رازداری پالیسی

ہمارے بارے میں

رابطہ

  • قومی نیوز
  • ہوم

    Hindi

    Epaper Urdu

    YouTube

    Facebook

    Twitter

    Mobile App

    بی جے پی نے راجستھان میں فون ٹیپنگ کی سی بی آئی جانچ کرانے کا کیا مطالبہ

    نئی دہلی : بی جے پی نے راجستھان میں کانگریس کی حکومت کے اندر جاری رسہ کشی کے دوران لیڈروں کے فون ٹیپ کئے جانے کے انکشاف پر کانگریس قیادت اور وزیراعلی اشوک گہلوت سے سوال کیا کہ ریاست میں فون ٹیپنگ کے معاملے میں آئینی طور پر متفقہ طریقہ کار پر عمل کیا جارہا ہے یا نہیں۔

    بی جے پی نے فون ٹیپنگ کی سنٹرل انویسٹی گیشن بیورو (سی بی آئی) سے جانچ کرانے کا مطالبہ کیا ہے۔

    بی جے پی کے ترجمان ڈاکٹر سنبت پاترا نے یہاں ایک پریس کانفرنس میں کہا کہ راجستھان میں کانگریس کا سیاسی ڈرامہ ہم دیکھ رہے ہیں۔ یہ سازش، جھوٹ فریب اور قانون کو طاق پر رکھ کر کیسے کام کیا جاتا ہے ، اس کا امتزاج ہے۔ وہاں جو سیاسی ڈرامہ کھیلا جارہا ہے، وہ یہیں امتزاج ہے۔

    یہ بھی پڑھیں  بنگال میں این آر سی کسی بھی صورت میں نافذ نہیں ہونے دیا جائے گا : ممتا بنرجی

    انہوں نے کہا کہ راجستھان کی حکومت 2018 میں بنی تھی، مسٹر اشوک گہلوت وزیراعلی بنے، اس کے بعد ایک سرد جنگ کی صورتحال کانگریس پارٹی کی حکومت میں قائم رہی۔

    کل مسٹر گہلوت نے خود میڈیا کے سامنے آکر کہا ہےکہ 18 مہینے سے وزیراعلی اور نائب وزیراعلی کے درمیان گفت و شنید نہیں ہو رہی تھی۔

    انہوں نے کہا کہ 2018 میں حکومت بننے سے پہلے کانگریس کے دو گروپوں میں سڑک پر لڑائی ہورہی تھی۔ بعد میں وہ سڑک کی لڑائی پارٹی کے اعلی کمان اور پھر ہائی کورٹ تک پہنچ گئی لیکن الزام بی جے پی پر لگائے جارہے ہیں۔

    انہوں نے کہا ’’کانگریس کی قیادت بی جے پی پر الزام لگا رہی ہے لیکن نقص انہیں کے گھر میں ہے، داغ انہیں کے گھر میں ہے اور سازش بھی انہیں کے گھر میں رچی جارہی ہے‘‘۔

    یہ بھی پڑھیں  اروند کیجریوال نے اپنی رہائش گاہ پر دہلی کے شعرا ء سے کی ملاقات
    یہ بھی پڑھیں  دیوبند جی ٹی روڑ پر واقع ’’ دارالقرآن ‘‘کو آئی سولیشن وارڈ میں منتقل کرنے کی پیشکش کی

    سنبت پاترا نے کہا کہ کل کچھ مبیبہ آڈیو ٹیپ سامنے آئے ہیں اور مسٹر گہلوت کے ذریعہ فون پر گفت و شنید کے ان آڈیو ٹیپ کو مستند بتایا گیا ہے جس سے کچھ بہت اہم سوال پیدا ہوگئے ہیں اور کانگریس قیادت اور مسٹر گہلوت کو فوری طور پر ان کا جواب دینا چاہیے ۔

    انہوں نے کہا کہ کیا انکی حکومت فون ٹیپنگ کرا رہی ہے ؟ کیا یہ سیاسی طور پر حساس اور قانونی موضوع نہیں ہے ؟ اگر فون ٹیپ کرائے گئے ہیں تو کیا معیاری عمل پر عمل کیا گیا ہے ؟ کیا راجستھان حکومت نے مخالف سیاسی حالات میں خود کو بچانے کے لئے غیر آئینی کام کیا؟ کیا راجستھان میں کسی نے کسی نہ کسی سیاسی پارٹی سے متعلق ہرشخص کا فون ٹیپ ہورہا ہے ؟ کیا اسے راجستھان میں بالواسطہ ایمرجنسی نہ سمجھا جائے ۔

    یہ بھی پڑھیں  مودی حکومت نے ملک کو برباد کردیا ہے : راہل

    سنبت پاترا نے کہا کہ اس موضوع پر بی جے پی کا اخلاق بالکل بے داغ ہے ۔ بی جے پی قانون اور آئینی اتفاق رائے سے کام کر رہے ہیں۔ ہم سچائی کے ساتھ ہیں۔

    LEAVE A REPLY

    Please enter your comment!
    Please enter your name here
    یہ بھی پڑھیں  اسکولوں میں ایک لمبے عرصے سے طرح طرح کے پیٹرن چل رہے ہیں ۔ اب ہمیں نئے سرے سے سوچنے کی ضرورت ہے: منیش سسودیا

    Latest news

    دہلی فسادات معاملہ،متاثرین کی باز آبادکاری میں مصروف اقلیتی فلاحی کمیٹی

    میٹنگ میں جلد سے جلد زیر التوامعاملات کے نپٹارہ کی افسران کو ہدایت،کچھ معاملات میں دوبارہ سروے کرنے کی...

    بی جے پی کے زیر اقتدار ایم سی ڈی سے نہ صرف دہلی کے لوگ متاثر ہیں، بلکہ ملازمین بھی نالاں ہیں : سوربھ...

    نئی دہلی : عام آدمی پارٹی کے چیف ترجمان سوربھ بھاردواج نے کہا کہ بی جے پی کے زیر...

    راجیندر نگر کے ایم ایل اے راگھو چڈھا نے سوامی دیانند سروودیا کنیا اسکول کا دورہ کیا

    لاک ڈاؤن کے بعد اسکول کھلنے کے بعد سکیورٹی کے تمام انتظامات کردیئے گئے ہیں، طلباء اساتذہ کو N95...

    محلہ کے اجلاسوں میں لوگوں اجتماع۔ آج جمعہ کو 21 ہزار سے زائد افراد نے 57 اسمبلیوں میں 208 مقامات پر ہونے والے محلہ...

    نئی دہلی : بی جے پی کے زیر اقتدار میونسپل کارپوریشن کی بدعنوانی کے خاتمے کی مہم کے ایک...

    سڑک حادثات میں کمی لانے کے لئے ملک بھر یں عوامی بیداری مہم چلائی جائے گی : نتن گڈکری

    نئی دہلی : وزیر دفاع راج ناتھ سنگھ اور سڑک ٹرانسپورٹ اور شاہراہوں کے وزیر نتن گڈکری پیر کو...

    Must read

    You might also likeRELATED
    Recommended to you