رازداری پالیسی

ہمارے بارے میں

رابطہ

  • قومی نیوز
  • ہوم

    Hindi

    Epaper Urdu

    YouTube

    Facebook

    Twitter

    Mobile App

    سوشل میڈیا کا غلط استعمال کرنے والوں سے کوئی رعایت نہیں برتی جائے گی: دلباغ سنگھ

    سری نگر: جموں وکشمیر پولیس کے سربراہ دلباغ سنگھ نے کہا کہ سوشل میڈیا کا غلط استعمال کرنے والوں سے کوئی رعایت نہیں برتی جائے گی۔ انہوں نے کہا کہ ہمیں معلوم ہے کہ انٹرنیٹ سروس پرووائیڈرس صارفین کی سوشل میڈیا تک رسائی کو روکنے میں اب تک صد فیصد کامیاب نہیں ہوپائے ہیں لیکن ان کا ساتھ ہی کہنا تھا کہ صحیح استعمال اور غلط استعمال میں فرق ہے جو واضح طور پر نظر آتا ہے ۔ انہوں نے کہا کہ سوشل میڈیا کا استعمال اب تک برداشت کی حد میں ہے اور یہ حد پار ہوجانے کے بعد ہم کوئی دوسرا فیصلہ لینے پر مجبور ہوسکتے ہیں۔پولیس سربراہ دلباغ سنگھ بدھ کے روز یہاں ایک پریس کانفرنس سے خطاب کررہے تھے ۔ اس موقع پر کشمیر زون پولیس کے انپسکٹر جنرل وجے کمار بھی موجود تھے ۔دلباغ سنگھ نے کشمیری نوجوانوں سے جنگجوئوں کی صفوں میں شامل نہ ہونے کی اپیل کرتے ہوئے کہا کہ وقت آگیا ہے کہ یہاں کے نوجوان اپنی اور اپنے کنبوں کی بہتری اور خوشحالی کے لئے کام کریں۔ انہوں نے کہا کہ کشمیری نوجوانوں کو غلط راستے کی طرف دھکیلنے کی مسلسل کوششیں ہورہی ہیں۔ایک صحافی نے جب پولیس سربراہ سے پوچھا کہ یہ کیسے جائز ہے کہ سوشل میڈیا پر پابندی کے بیچ آپ کے محکمے کا ترجمان میڈیا کو بذریعہ وٹس ایپ پریس ریلیز اور پریس کانفرنس کا دعوت نامہ ارسال کرتے ہیں تو ان کا جواب تھا: ‘سوشل میڈیا پر جو انفارمیشن آپ کے ساتھ شیئر ہوئی ہے یا ہورہی ہے اس کا مطلب ہے کہ انتظامیہ کی نوٹس میں ہے کہ کچھ حد تک میڈیا اہلکار بھی سوشل میڈیا کا استعمال کررہے ہیں۔

    یہ بھی پڑھیں  وہاٹس ایپ جاسوسی کے غیر قانونی کھیل میں مودی حکومت فیل: دگ وجے

    آپ لوگ خامیوں سے فائدہ اٹھا رہے ہیں یہ ہم جانتے ہیں’۔ان کا مزید کہنا تھا: ‘حکومت کی ہدایت کے باوجود سروس پرووائیڈرس صارفین کی سوشل میڈیا تک رسائی بلاک نہیں کرپائے ہیں۔ حکومت کے حکم نامے کے باوجود سوشل میڈیا کا استعمال ہورہا ہے ۔ لیکن استعمال اور غلط استعمال میں فرق ہے جو نظر آرہا ہے ۔ آپ لوگ سوشل میڈیا کا استعمال کررہے ہیں وہ ہمیں معلوم ہے ۔ لیکن جس وقت آپ غلط استعمال کریں گے تو اس وقت رعایت کی گنجائش نہیں ہوگی۔ جب تک آپ خامی سے فائدہ اٹھا رہے ہیں ہماری نظر میں ہے ۔ آپ فائدہ اٹھائیں۔ حکومت جانتی ہے کہ آپ اس کا استعمال کررہے ہیں۔ اس غلط فہمی میں نہ رہیں کہ اس کا استعمال نہیں ہورہا ہے ۔ غلط استعمال کرنے والوں کے خلاف کارروائی کی جارہی ہے ‘۔پولیس سربراہ نے کہا کہ سوشل میڈیا کا استعمال اب تک برداشت کی حد میں ہے اور یہ حد پار ہوجانے کے بعد ہم کوئی دوسرا فیصلہ لینے پر مجبور ہوسکتے ہیں۔ان کا کہنا تھا: ‘وی پی این شی پی این کا بہت غلط استعمال ہورہا ہے ۔ یہ ہماری نوٹس میں آرہا ہے ۔ پاکستان کی طرف سے اس کو استعال کرنے کی کوئی کسر نہیں چھوڑی جارہی ہے ۔ ابھی سوشل میڈیا کا استعمال برداشت کی حد میں ہے ۔

    یہ بھی پڑھیں  اپنا گھر، دکان تسمہ، تمام فروخت کر رہی مودی حکومت : کانگریس
    یہ بھی پڑھیں  مہنگائی نے ملک کے شہریوں کی کمر توڑی

    نہیں تو ہم کوئی اور فیصلہ لینے پر مجبور ہوجائیں گے ۔ کیا فیصلہ ہوگا وہ صحیح اور غلط استعمال پر محنصر ہوگا۔ ہم سوشل میڈیا کے غلط استعمال پر نظر رکھے ہوئے ہیں’۔دلباغ سنگھ نے کشمیری نوجوانوں سے جنگجوئوں کی صفوں میں شامل نہ ہونے کی اپیل کرتے ہوئے کہا: ‘میں اپنے نوجوانوں سے پھر اپیل کرنا چاہتا ہوں کہ اس سے پہلے کہ آپ اس چنگل میں پھنسے اور پھر قانونی کارروائی کا سامنا کرنا پڑے آپ اس سے گریز کریں۔ آپ کو غلط راستے پر چلانے کی کوششیں جاری ہیں۔ وقت آگیا ہے کہ آپ بربادی کے راستے سے اپنے آپ کو دور رکھیں۔ بہتری کے راستے پر چلیں اور اپنے کنبے کی خوشحالی کے لئے کام کریں’۔ان کا مزید کہنا تھا: ‘ایک اچھی بات یہ ہے کہ ہم اس سال اب تک 8 نوجوانوں، جو ملی ٹینٹ بن چکے تھے ، کو واپس لانے میں کامیاب ہوئے ہیں۔ ملی ٹینٹوں کی صفوں میں شمولیت کرنے کے رجحان میں نمایاں کمی آئی ہے اور یہ اب نہیں کے برابر ہے ۔

    یہ بھی ایک اچھی بات ہے ‘۔پولیس سربراہ نے کہا کہ لاء اینڈ آڈر کی صورتحال بہتر رکھنا ہماری اہم ترجیح ہے اور ہم اس سمت میں کام کررہے ہیں۔ انہوں نے کہا کہ وادی کشمیر میں بزنس، ٹریفک اور دیگر سرگرمیاں معمول کے مطابق چل رہی ہیں اور فورسز ذمہ دارانہ کردار ادا کررہے ہیں۔دلباغ سنگھ نے کہا کہ سال 2020 کے دوران اب تک دس آپریشن ہوئے ہیں جن میں سے آٹھ کشمیر میں جبکہ دو جموں میں وقوع پذیر ہوئے ہیں۔ انہوں نے کہا کہ ان آپریشنوں کے دوران کشمیر میں 19 جبکہ جموں میں 4 جنگجو مارے گئے ہیں۔پولیس سربراہ نے کہا کہ پاکستان جموں وکشمیر کے ساتھ لگنے والی سرحدوں کو گرم رکھنا چاہتا ہے تاکہ جنگجوئوں کو سرحد کے اس پار بہ آسانی دھکیلا جاسکے ۔

    یہ بھی پڑھیں  کامن ویلتھ گیمز ولیج میں بنایا گیا 500 بیڈز کا کوویڈ کیئر سینٹر
    یہ بھی پڑھیں  شہریت ترمیمی قانون کی مخالفت کرنے پر خواتین کے ساتھ پولیس کی تیکھی نو ک جھو نک

    انہوں نے کہا: ‘پہلے کے مقابلے میں سرحدوں پر جنگ بندی کی خلاف ورزی کے واقعات میں اضافہ ہوا ہے ۔ کل کٹھوعہ کے گگوال میں ایک پاکستانی ڈرون ہمارے ایئریا میں آیا۔ جب بی ایس ایف نے فائرنگ کی تو انہوں نے ڈرون کو واپس بلایا’۔ان کا مزید کہنا تھا: ‘پاکستان سرحدوں کو گرم رکھنا چاہتا ہے ۔ جنگ بندی کی خلاف ورزیوں کا مقصد دہشت گردوں کو سرحد کے اس پار دھکیلنا ہوتا ہے ۔ ان کی کچھ کوششیں کامیاب بھی ہوئیں۔ نگروٹہ میں مارے جانے والے دہشت گرد ہیرا نگر [؟] سانبہ بیلٹ سے کراس کرکے سرحد کے اس پار آیا تھا۔ معاملے کی تحقیقات این آئی اے کررہی ہے ‘۔

    LEAVE A REPLY

    Please enter your comment!
    Please enter your name here

    Latest news

    مرکزی حکومت کی گائڈ لائنس کو دیکھتے ہوئے عبادت گاھوں میں عبادت کی جاسکتی ھے

    سھارنپور : ایک اھم میٹنگ 29ستمبر شام 5بجے ضلع مجسٹریٹ سھارنپورجناب اکھلیش سنگھ نے بلائ جس میں ضلع کے...

    محکمۂ فلاح وبہبود کو ملی بڑی کامیابی ، 6 بچہ مزدوروں کو پولس نے کیا رہا

    ہاپوڑ (سید اکرام) محکمۂ فلاح و بہبود برائے اطفال نے مہم چلا کر چند بچہ مزدور کو رہائی دلائی...

    سی بی آئی عدالت کے فیصلہ سے عقل حیران ہے کہ پھر مجرم کون؟

    صدر جمعیۃ علماء ہند مولانا سید ارشد مدنی نے بابری مسجد ملزمین کے تعلق سے دیے گئے فیصلہ پر...

    بابری مسجد انہدام سانحہ : ملزمین ایل کے اڈوانی،جوشی،اوما بھارتی،کلیا ن سنگھ سمیت تمام 32 ملزمین کو کیابری

    لکھنؤ : اترپردیش کی راجدھانی لکھنؤ میں ایس بی آئی کی اسپیشل عدالت نے 28سال پرانے بابری مسجد مسماری...

    یوپی میں امن وامان بہت خراب ہورہا ہے ، ہاترس میں تین اگست سے تین عصمت دری کے واقعات ہوچکے ہیں : سوربھ بھاردواج

    نئی دہلی : اترپردیش میں عصمت دری کے بڑھتے ہوئے واقعات ، برہمن اور دلت سماج کے خلاف تیزی...

    بھیم آرمی چیف چندر شیکھر آزاد عصمت دری کی شکار ہونے والی لڑکی سے اے ایم یو جے این میڈیکل کالج ملنے پہنچے

    علیگڑھ : علی گڑھ میں بھیم آرمی اور آزاد سماج پارٹی کے قومی صدر چندرشیکھر آزاد ہاتھراس کے تھانہ...

    Must read

    You might also likeRELATED
    Recommended to you