رازداری پالیسی

ہمارے بارے میں

رابطہ

  • قومی نیوز
  • ہوم

    Hindi

    Epaper Urdu

    YouTube

    Facebook

    Twitter

    Mobile App

    بی جے پی نے راجستھان میں فون ٹیپنگ کی سی بی آئی جانچ کرانے کا کیا مطالبہ

    نئی دہلی : بی جے پی نے راجستھان میں کانگریس کی حکومت کے اندر جاری رسہ کشی کے دوران لیڈروں کے فون ٹیپ کئے جانے کے انکشاف پر کانگریس قیادت اور وزیراعلی اشوک گہلوت سے سوال کیا کہ ریاست میں فون ٹیپنگ کے معاملے میں آئینی طور پر متفقہ طریقہ کار پر عمل کیا جارہا ہے یا نہیں۔

    بی جے پی نے فون ٹیپنگ کی سنٹرل انویسٹی گیشن بیورو (سی بی آئی) سے جانچ کرانے کا مطالبہ کیا ہے۔

    بی جے پی کے ترجمان ڈاکٹر سنبت پاترا نے یہاں ایک پریس کانفرنس میں کہا کہ راجستھان میں کانگریس کا سیاسی ڈرامہ ہم دیکھ رہے ہیں۔ یہ سازش، جھوٹ فریب اور قانون کو طاق پر رکھ کر کیسے کام کیا جاتا ہے ، اس کا امتزاج ہے۔ وہاں جو سیاسی ڈرامہ کھیلا جارہا ہے، وہ یہیں امتزاج ہے۔

    یہ بھی پڑھیں  سی اے اے این پی آر اور این آر سی کے خلاف بنی تنظیم کا فیصلہ ، گھر گھر تک لے جائیں گے آندولن

    انہوں نے کہا کہ راجستھان کی حکومت 2018 میں بنی تھی، مسٹر اشوک گہلوت وزیراعلی بنے، اس کے بعد ایک سرد جنگ کی صورتحال کانگریس پارٹی کی حکومت میں قائم رہی۔

    کل مسٹر گہلوت نے خود میڈیا کے سامنے آکر کہا ہےکہ 18 مہینے سے وزیراعلی اور نائب وزیراعلی کے درمیان گفت و شنید نہیں ہو رہی تھی۔

    انہوں نے کہا کہ 2018 میں حکومت بننے سے پہلے کانگریس کے دو گروپوں میں سڑک پر لڑائی ہورہی تھی۔ بعد میں وہ سڑک کی لڑائی پارٹی کے اعلی کمان اور پھر ہائی کورٹ تک پہنچ گئی لیکن الزام بی جے پی پر لگائے جارہے ہیں۔

    یہ بھی پڑھیں  بابری مسجد ملکیت مقدمہ جمعیۃعلماء ہند کا پہلے دن سے یہ ماننا ہے کہ یہ ملکیت کا معاملہ ہے آستھا کا نہیں یہ زمین کا معاملہ ہے اعتقاد کا نہیں، مذہبی کتابوں کا حوالہ دینے کہ بجائے آپ ثبوت پیش کریں۔ فریق مخالف کے وکلاء کو سپریم کورٹ کا مشورہ

    انہوں نے کہا ’’کانگریس کی قیادت بی جے پی پر الزام لگا رہی ہے لیکن نقص انہیں کے گھر میں ہے، داغ انہیں کے گھر میں ہے اور سازش بھی انہیں کے گھر میں رچی جارہی ہے‘‘۔

    یہ بھی پڑھیں  این سی ایم سی کی رپورٹ:عدالتی انفراسٹرکچر میںدہلی نمبرون

    سنبت پاترا نے کہا کہ کل کچھ مبیبہ آڈیو ٹیپ سامنے آئے ہیں اور مسٹر گہلوت کے ذریعہ فون پر گفت و شنید کے ان آڈیو ٹیپ کو مستند بتایا گیا ہے جس سے کچھ بہت اہم سوال پیدا ہوگئے ہیں اور کانگریس قیادت اور مسٹر گہلوت کو فوری طور پر ان کا جواب دینا چاہیے ۔

    انہوں نے کہا کہ کیا انکی حکومت فون ٹیپنگ کرا رہی ہے ؟ کیا یہ سیاسی طور پر حساس اور قانونی موضوع نہیں ہے ؟ اگر فون ٹیپ کرائے گئے ہیں تو کیا معیاری عمل پر عمل کیا گیا ہے ؟ کیا راجستھان حکومت نے مخالف سیاسی حالات میں خود کو بچانے کے لئے غیر آئینی کام کیا؟ کیا راجستھان میں کسی نے کسی نہ کسی سیاسی پارٹی سے متعلق ہرشخص کا فون ٹیپ ہورہا ہے ؟ کیا اسے راجستھان میں بالواسطہ ایمرجنسی نہ سمجھا جائے ۔

    یہ بھی پڑھیں  ہم اپنی خدمات کو عارضی طور پر بند کر رہے ہیں : فلپکارٹ

    سنبت پاترا نے کہا کہ اس موضوع پر بی جے پی کا اخلاق بالکل بے داغ ہے ۔ بی جے پی قانون اور آئینی اتفاق رائے سے کام کر رہے ہیں۔ ہم سچائی کے ساتھ ہیں۔

    LEAVE A REPLY

    Please enter your comment!
    Please enter your name here
    یہ بھی پڑھیں  چھچھورے‘ نے 100 کروڑ کا ہندسہ کیا پار’

    Latest news

    اے پی : کوویڈ کیر سنٹر میں لگی آگ ، 7 افراد ہلاک

    حیدرآباد:اے پی کے وجئے واڑہ میں واقع سورنا پیلس ہوٹل جس کو رمیش اسپتال کی جانب سے کوویڈ کیر...

    اندھی بہری حکومت آشا کارکنوں کی بات نہیں سنتی : راہل

    نئی دہلی : کانگریس کے سابق صدر راہل گاندھی نے آشا کارکنوں کی حالت زار کے حوالہ سے مودی...

    جب تک عدالت حکم نہیں دیتی حکومت خود سے کچھ نہیں کرتی : چیف جسٹس آف انڈیا

    نئی دہلی : مسلسل زہر افشانی کرکے اور جھوٹی خبریں چلاکر مسلمانوں کی شبیہ کوداغدار اور ہندووں اورمسلمانوں کے...

    پولیس کی مجرموں کو پکڑنے کی کوشش جاری ، حکومت انہیں کڑی سزا دے گی : اروند کیجریوال

    نئی دہلی: وزیر اعلی اروند کیجریوال نے ایمس میں زیادتی کا شکار 12 سالہ بچی اور ان کے کنبہ...

    لبنان: بندرگاہ دھماکے میں ہلاک ہونے والوں کی تعداد 70 سے زائد ، 2500 سے زیادہ افراد زخمی ہیں

    ویب ڈیسک : لبنان کے دارالحکومت بیروت میں زور دار دھماکے ہوئے ہیں۔ ان دھماکوں سے مشرقی بیروت میں...

    اسلام میں قربانی کا کوئی بدل نہیں

    قانون کے دائرے میں رہتے ہوئے دین و شریعت کے احکام کی تکمیل کی جائے: مولانا ارشد مدنی نئی دہلی:...

    Must read

    You might also likeRELATED
    Recommended to you