رازداری پالیسی

ہمارے بارے میں

رابطہ

  • قومی نیوز
  • ہوم

    Hindi

    Epaper Urdu

    YouTube

    Facebook

    Twitter

    Mobile App

    جھارکھنڈ میں پھر سے نوجوان ماب لنچنگ کس شکار

    نئی دہلی: جھارکھنڈ کے کھونٹی ضلع میں گئوکشی کے شک میں اتوار کو بھیڑ نے پیٹ-پیٹ کر ایک نوجوان کا قتل کر دیا جبکہ دو لوگ شدیدطور پر زخمی ہو گئے۔ انڈین ایکسپریس کی رپورٹ کے مطابق، پولیس کا کہنا ہے کہ کھونٹی کے جل ٹنڈا سواری گاؤں میں اتوار کو صبح تقریباً 10 بجے کے آس پاس بھیڑ نے ان لوگوں پر اس وقت حملہ کیا، جب یہ لوگ مبینہ طور پر ایک جانور کی لاش سے گوشت نکال رہے تھے۔چھوٹاناگپور رینج کے ڈی آئی جی ہومکر انمول وینو کانت نے بتایا، ‘ تین گاؤں والے مبینہ طور پر ممنوعہ جانور کو مارنے کے لئے لے جا رہے تھے۔ ان گاؤں والوں کی پہچان کلنتس بارلا، فلپ ہورو اور پھاگو کچھپ کے طور پر ہوئی ہے۔ دیگر گاؤں والوں نے ان لوگوں کو دیکھا اور ان کی پٹائی کرنی شروع کر دی۔ حالانکہ، اطلاع ملنے پر پولیس موقع پر پہنچی اور ان کو ہاسپٹل لے گئی۔ اس بیچ بارلا نے ہاسپٹل پہنچنے سے پہلے ہی دم توڑ دیا۔ دیگر دو کی حالت نازک ہے۔ ‘ڈی آئی جی کا کہنا ہے کہ واقعہ کے بارے میں سٹیک جانکاری نہیں ہے اور معاملے کی تفتیش کی جا رہی ہے۔ انہوں نے کہا کہ ابھی تک اس معاملے سے میں کسی کو گرفتار نہیں کیا گیا، کچھ لوگوں کو پوچھ تاچھ کے لئے حراست میں لیا گیا ہے۔ غور طلب ہے کہ اس سال 18 جون کو جھارکھنڈ کے سرائیکیلا کھرساواں میں بائیک کی چوری کے الزام میں بھیڑ کے حملے میں 22 سال کے تبریز انصاری کی موت ہو گئی تھی۔جھارکھنڈ میں اکیلے ستمبر میں ماب لنچنگ کے تین واقعات ہو چکے ہیں۔ 11 ستمبر کو صاحب گنج ضلع میں بچہ چوری کے شک میں ایک 70 سالہ شخص کا پیٹ-پیٹکر قتل کر دیا گیا تھا جبکہ تین ستمبر کو رام گڑھ ضلع میں پچاس سے زیادہ لوگوں کی بھیڑ نے ایک شخص کو بری طرح سے پیٹا تھا، جس نے ہاسپٹل لے جاتے وقت راستے میں ہی دم توڑ دیا تھا۔وہیں، چھے ستمبر کو دھنباد کے کاگتی پہاڑی گاؤں میں بچہ چوری کی افواہ میں ہی ایک اور شخص کا بھیڑ نے پیٹ-پیٹ کر قتل کر دیا تھا۔ غور طلب ہے کہ جھارکھنڈ میں گزشتہ تین سالوں میں چوری، بچہ چوری اور گئو کشی کے الزام میں بھیڑ کے حملے میں 21 لوگوں کی موت ہو چکی ہے۔ وہیں، جنوری 2017 سے لیکر اب تک ریاست میں جادو ٹونے کے شک میں 90 سے زیادہ لوگوں کو مار دیا گیا ہے۔

    یہ بھی پڑھیں  ملک کی صلاحیتوں کو فروغ دینا اور انہیں قومی تعمیر میں شامل کرنا یونیورسٹیوں کی مرکزی توجہ ہونی چاہئے: منیش سسودیا

    LEAVE A REPLY

    Please enter your comment!
    Please enter your name here
    یہ بھی پڑھیں  بابری مسجد قانون اور عدل وانصاف کی نظرمیں ایک مسجد تھی اور قیامت تک مسجد ہی رہے گی :جمعیۃعلماء

    Latest news

    ہمیں بی جے پی حکومتوں کے جبر کے خلاف ہر محاذ پر لڑنا ہوگا : عمران پرتاپ گڑھی

    آسام: آل انڈیا کانگریس کمیٹی اقلیتی ڈیپارٹمنٹ کے قومی صدر عمران پرتاپ گڑھی اپنے ایک روزہ دورے پر آسام...

    پرینکا سچی کانگریسی ہیں اور ان ہتھکنڈوں سے ڈرنے والی نہیں : راہل

    نئی دہلی : کانگریس کے سابق صدر راہل گاندھی نے لکھیم پور کھیری متاثرہ کنبوں کے ارکان سے ملنے...

    بی جی پی کے دورحکومت میں اقلیتی شعبہ سے تعلق رکھنے والے مسلم،سکھ،عیسائی،جین اور دیگر طبقہ ظلم کا شکار ہو رہا ہے : عمران...

    نئی دہلی : سکھ سماج کے زیر اہتمام دہلی کے کانسٹی ٹیوشن کلب میں ''ایک نئی پہل'' کے عنوان...

    وزیر نے ڈویژنل کمشنر کے دفتر کا معائنہ کیا اور ذات کے سرٹیفکیٹ میں تاخیر پر افسروں کے خلاف کارروائی کرنے کی وارننگ دی...

    سماجی بہبود کے وزیر راجیندر پال گوتم نے اچانک معائنہ کیا اور ذات کا سرٹیفکیٹ جاری کرنے میں تاخیر...

    کیجریوال حکومت اور بی جی پی حکومت رابعہ سیفی کو اِنصاف دلائے : عمران پرتاپ گھڑی

    مرادآباد : آل انڈیا کانگریس کمیٹی شعبۂ اقلیتی کے قومی صدر عمران پرتاپ گڑھی اپنے دو روزہ دورے کے...

    اقلیتی شعبہ کے قومی صدراور معروف شاعر عمران پرتاپ گڑھی کا شایان شان خیرمقدم

    اہم ذمہ داری ملنے کے بعد پہلی بار مرادآباد آمد پر پھولوں کی بارش،عوام کا اژدہام مرادآباد: کانگریس اقلیتی شعبہ...

    Must read

    You might also likeRELATED
    Recommended to you