رازداری پالیسی

ہمارے بارے میں

رابطہ

  • قومی نیوز
  • ہوم

    Hindi

    Epaper Urdu

    YouTube

    Facebook

    Twitter

    Mobile App

    انسان کو جانوروں سے ممتاز کرنے والی اصل شئے اخلاق ہے : انجینئر محتشم الحسن

    “السبیل اکیڈمی” کسیار گاؤں میں یومِ اطفال پر مختلف انعامی مقابلے کا انعقاد، کامیاب طلبہ وطالبات انعامات سے سرفراز۔

    ارریہ : اخلاقیات کسی بھی قوم کی زندگی کے لئے ریڑھ کی ہڈی کی حیثیت رکھتی ہیں خواہ وہ کسی بھی مذہب سے تعلق رکھتی ہو۔اخلاق دنیا کے تمام مذاہب کا مشترکہ باب ہے جس پر کسی کا اختلاف نہیں۔ انسان کو جانوروں سے ممتاز کرنے والی اصل شئے اخلاق ہے۔ ان خیالات کا اظہار قومی شاہراو پر واقع اور سی بی ایس سی افیلیٹیڈ معروف ومشہور تعلیمی وتربیتی درسگاہ”السبیل اکیڈمی” کے وسیع وعریض احاطہ میں یومِ اطفال کے موقع پر منعقدہ تقسیم انعامات تقریب میں صدارتی گفتگو کرتے ہوئے انجینئر محتشم الحسن نے یہاں کے بچوں اور بچیوں کو خطاب کرتے ہوئے کیا۔

    آپ نے مزید کہا کہ اخلاقیات ہی انسان کو جانوروں سے الگ کرتی ہیں۔اگر اخلاق نہیں تو انسان اور جانور میں کوئی فرق نہیں۔ اخلاق کے بغیر انسانوں کی جماعت انسان نہیں بلکہ حیوانوں کا ریوڑ کہلائے گی جبکہ سابق استاد غلام سرور نے بشوں کو نصیحت کرتے ہوئے ہوئے کہاکہ آپ جس نشست پر بیٹھے ہوئے ہیں، ان میں آپ کے والدین کے ڈرم ہیں، ان کے ارمان ہیں، اس لئے اپنے والدین کے خواب کو شرمندۂ تعبیر کرنا آپ کا کی سب سے بڑی ذمہ داری ہے اوراپنے آپ کو تعلیم کے ساتھ ساتھ تربیتوں سے بھی مزین کیجئے،کیوں کہ بغیر تربیت اور بغیر ڈسپلن کے تعلیم بے معنی ہو جائےگی۔

    یہ بھی پڑھیں  دہپا گائس سوسائٹی کی طویل کوششوں کے ذریعہ دہپا گاؤں میں لائبریری کا سنگ بنیاد

    اور اس موقع پر السبیل اکیڈمی کے سابق معلم معتصم زبیری نے کہا کہ علم کو انسان کی’ ’ تیسری آنکھ‘‘ کہا جاتا ہے، انسان کو اپنے مقصد حیات،مقصد تخلیق، سچائی کی پہچان، حقائق کا ادراک اور معاشرے میں مہذب زندگی گزارنے کا سلیقہ علم ہی کے ذریعے حاصل ہوتا ہے۔ انسان کے اشرف المخلوقات ہونے کا راز بھی تعلیم و تربیت میں مخفی ہے۔اس علم کوحاصل کرنے ، تعلیم و تربیت سیکھنے ، عملی و فکری استعداد کوبڑھانے میں مادر علمی(اسکول و مدارس) کا کردار سب سے اہم ہے، جسے کبھی بھی فراموش نہیں کیا جا سکتا ۔انسان کی عملی و فکری افزائش میں مادر عملی کو فوقیت حاصل ہے۔

    یہ بھی پڑھیں  نئی دہلی سے کیجریوال کے خلاف بی جے پی کے سنیل یادو

    آپ نے آخر میں کہاکہ بچے پھول جیسے ہوتے ہیں ” اس قول کے دو پہلو ہیں ، ایک یہ کہ بچے پھول کی طرح پیارے اور کسی بھی گھر یا معاشرے کی رونق ہوتے ہیں ۔اس کا دوسرا پہلو یہ ہے کہ بچے ذہنی اور جسمانی طور پر حساس ، نازک اور نا پختہ ہوتے ہیں ، اس لئے انہیں والدین اور ہوسٹل میں نگرانی کی سخت ضرورت ہے،کیوں کہ جوکسان اپنی کھیت کی رکھوالی چھوڑدے تو اس کی فصلوں کی بربادی یقینی ہے، بعینہٖ آج کے دور حاضر کے طلبہ آزادی کے خاطر ہوسٹل میں نگرانی والی زندگی میں جینا اور رہنا نہیں چاہتے ہیں جبکہ آپ بچوں کے تحفظ اور آپ کی نگرانی کی ضرورت بہت ہی ضروری ہے۔ اکیڈمی کے المنی انجینئر اطہر البشر نے کہاکہ درسی تعلیم کے ساتھ ساتھ خارجی سرگرمیوں اور خاص کر ثقافتی پروگرام میں شامل ہونا نہایت مفید ہوتا ہے،

    یہ بھی پڑھیں  سی اے اے ،این آرسی کے خلاف مظاہرے جاری

    اس سے طلبہ اور طالبات میں اپنے ما فی الضمیر کو دوسرے کے سامنے عمدہ اور بہتر طریقے سے ادا کرنے کی صلاحیت پیدا ہوتی ہے ان کے علاوہ محمد کلیم، ایڈوکیٹ ندیم الحسن، انجینئر نفیس وغیرہ نے بھی بچوں کو خطاب کیا.اس سے قبل یوم اطفال کے موقع پر کرائے گئے مضمون نویسی، پینٹنگ، نظم گوئی اور تقریر کے انعامی مقابلے کے تقسیم انعامات تقریب کا بابرکت آغاز حبیب اللہ درجہ نہم کی تلاوت کلام اللہ سے کیا گیا،جبکہ مداح رسول انس افروز نے بارگاہ رسالت مأب صلی اللہ علیہ وسلم میں نذرانہ عقیدت پیش کیا اور پروگرام کے آخر میں صدر تقریب،مہمانان عظام کے دست مبارک سے مذکورہ انعامی مقابلے میں کامیابی سے ہمکنار ہوئے والے بچوں اور بچیوں کا انعامات سے سرفراز کیا گیا

    اور مذکورہ انعامی مقابلے میں سے مضمون نویسی مقابلہ میں ماہ رخ قیصر درجہ ششم نے فرسٹ، پریتم کمار ساہ درجہ ہشتم نےسکنڈ اور وسیم احمد درجہ ششم نے تھرڈ پوزیشن حاصل کیا۔پینٹنگ مقابلہ میں پہلا مقام علوینہ انصاری، دوسرا مقام عبداللہ اور تیسرا مقام آصف رضا۔نظم گوئی مقابلہ میں فرحت ناز، زیبا حسن اور علقمہ اقبال نے بالترتیب فرسٹ،سکنڈ اور ترڈ پوزیشن حاصل کیا اور تقریری مقابلہ میں سمن حسن درجہ دہم نے پہلا، آسیہ مہدی نے دوسرا اور شایان محمد نے تیسرا مقام حاصل کیا اور ان تمام انعام یافتگان کو صدر تقریب، مہمانانِ کرام جبکہ چاروں مقابلوں میں امن آرزو، ثناءاللہ، شعبان عالم، زرین فاطمہ، عاقب احمد، ذوالفقار حیدر اور ضویا حیدر تشجیعی(حوصلہ افزائی) کے انعامات دیئے گئے اور آخر میں اکیڈمی کے پرنسپل نوید حسن نے اظہارِ تشکر پیش کیا۔

    یہ بھی پڑھیں  شاہین باغ :شدت پسند تنظیمو ں کی دھمکی کے باوجود جوش و خروش میں کوئی کمی نہیں
    یہ بھی پڑھیں  مفاد عامہ اور کروناوائرس سے تحفظ کیلئے شاہین باغ کی طرح اب سرکار بھی اپنی ذمہ داری نبھائے :ڈاکٹر منظور عالم

    اس موقع پر اظفار عالم، سوربھ کمار، بیدناتھ ساہ،سائشتہ پروین،پرینکا پانڈے،فاروق اعظم،جمشید علی جام،مزمل حسین،مجیب الرحمن،پرویز خان، نجمی خان اور بسنت کمار وغیرہ موجود تھے۔ اس تقریب کی صدارت انجینئر محتشم الحسن نے کیں جبکہ نظامت کے فرائض کو اکیڈمی کے پرنسپل ابوذر تبسم اور اکیڈمی کے وائس پرنسپل مشتاق احمد صدیقی نے باری باری سے انجام دیا۔

    LEAVE A REPLY

    Please enter your comment!
    Please enter your name here

    Latest news

    میرٹ کی بنیادپر منتخب ہونے والے 670طلباء میں ہندوطلباء بھی شامل

    تعلیمی سال 2021-2022کے لئے جمعیۃعلماء ہند کے وظائف جاری ، مذہب سے اوپر اٹھ کر کام کرنا تو جمعیۃعلماء...

    آدیش گپتا نے اپنے بیٹوں کے ساتھ مل کر ایم سی ڈی کی زمین پر اپنا سیاسی دفتر بنایا: درگیش پاٹھک

    نئی دہلی : عام آدمی پارٹی کے ایم سی ڈی انچارج درگیش پاٹھک نے کہا کہ بی جے پی...

    مغربی يو پی : راشٹریہ لوک دل اور سماج وادی پارٹی اتحاد کتنا مضبوط ؟

    مغربی یوپی : مظفر نگر فسادات کے بعد مغربی یوپی میں بالخصوص پوری ریاست میں بالعموم فرقہ واریت اور...

    صوبائی کنونشن میں رئیس الدین رانا کو ”حفیظ میرٹھی ایوارڈ“ ملنے پر ایسوسی ایشن نے کیا استقبال

    مظفر نگر : اردو ٹیچرز ویلفیئر ایسوسی ایشن مظفر نگر کے عہدیداران نے آج صوبائی نائب صدر رئیس الدین...

    اسمبلی الیکشن : سوشل میڈیا کے چاروں پلیٹ فارموں پر سرگرم

    لکھنؤ : ملک کی سیاسی سمت کو طے کرنے والے صوبے اترپردیش میں کورونا بحران کے درمیان ہورہے اسمبلی...

    میرے والد اعظم خان کی جان کو خطرہ : عبد اللہ اعظم

    عبد اللہ اعظم نے کہا کہ کورونا پروٹوکول کے نام پر لوگوں کا استحصال کیا جا رہا ہے، گھر...

    Must read

    You might also likeRELATED
    Recommended to you