افراد کی تھوڑی بہت مدد کی ہے ، لیکن وہ ان حالات میں ناکافی ثابت ہو رہی ہے۔ ایسے میں ان افراد کی امیدیں حکومت اور سماج کے صاحب حیثیت افراد سے وابستہ ہیں ، جو اس مشکل وقت کو پار کرنے میں ان کی مدد کر سکتے ہیں۔ ان افراد کا کہنا ہے کہ شروعات میں نگر نگم کی جانب سے کچھ اناج مہیا کرایا گیا تھا ، لیکن اس کے بعد ضلع انتظامیہ کے کسی افسر نے ان کی طرف مڑ کر نہیں دیکھا۔

    یہ بھی پڑھیں  بنگال میں این آر سی کسی بھی صورت میں نافذ نہیں ہونے دیا جائے گا : ممتا بنرجی

    LEAVE A REPLY

    Please enter your comment!
    Please enter your name here
    یہ بھی پڑھیں  گودی میڈیا پر لگام کسنے کےلئے جمعیةعلماءہند کی پٹیشن پر آج چیف جسٹس کی سربراہی والی تین رکنی بینچ سماعت کرے گی

    Latest news

    مولانا رفیق احمد قاسمی کے انتقال پرملال پر صدرجمعیۃعلماء ہند مولانا سید ارشدمدنی کا اظہاررنج وغم

    نئی دہلی : صدرجمعیۃعلماء ہند مولانا سیدارشدمدنی نے مشہورعالم دین و جماعت اسلامی ہندکے سابق سکریٹری مولانا رفیق احمدقاسمی...

    عالمی یوم ماحولیات : خوش گوار زندگی پانے کے لیے شجر کاری کے ذریعہ فضائی آلودگی کا خاتمہ ضروری : حاجی یاسین قریشی

    یومِ ماحولیات پر آئی ایم آئی ٹی کالج ہاپوڑ، جدید پولیس چوکی، پولیس لائن ہاپوڑ، محکمۂ جنگلات ڈسپینسری حافظ...

    محکمہ ماحولیات سرچشمے کا مطالعہ کر رہا ہے اور لاک ڈاؤن کے دوران ہوا اور آلودگی کی سطح کو بہتر بنانے کے لیے غور...

    نئی دہلی : دہلی کے وزیر ماحولیات گوپال رائے نے کہا کہ محکمہ ماحولیات پوری دہلی میں دواؤں کے...

    ’نیوز کلپنگ سروس‘ کاعالمی ریکارڈ بنانے پر شفیق الحسن کو مبارکباد

    ’ انٹرنیشنل بُک آف ریکارڈس‘نے سوشل میڈیا پر منفرد ’نیوز کلپنگ سروس‘ کیلئے اعزاز سے نوازا، اہم شخصیات نے...

    ہم نے لاک ڈاؤن میں صحت کے بنیادی ڈھانچے کو مستحکم کیا: سسودیا

    نئی دہلی : دہلی کے نائب وزیر اعلی منیش سسودیا نے ویڈیو کانفرنس کے زیر اہتمام کوویڈ 19 عالمی...

    سپریم کورٹ کی ہدایت پر جمعتہ نے براڈ کاسٹ ایسو سی ایشن کو بھی فریق بنا دیا، معاملہ کی جلد سماعت کے لئیے کوشش...

    ممبئی : مسلسل زہر افشانی کرکے اور جھوٹی خبریں چلاکر مسلمانوں کی شبیہ کوداغدار،ہندوؤں اورمسلمانوں کے درمیان نفرت کی...

    Must read

    You might also likeRELATED
    Recommended to you