رازداری پالیسی

ہمارے بارے میں

رابطہ

  • قومی نیوز
  • ہوم

    Hindi

    Epaper Urdu

    YouTube

    Facebook

    Twitter

    Mobile App

    نربھیا عصمت دری معاملہ : پون کے نابالغ ہونے کا دعویٰ سپریم کورٹ نے کیا مسترد

    نئی دہلی: سپریم کورٹ نے نربھیا عصمت دری اور قتل کیس میں پون کے نابالغ ہونے کے دعوے کو مسترد کردیا ہے۔ اس سے قبل دونوں فریق میںبحث ہوئی ۔ دہلی پولیس کی جانب سے ایس جی تشار مہتا نے دلیل دی کہ واقعہ کے وقت پون نابالغ نہیں تھا۔ پون کی برتھ سرٹیفکیٹ درج کی گئی تھی۔ اسی کی بنیاد پر یہ واضح ہوا کہ وہ کوئی نابالغ نہیں ہے۔ مجرموں نے پولیس تفتیشی افسر کی 2013 کی رپورٹ کی مخالفت نہیں کی۔

    تشارمہتا کا مزید کہنا ہے کہ جنوری 2013 میں ، پولیس نے عمر کی تصدیق کا سرٹیفکیٹ داخل کیا۔ اس کے والدین نے بھی اس کی تصدیق کی تھی۔ نابالغ ہونے کا دعویٰ کسی بھی وقت کیا جاسکتا ہے۔ دریں اثناء مدعا علیہ کا کہنا تھا کہ پون کو پھنسانے کے لئے بڑی سازش رچی گئی ہے۔ متاثرہ نے پون کا نام نہیں لیاتھا۔ پولیس نے جان بوجھ کر پون کی عمر کے بارے میں حقائق چھپائے ہیں۔

    یہ بھی پڑھیں  اروند کیجریوال نے اپنی رہائش گاہ پر دہلی کے شعرا ء سے کی ملاقات

    اس پر جسٹس اشوک بھوشن نے کہا کہ آپ نے نظر ثانی درخواست کے دوران یہ مسئلہ اٹھایا تھا۔ اسے سپریم کورٹ نے جولائی 2018 میں مسترد کردیا تھا۔ آپ دوبارہ وہی معاملہ اٹھا رہے ہیں ، کیا آپ کو بار بار ایسی درخواست کی اجازت دی جاسکتی ہے؟ سپریم کورٹ نے کہا کہ اگر آپ اس طرح کی درخواست دائر کرتے رہے تو یہ لامتناہی ہوگی۔ ایس جی توشر مہتا نے بھی پولیس کی جانب سے اس کی مخالفت کی۔ سپریم کورٹ نے کہا کہ آپ نے یہ معاملہ ٹرائل کورٹ ، ہائی کورٹ اور سپریم کورٹ میں اٹھاچکے ہیں۔ آپ کتنی بار اس مسئلے کو اٹھائیں گے۔

    یہ بھی پڑھیں  دہلی کا جی ڈی پی پچھلے 7 سالوں میں ہوا دوگنا : منیش سسودیا

    پون گپتا نے بھی اس بات کی تصدیق کی ہے کہ انہوں نے تہاڑجیل میں منعقدہ ثقافتی پروگراموں میں حصہ لیا تھا۔ جیل کا یہ دعویٰ غلط ہے کہ اس نے ثقافتی پروگراموں میں حصہ نہیں لیاتھا۔ عدالت نے کہا کہ جب نظرثانی پر سماعت ہورہی تھی تو اس درخواست میں یہ سب کا ذکر کیوں نہیں کیاگیا؟ آپ ہر بار ایک ہی دستاویز لے کر حاضر نہیں ہوسکتے ہیں۔ سپریم کورٹ نے کہا کہ 10 جنوری 2013 کو نچلی عدالت نے اس دعوے کو مسترد کردیاتھا کہ حادثہ کے وقت پون نابالغ تھا۔ پون کے وکیل نے بتایا کہ اے پی سنگھ نے بتایا کہ اس وقت پون کے پاس کوئی وکیل نہیں تھا۔

    یہ بھی پڑھیں  محلہ کے اجلاسوں میں لوگوں اجتماع۔ آج جمعہ کو 21 ہزار سے زائد افراد نے 57 اسمبلیوں میں 208 مقامات پر ہونے والے محلہ کے اجلاسوں میں شرکت کی: آپ

    LEAVE A REPLY

    Please enter your comment!
    Please enter your name here
    یہ بھی پڑھیں  بھوپیندر سنگھ مان کو کمیٹی سے خود کو الگ کرنے کے بجائے زرعی قوانین کے خلاف آواز اٹھانی چاہئے تھی : شرومنی اکالی دل

    Latest news

    میرٹ کی بنیادپر منتخب ہونے والے 670طلباء میں ہندوطلباء بھی شامل

    تعلیمی سال 2021-2022کے لئے جمعیۃعلماء ہند کے وظائف جاری ، مذہب سے اوپر اٹھ کر کام کرنا تو جمعیۃعلماء...

    آدیش گپتا نے اپنے بیٹوں کے ساتھ مل کر ایم سی ڈی کی زمین پر اپنا سیاسی دفتر بنایا: درگیش پاٹھک

    نئی دہلی : عام آدمی پارٹی کے ایم سی ڈی انچارج درگیش پاٹھک نے کہا کہ بی جے پی...

    مغربی يو پی : راشٹریہ لوک دل اور سماج وادی پارٹی اتحاد کتنا مضبوط ؟

    مغربی یوپی : مظفر نگر فسادات کے بعد مغربی یوپی میں بالخصوص پوری ریاست میں بالعموم فرقہ واریت اور...

    صوبائی کنونشن میں رئیس الدین رانا کو ”حفیظ میرٹھی ایوارڈ“ ملنے پر ایسوسی ایشن نے کیا استقبال

    مظفر نگر : اردو ٹیچرز ویلفیئر ایسوسی ایشن مظفر نگر کے عہدیداران نے آج صوبائی نائب صدر رئیس الدین...

    اسمبلی الیکشن : سوشل میڈیا کے چاروں پلیٹ فارموں پر سرگرم

    لکھنؤ : ملک کی سیاسی سمت کو طے کرنے والے صوبے اترپردیش میں کورونا بحران کے درمیان ہورہے اسمبلی...

    میرے والد اعظم خان کی جان کو خطرہ : عبد اللہ اعظم

    عبد اللہ اعظم نے کہا کہ کورونا پروٹوکول کے نام پر لوگوں کا استحصال کیا جا رہا ہے، گھر...

    Must read

    You might also likeRELATED
    Recommended to you