رازداری پالیسی

ہمارے بارے میں

رابطہ

  • قومی نیوز
  • ہوم

    Hindi

    Epaper Urdu

    YouTube

    Facebook

    Twitter

    Mobile App

    سابق وزیراعظم آنجہانی لال بہادر شاستری کی یوم پیدائش پر خصوصی تحریر

    تحریر۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔افتخار قریشی

    ۔افتخار قریشی
    ۔افتخار قریشی

    لال بہادر شاستری کا جنم 2اکتوبر1904کو اترپردیش کے مغل سرائے میں ہوا تھا،کایستھ پریوار میں جنمے لال بہادر کا گوتر سری واستو تھا،لال بہادر سری واستو نے کاشی ودیا پیٹھ سے شاستری کی پڑھائی پوری کی تھی،شاستری کی ڈگری ملنے کے بعد انھوں نے سری واستو گوتر ہٹاکر شاستری لکھنا شروع کردیا تھا، اس طرح لال بہادر سری واستو سے لال بہادر شاستری بن گئے،لال بہادر شاستری بھارت کے جواہر لال نہرو کے بعد ملک کے دوسرے وزیر اعظم بنے تھے،وہ 9جون 1964سے 11جنوری 1966 تک تقریباً18ماہ ملک کے وزیر اعظم رہے۔

    ملک کی آزادی کے بعدشاستری جی اترپردیش حکومت میں پارلیمانی سکریٹری بنائے گئے،وزیراعلیٰ گووند ولبھ پنت کی وزارت میں انھیں کابینی وزیر بنایا گیا تھا،انھیں پولیس اور آمدورفت کی وزارت کا قلمدان دیا گیا تھا،وزیرآمدورفت رہتے ہوئے انھوںنے پہلی بار سرکاری بسوں میں خواتین کنڈکٹروں کی بھرتی کی تھی،محکمہ پولیس کے وزیر رہتے ہوئے انھوں نے پہلی بار بھیڑ کو قابو میں رکھنے کے لئے لاٹھی کی جگہ پانی کی بوچھار کے استعمال کی شروعات کرائی تھی،1951میں جواہر لال نہرو کی قیادت میں انھیں آل انڈیا کانگریس کمیٹی کا جنرل سکریٹری بنایا گیا تھا،انھوں نے کانگریس کا جنرل سکریٹری رہتے ہوئے پارٹی کی کامیابی کے لئے سخت محنت کی تھی،27مئی 1964کوجواہر لال نہرو کی موت کے بعد صاف امیج کی وجہ سے لال بہادر شاستری کو ملک کا وزیراعظم بنایا گیا تھا۔

    یہ بھی پڑھیں  مام سہولیات والے بستروں پر تقریبا 30 لاکھ روپے خرچ ہو رہے ہیں اور مجموعی طور iپر 1500 بیڈوں پر لگ بھگ 450 کروڑ لاگت آئے گی: اروند کیجریوال
    یہ بھی پڑھیں  تمام نجی اسکولوں کو وزیر اعلی نے بنایا ڈینگو مہم کا حصہ

    لال بہادر شاستری پڑھائی پوری کرنے کے بعد بھارت سیوک سنگھ نامی تنظیم سے جڑگئے تھے،انھوں نے ملک اور عوام کی خدمت کا عہد لیتے ہوئے یہیں سے اپنے سیاسی کرئیر کی شروعات کی تھی،شاستری جی سچے گاندھی وادی تھے،انھوں نے اپنی ساری زندگی سادگی اور غریبوں کی خدمت میںگزاردی،آزادی کی لڑائی کے ہر پروگرام میں ان کی بھاگیداری رہی،اس کے نتیجہ میں ان کو کئی بار جیل بھی جانا پڑا،آزادی کی تحریک کے جن پروگراموں میں ان کی خصوصی شرکت رہی، ان میں 1921کا اسہائے آندولن،1930کا دانڈی مارچ،اور 1942کا بھارت چھوڑو آندولن شامل ہیں۔

    لال بہادر شاستری کے دور اقتدار میں بھارت پاکستان کے درمیان1965کی جنگ ہوئی تھی،اس سے قبل جواہر لال نہرو کے دور اقتدار میں بھارت چین کے ساتھ جنگ ہار گیا تھا،شاستری جی نے اس جنگ میں نہرو کے مقابلہ ملک کو ایک مثالی قیادت دیتے ہوئے پاکستان کو شکست دی تھی،بھارت پاکستان جنگ روکنے کے لئے ازبیکستان کی راجدھانی تاشقند میں 11جنوری 1966کودونوں ممالک کے درمیان امن معاہدہ پر دسخت کرنے کے کچھ ہی دیر بعد رات میں لال بہادر شاستری کا انتقال ہوگیا تھا،انھیں 1966میںبعد ازمرگ بھارت رتن سے نوازہ گیا تھا۔

    یہ بھی پڑھیں  خود کشی کرنے پر مجبور ہیں قرض سے پریشان کسان

    LEAVE A REPLY

    Please enter your comment!
    Please enter your name here
    یہ بھی پڑھیں  بابری مسجد قانون اور عدل وانصاف کی نظرمیں ایک مسجد تھی اور قیامت تک مسجد ہی رہے گی :جمعیۃعلماء

    Latest news

    دس مہینے بعد تعلیمی سرگرمی شروع ہونے سے بچوں کے چہروں پر لوٹی مسکراہٹ

    نئی دہلی: دس مہینے بعد دہلی کے اسکولوں میں محدود ہی سہی لیکن رونقیں واپس لوٹ آئی ہیں۔ کل...

    دہلی فسادات معاملہ،متاثرین کی باز آبادکاری میں مصروف اقلیتی فلاحی کمیٹی

    میٹنگ میں جلد سے جلد زیر التوامعاملات کے نپٹارہ کی افسران کو ہدایت،کچھ معاملات میں دوبارہ سروے کرنے کی...

    بی جے پی کے زیر اقتدار ایم سی ڈی سے نہ صرف دہلی کے لوگ متاثر ہیں، بلکہ ملازمین بھی نالاں ہیں : سوربھ...

    نئی دہلی : عام آدمی پارٹی کے چیف ترجمان سوربھ بھاردواج نے کہا کہ بی جے پی کے زیر...

    راجیندر نگر کے ایم ایل اے راگھو چڈھا نے سوامی دیانند سروودیا کنیا اسکول کا دورہ کیا

    لاک ڈاؤن کے بعد اسکول کھلنے کے بعد سکیورٹی کے تمام انتظامات کردیئے گئے ہیں، طلباء اساتذہ کو N95...

    Must read

    You might also likeRELATED
    Recommended to you