رازداری پالیسی

ہمارے بارے میں

رابطہ

  • ہوم

    Hindi

    Epaper Urdu

    YouTube

    Facebook

    Twitter

    Mobile App

    جامعہ ملیہ میں احتجاج کر رہے طلبہ پر پولیس کی پر تشدد کارروائی

    نئی دہلی : شہریت ترمیمی قانون کے خلاف پورا ملک سراپا احتجاج ہے۔شمال مشرقی ہند میں آگ لگی ہوئی ہے اور لوگ سڑکوں پر ہیں وہیں دارالحکومت دہلی میں بھی زبر دست احتجاج شروع ہو گیا ہے ۔جمعہ کے دن جامعہ ملیہ اسلامیہ میں بڑی تعداد میں طلبہ و طالبات نے شہریت ترمیمی بل کے خلاف احتجاج کیا ۔حکومت مخالف نعرے لگائے اور اس بل کو کالا قانون قرار دیتے ہوئے واپس لینے کا مطالبہ کیا۔یہ احتجاج جامعہ ٹیچر ایسو سی ایشن کی قیادت میں کی گئی جس میں بڑی تعداد میںطلبہ نے بھی شرکت کی ۔احتجاج کے دوران طلبہ اور پولیس کے درمیان پر تشدد چھڑپ بھی ہوگئی ۔ طالب علموں کے احتجاج کو روکنے کے لئے پولیس نے پہلے پانی کی بوچھار یں کیں اور پھر آنسو گیس کے گولے چھوڑے۔ اس کے بعد پولیس نے طالب علموں پر لاٹھی چارج بھی کیا۔ پولیس کی کارروائی میں بڑی تعداد میں طلبہ و طالبات زخمی ہوئے ہیں۔ پولیس نے احتجاج کر رہے سیکڑوں طلبہ کو حراست میں لے لیا ہے ۔

    بتایا جا رہا ہے کہ حراست میں لئے گئے طلبہ کو اوکھلا علاقے کے مختلف تھانوں میں رکھا گیا ہے ۔ذرائع کے مطابق پولیس نے کیمپس میں داخل ہو کر بری طریقے سے طلبہ پر لاٹھیاں برسائیں ہیں ۔جس میں متعد طلبہ اور طالبات دونوں زخمی ہوئے ہیں ۔ کسی کا ہاتھ ٹوٹا تو کسی کاپیر ٹوٹا اور کسی کا سر بھی پھوٹا ہے ۔ زخمی طلبہ میں طالبات کی تعداد بھی شامل ہے۔ زخمی طلبہ کو قریبی اسپتالوں میں داخل کرایا گیا ہے ۔ پولیس کے ذریعہ داغے گئے آنسو گیس کے گولوں سے جامعہ کیمپس کی فضا میں دھوان دھواں ہوگئی اور لاٹھی چارج کے بعد افرا تفری کا ماحول پیدا ہو گیا۔پولیس کی پر تشدد کارروائی کے بعد بھی بڑی تعداد میں طلبہ جامعہ کے مین گیٹ اور باب قرۃ العین حیدر پر جمع رہے۔اطلاعات کے مطابق جامعہ ٹیچرایسوسی ایشن کی جانب سے اور طلبہ کے ذریعہ پر امن پارلیمنٹ تک مارچ کا اعلان کیاگیاتھالیکن مارچ کے لئے جیسے ہی طلبہ جولیناکی طرف بڑھے پولیس نے وہیںانہیں روک لیا ، جس کے بعدپولیس اور طلبہ کے درمیان پر تشدد جھڑپیں شروع ہوئیں۔

    یہ بھی پڑھیں  سابق وزیر دفاع جسونت سنگھ کا انتقال
    یہ بھی پڑھیں  ‎ڈیزل کی قیمتوں میں 20 سے 21 پیسے کی کمی

    جامعہ کے سابق طالب علم فرحان احمد نے بتایا کہ ہمارا مارچ پر امن تھا لیکن پولیس نے ہمیں بیریکیڈنگ کے ذریعہ روک دیا۔ انہوںنے کہاکہ ہمارے چالیس سے زائد طلبہ کو حراست میں لیاگیا ہے ۔30طلبہ کو بدر پور تھانے لے جایا گیا ہے سریتا وہار تھانے میں بھی کچھ طلبہ کو رکھا گیا ہے ۔جامعہ انتظامیہ نے بتایاکہ یہ احتجاج پر امن کرنے کی اجازت لی گئی تھی۔ٹیچر ایسو سی ایشن سے سات نمبر گیٹ سے احتجاج شروع کیا تھا۔ اس میں طلبہ کے ملازمین اور طلبہ نے بھی حصہ لیا۔مارچ جامعہ کے چار نمبر گیٹ پر پہنچتے ہیں بڑی تعداد میں مقامی لوگ بھی شامل ہو گئے ۔ بڑھتی بھیڑ کو روکنے کے لئے پولیس نے بیریکیڈنگ کی جسے طلبہ نے توڑنے کی کوشش کے جس کے بعدپولیس نے لاٹھی چارج کیا اور آنسو گیس کے گولے داغے۔جامعہ ٹیچر ایسو سی ایشن کے سکریٹری محمد جمیل نے کہا کہ یہ قانون ملک کے جمہوری آئین کے خلاف ہے اگر مذہب کی بنیاد پر کوئی قانون بنتا ہے

    یہ بھی پڑھیں  سی بی آئی عدالت کے فیصلہ سے عقل حیران ہے کہ پھر مجرم کون؟

    تو ہم اس کی مخالفت کریں گے۔جوائنٹ سکریٹری فرقان قریشی نے کہا کہ جامعہ ملیہ کا قیام برٹس ایجو کیشن سسٹم کے خلاف ہوا تھا۔ جامعہ نے ہمیشہ ملک کے آئین کے تحفظ کے لئے آواز اٹھائی ہے ، چونکہ یہ قانون ملک کے جمہوری آئین کی روح کے خلاف ہے اس لئے ہم اس کی مخالفت کرتے رہیں گے۔واضح رہے کہ شہریت ترمیمی بل کے خلاف جامعہ ملیہ اسلامیہ کے طلبہ کا احتجاج گزشتہ جمعرات کی شام سے شروع ہو گیا ہے۔جامعہ کیمپس میں طلبہ و طالبات جمعرات کی شام سے ہی بڑی تعداد میں جمع ہو کر احتجا ج کر رہے تھے ۔آج جمعہ کے بعد طلبہ نے سنسد بھون تک مارچ کا اعلان کیا تھا ۔بڑے پیمانے پر طلبہ کے احتجاج کے اعلان کے پیش نظر انتظامیہ نے بڑی تعداد میں پولیس فورس تعینات کر دیا تھا ۔احتجاج کے شروع ہوتے ہیں پولیس نے بریکیڈنگ کے ذریعہ طلبہ کو روکنے کی کوشش کی جس کے بعد طلبہ اور پولیس کے درمیان پر تشدد جھڑپیں ہوئیں۔ احتجاج کر رہے طلبہ حکومت کے اس قانون کو آئین کے خلاف قرار دیتے ہوئے واپس لینے کا مطالبہ کیا ہے ۔

    یہ بھی پڑھیں  ہمیں بی جے پی حکومتوں کے جبر کے خلاف ہر محاذ پر لڑنا ہوگا : عمران پرتاپ گڑھی
    یہ بھی پڑھیں  فائدہ اٹھانے والوں کو مرحلہ وار FPS پر بایو میٹرک تصدیق کے ای POS کے ذریعے مفت راشن ملے گا: عمران حسین

    LEAVE A REPLY

    Please enter your comment!
    Please enter your name here

    Latest news

    کسان تحریک کے دوران جان گنوانے والے کسانوں کی تعداد اور ان کے خلاف درج مقدمات کی کوئی معلومات نہیں ہے : مرکزی وزیر...

    نئی دہلی : مرکزی حکومت نے کہا ہے کہ اس کے پاس کسان تحریک کے دوران جان گنوانے والے...

    ایم سی ڈی تبدیلی مہم کی تیاری 27 نومبر سے شروع، معلومات اپ لوڈ کرنے کے لیے خصوصی ایپ استعمال کریں گے: گوپال رائے

    نئی دہلی : آپ کے سینئر لیڈر گوپال رائے نے کہا کہ ایم سی ڈی انتخابات کے پیش نظر،...

    بنگلورو پولیس نے منّور فاروقی کو متنازعہ شخص قرار دیا

    بنگلور: کرناٹک کے دارالحکومت بنگلورو کے ایک آڈیٹوریم میں اسٹینڈ اپ کامیڈین منور فاروقی کا ایک شو منعقد کیا...

    سید بلال نورانی حامیوں کے ساتھ ایس پی میں شامل، مل سکتی ہے بڑی ذمہ داری

    لکھنؤ: ریاست کے معروف سماجی کارکن اور رہنما سید بلال نورانی جمعہ کو اپنے حامیوں کے ساتھ سماج وادی...

    اسکول، اسپتال، بجلی، پانی، سڑک، ٹرانسپورٹ اور وائی فائی سمیت تمام شعبوں میں کجریوال حکومت کے تاریخی کاموں سے متاثر ہو کر لوگ آپ...

    نئی دہلی : دہلی میں 2022 میں ہونے والے بلدیاتی انتخابات سے پہلے کانگریس کو بڑا جھٹکا لگا ہے۔...

    اروند کیجریوال نئے ورینٹ سے متاثرہ ممالک سے آنے والی پروازوں کو روکنے کا کیا مطالبہ

    نئی دہلی: دہلی کے وزیر اعلی اروند کجریوال نے ہفتہ کو وزیر اعظم نریندر مودی پر زور دیا کہ...

    Must read

    You might also likeRELATED
    Recommended to you