رازداری پالیسی

ہمارے بارے میں

رابطہ

  • قومی نیوز
  • ہوم

    Hindi

    Epaper Urdu

    YouTube

    Facebook

    Twitter

    Mobile App

    دس مہینے بعد تعلیمی سرگرمی شروع ہونے سے بچوں کے چہروں پر لوٹی مسکراہٹ

    نئی دہلی: دس مہینے بعد دہلی کے اسکولوں میں محدود ہی سہی لیکن رونقیں واپس لوٹ آئی ہیں۔ کل پورے دس مہینے بعد جب اسکول کے بچوں کو اپنی اسکول یونیفارم میں اسکول جاتے اور ان کو اسکول سے واپس آتے دیکھا تو سکون بھی محسوس ہوا اور اعتماد بھی پیدا ہوا۔ واضح رہے کل دسویں اور بارہویں کے بچوں کے لئے اس سال اسکول جانے کا پہلا دن تھا اور تمام بچے دس ماہ سے کورونا وبا کی وجہ سے گھر پر ہی بیٹھے ہوئے ہیں۔ تعلیمی سرگرمی شروع ہونے سے بچوں کے چہروں پر مسکراہٹ لوٹ آئی ہے۔

    دہلی کے علاوہ ویسے کئی ریاستوں میں اسکول کھل گئے ہیں۔ دسویں اور بارہویں کلاس کے بچوں کے بورڈ امتحانات 4 مئی سے شروع ہوں گے اور ان کے پریکٹیکل امتحانات کی ابھی کوئی تاریخ طے نہیں ہے۔ کورونا وبا کی وجہ سے گزشتہ سال مارچ میں اسکول بند ہوئے تھے اور اس کے بعد سے بچے تو پوری طرح گھر پر ہی ہیں اور شروع میں تو کوئی پڑھائی نہیں ہوئی لیکن بعد میں جب یہ لمبا ہوتا نظرآیا تو آن لائن تعلیم کا سلسلہ شروع ہو گیا تھا۔

    یہ بھی پڑھیں  مدھیہ پردیش کے وزیراعلیٰ شیوراج سنگھ چوہان کا باغلی کو ضلع بنانے کا اعلان

    آن لائن تعلیم کی اپنی پریشانیاں تھیں، کہیں پر نیٹ ورک نہیں تو کسی کے پاس موبائل یا کمپیوٹر نہیں! اس کے علاوہ طلبا کو آن لائن طریقہ سے پڑھائی کرنے میں پریشانی ہو رہی تھی کیونکہ وہ اپنی توجہ مرکوز نہیں کر پا رہے تھے۔ اب کم از کم دسویں اور بارہویں کلاس کے بچوں کے لئے یہ آسانی ہوگی کہ امتحانات سے پہلے وہ اساتذہ سے اپنی پریشانیاں دور کرا سکتے ہیں۔

    یہ بھی پڑھیں  مدھیہ پردیش کے وزیراعلیٰ شیوراج سنگھ چوہان کا باغلی کو ضلع بنانے کا اعلان

    ہر نئے دن کے ساتھ کورونا کا قہر کم ہوتا جا رہا ہے اور اس کے نئے معاملوں کی تعداد کم ہوتی جا رہی ہے، جس کی وجہ سے لوگوں میں خوف کم ہو رہا ہے اور اعتماد کی بحالی ہوتی جا رہی ہے۔ خود دہلی میں کل یعنی پیر کے روز کورونا کے نئے معاملوں کی کل تعداد 161 تھی جبکہ اس سے ہلاک ہونے والوں کی تعداد 8 رہی۔ اسکولوں کے کھولے جانے سے جہاں تعلیمی سرگرمیاں پٹری پر واپس لوٹیں گی وہیں لوگوں میں اعتماد کی بحالی کی وجہ سےمعیشت میں استحکام آئے گا اور سماجی زندگی بحال ہوگی۔

    یہ بھی پڑھیں  رابندر بھارتی یونیورسٹی کے وائس چانسلر نے استعفیٰ دیدیا

    LEAVE A REPLY

    Please enter your comment!
    Please enter your name here

    Latest news

    کسان تحریک کے دوران جان گنوانے والے کسانوں کی تعداد اور ان کے خلاف درج مقدمات کی کوئی معلومات نہیں ہے : مرکزی وزیر...

    نئی دہلی : مرکزی حکومت نے کہا ہے کہ اس کے پاس کسان تحریک کے دوران جان گنوانے والے...

    ایم سی ڈی تبدیلی مہم کی تیاری 27 نومبر سے شروع، معلومات اپ لوڈ کرنے کے لیے خصوصی ایپ استعمال کریں گے: گوپال رائے

    نئی دہلی : آپ کے سینئر لیڈر گوپال رائے نے کہا کہ ایم سی ڈی انتخابات کے پیش نظر،...

    بنگلورو پولیس نے منّور فاروقی کو متنازعہ شخص قرار دیا

    بنگلور: کرناٹک کے دارالحکومت بنگلورو کے ایک آڈیٹوریم میں اسٹینڈ اپ کامیڈین منور فاروقی کا ایک شو منعقد کیا...

    سید بلال نورانی حامیوں کے ساتھ ایس پی میں شامل، مل سکتی ہے بڑی ذمہ داری

    لکھنؤ: ریاست کے معروف سماجی کارکن اور رہنما سید بلال نورانی جمعہ کو اپنے حامیوں کے ساتھ سماج وادی...

    اسکول، اسپتال، بجلی، پانی، سڑک، ٹرانسپورٹ اور وائی فائی سمیت تمام شعبوں میں کجریوال حکومت کے تاریخی کاموں سے متاثر ہو کر لوگ آپ...

    نئی دہلی : دہلی میں 2022 میں ہونے والے بلدیاتی انتخابات سے پہلے کانگریس کو بڑا جھٹکا لگا ہے۔...

    اروند کیجریوال نئے ورینٹ سے متاثرہ ممالک سے آنے والی پروازوں کو روکنے کا کیا مطالبہ

    نئی دہلی: دہلی کے وزیر اعلی اروند کجریوال نے ہفتہ کو وزیر اعظم نریندر مودی پر زور دیا کہ...

    Must read

    You might also likeRELATED
    Recommended to you